کینیڈا - شریک حیات کی سپانسر شپ - کن وجوہات کی بنا پر درخواست نامنظور ہو سکتی ہے

(Amir Ismail, Karachi)
کینیڈا - شریک حیات کی سپانسر شپ - کن وجوہات کی بنا پر درخواست نامنظور ہو سکتی ہے۔ بقلم عامر اسماعیل

شریک حیات کی سپانسر شپ - کن وجوہات کی بنا پر درخواست نامنظور ہو سکتی ہے۔ بقلم عامر اسماعیل

اگر اَپ اپنے شریک حیات کو سپانسر کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں تو اس بات کا خیال ضرور رکھیں کے ویزہ اَفیسر کی توجہ اس نقطہ پر مرکوز ہوتی ہے کہ رشتہ ازدواج حقیقی ہے - اس ضمن میں وہ پہلے اَپ کے جمع شدہ کاغزات اور درخواست میں دئیے گئے سوالات کے جوابات پر انحصار کرتے ہیں اور مکمل تشفی کے لئے درخواست گزار کو انٹرویو کی داعوت بھی دے سکتے ہیں۔

رشتہ ازدواج کے حقیقی ہونے کے انگنت ثوابت ہو سکتے ہیں مگر امیگریشن ڈپارٹمنٹ نے درخواست گزاروں کی اَسانی کے لیئے درخواست گزار کے صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے مختلف ثوابت تجویز کئے ہیں- درخواست گزاروں کو چاہئے کے ان کاغزی ضرورتوں کا باریک بینی سے جائزہ لیں اور جس قدر ممکن ہو وہ تمام تجویز کردہ کاغزات فراہم کریں جو ان کی کی صورت حال سے مطابقت رکھتے ہوں۔ مثال کے طور پر اگر اَپ ایک نئے شادی شدہ جوڑی ہیں جن کی فل حال کوئ باہمی اولاد نہی ہے تو اَپکے لئے ثوابت قدرے مختلف ہو سکتے ہیں ان لوگوں کے مقابلے میں جو زیادہ عرصے سے رشتہ ازدواج میں منسلک ہیں یا ان کی باہم اولاد ہیں ۔

جیسے اوپر تزکرہ کیا گیا، درخواست میں دیئے گئے سوالات کے جوابات کا بھی بہت باریک بینی سے مشاہدہ کیا جاتا ہے۔ اس لیئے ان سوالات کا راست گوئی سے جواب اور ان میں ہم اَہنگی اور ربط ویزہ اَفیسر کو اس نتیجہ پر پہنچنے میں مدد دیتا ہے کہ رشتہ حقیقی ہے، درخواست میں کسی قسم کی دروغ گوئی سے کام نہیں لیا گیا اور درخواست کا مقصد خاندان کو جوڑنا ہے نہ فقط کسی کو کینیڈا کی امییگریشن دلانے کی کوشش۔

ویزہ اَفیسرز اپنی تسلی کے لیئے مزید کاغزات کا تقاضہ کر سکتے ہیں اور ابہام دور کرنے کے لیئے درخواست گزار کو انٹریو کے لئے بھی دعوت دے سکتے ۔ اس لیئے ضروری ہے کے اَپ ایک مکمل اور جامع درخواست جمع کروائیں اور درخواست کے ان تمام اہم پہلووں کا جائزہ اور ادراک لکھے ہوئے وظاحتی بیان کے زریعے کریں۔ اس طرح نہ صرف اَپ اپنا قیمتی وقت بچائیں گے بلکہ غیر ضروری پیچیدگیوں سے بھی بچ جایئنگے -

عامر اسماعیل ٹورنٹو میں مقیم سند یافتہ امیگریشن مشیر ہیں جو ۱۹۹۱ سے اپنی امیگریشن خدمات سر انجام دے رہے ہیں۔
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Amir Ismail
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
30 Aug, 2020 Views: 106

Comments

آپ کی رائے