پچھتر سالہ ماں کو بائیک پر پورا پاکستان گھمانے کا ذمہ لے لیا، سفر ختم کرنے پر ایسے تحائف مل گئے جس نے زندگی بدل ڈالی

 
ماں کے قدموں تلے جنت ہے اور ماں کی خدمت کا حکم تو سب ہی نے سنا بھی ہوگا اور ہر انسان کی کوشش یہی ہوتی ہے کہ اگر اس کی ماں بوڑھی ہو جائے تو وہ اس کے آرام کا ہر طریقے سے خیال رکھے اور ایسا کوئی عمل نہ کرے جو اس کے لیے تکلیف کا سبب بنے-
 
مگر ایسے انسان کے بارے میں پہلی بار سنا ہوگا جو 75 سال کی ماں کو بائیک پر بٹھا کر پورا پاکستان گھمانے کے لیے لے جائے اور پاکستان دیکھنے کی اس کی خواہش کو اس طرح سے پورا کرے جو کہ ایک مثال بن جائے-
 
قدیر گیلانی جس کا تعلق لاہور سے ہے اور جو شوقیہ طور پر ایک بائک رائڈر ہیں اور اپنی بائک پر بیٹھ کر پورے ملک کا سفر کرتے ہیں- ان کو ان کی 75 سالہ ماں کبریٰ بی بی نے جب یہ بتایا کہ وہ بھی ان کی طرح پورا ملک گھومنا چاہتی ہیں تو فرمانبردار بیٹے نے ماں کی اس خواہش کی تکمیل کے لیے ان کو اپنے پیچھے بائک پر بٹھا کر گھمانا شروع کر دیا-
 
انہوں نے اپنے سفر کا آغاز لاہور سے مانسہرہ تک کیا جو کہ تین دن کا ٹور تھا- اس ٹور نے ان کی ہمت بندھائی اور ان کو محسوس ہوا کہ ان کی ماں ایک باحوصلہ خاتون ہیں اور وہ اس طرح سفر کر سکتی ہیں اس میں انہوں نے بالا کوٹ ، ناران کاغان اور شمالی علاقہ جات دیکھے -
 
 
اس کے بعد انہوں نے ایک مہینے کا ٹور پلان کیا جس میں انہوں نے کراچی، حیدرآباد اور سندھ کے کئی علاقوں کا اپنی ماں کے ہمراہ دورہ کیا- اپنی ماں کے سفر کے حوانے سے قدیر گیلانی کا یہ کہنا ہے کہ سفر کے دوران وہ تھک جاتے تھے مگر ان کی ماں کا حوصلہ مثالی ہوتا تھا-
 
قدیر کا کہنا تھا کہ کے پی کے اور شمالی علاقہ جات کے لوگوں کی مہمان نوازی مثالی ہے یہ لوگ ان کو رہائش کے لیے نہ صرف اپنے گھر پیش کرتے تھے بلکہ مہمان کا بہت احترام کرتے تھے۔ قدیر گیلانی کا یہ بھی کہنا تھا کہ اگرچہ انہوں نے اپنے بیوی بچوں کے ساتھ بھی سفر کیا ہے مگر اپنی ماں کے ساتھ سفر ان کے لیے سب سے یاد گار سفر ہوتا ہے-
 
ان کے اس سفر کی ویڈیو اور کہانی سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد اب تک دو بائک تحفے میں مل چکی ہیں- اپنے اس سفر کی ویڈيو انہوں نے سوزوکی کمپنی کے ایک مقابلے میں جب ویڈيو اپ لوڈ کی تو اس کے بدلے میں ان کو سوزوکی کمپنی نے بھی پہلے نام سے نوازہ اور اس کے بدلے میں ان کو آلٹو کار بھی ملی-
 
 
اپنی ماں کے ساتھ سفر کےحوالے سے ان کا یہ کہنا ہے کہ ایسا کبھی بھی نہیں ہوا کہ ان کی بائک کبھی پنکچر ہوئی ہو ماں کے ساتھ اس سفر میں کسی قسم کی کوئی مشکلات نہیں ہوئيں- ان کی خواہش ہے کہ اگر ان کو ویزہ مل جائے تو وہ اپنی ماں کےساتھ عمرہ کے سفر پر بائک پر ہی جانا چاہتے ہیں-
 
اس کے علاوہ ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ وہ بلوچستان کے سفر کو بھی پلان کر رہے ہیں اور جلد ہی اپنی ماں کو لے کر وہاں بھی جانا چاہتے ہیں- اس حوالے سے ان کی ماں کا یہ بھی کہنا ہے کہ دوسری عورتوں کو بھی چاہیے کہ عمر کو بنیاد بنا کر گھر میں نہ بیٹھیں بلکہ اپنے وقت کا اچھا استعمال کریں اور نئی نئی چیزوں کو دریافت کریں-
 
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
13 Jan, 2022 Views: 3580

Comments

آپ کی رائے