نقلی آئن اسٹائن

(Syed Talha Safdar, Karachi)

مشہور ریاضی دان اور سائنس دان البرٹ آئن سٹائن جب کہیں لیکچر دینے جاتے تو انکا ڈرائیور ہال کے آخر میں بیٹھا لیکچر سنتا رہتا -ایک مرتبہ کسی یونیورسٹی میں لیکچر دینے کیلئے جب گاڑی میں بیٹھے تو ڈرائیور نے کہا

"جناب! میں آپ کے لیکچر سُن سُن کر تنگ آ گیا ہوں۔۔ سچ تو یہ ہے کہ مجھے آپ کے تمام لیکچر یاد ہو گئے ہیں" ۔

یہ سُن کر آئین سٹائن نے کہا ۔۔"ٹھیک ہے آج جس یونیورسٹی میں میرا لیکچر ہے اتفاق سے وہ مجھے جانتے بھی نہیں لہذا آج میری جگہ لیکچر دے دو"۔

مزید اصرار کرنے پر ڈرائیور مان گیا۔ یوں ڈرائیور آئن سٹائن اور اصلی آئن سٹائن ڈرائیور بن بیٹھا۔

ڈرائیور نے یونیورسٹی میں بہت ہی عمدہ طریقے سے لیکچر دیا۔ لیکچر دینے کے بعد ایک شخص نے نقلی آئن سٹائن سے پوچھا " ۔جناب! آپ نے لیکچر میں ریاضی کا جو فلاں فارمولہ بتایا ہے، وہ مجھے صیحح طرح سمجھ نہیں لہذا وضاحت کر دیں"۔

نقلی آئن سٹائن نے کہا "جناب! یہ فارمولہ تو اتنا آسان ہے کہ میرا ڈرائیور بھی آپکو سمجھا دے گا"۔

یہ کہہ کر اُس نے ڈرائیور کو آواز دی اور کہا کہ "ان صاحب کو فلاں فارمولہ سمجھا دو۔۔"
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Syed Talha Safdar

Read More Articles by Syed Talha Safdar: 7 Articles with 2576 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
14 May, 2019 Views: 327

Comments

آپ کی رائے