جشن آزادی اور حب الوطنی کے چند منفرد انداز

14 اگست کا دن ہر پاکستانی کے دل میں ایک عظیم یاد بن کے زندہ ہے- ہر سال یہ دن پاکستانیوں کے لیے خوشیوں کا پیغام لے کر آتا ہے- جذبہ حب الوطنی ویسے تو ہر وقت ہی موجود ہوتا ہے مگر اگست کے مہینے میں یہ جذبہ اپنے عروج پر ہوتا ہے- یہ وہ وقت ہوتا ہے جب آپ کو ہر جگہ محبِ وطن پاکستانی دکھائی دیتے ہیں- اس موقع پر ملی نغموں کی گونج سے گاڑی کے اسپیکر پھاڑنے والے پاکستانیوں سے لے کر فیس بک پر محض ایک اسٹیٹس اپ لوڈ کرنے والوں تک ہر قسم کا عمل دیکھنے کو ملتا ہے- ایسے ہی چند محبِ وطن پاکستانیوں کے بارے میں یہ آرٹیکل تحریر کیا گیا ہے-
 

جوشیلے محبِ وطن:
سب سے پہلے بات کرتے ہیں جوش و جذبے سے سرشار ان نوجوانوں کی جو 13 اور 14 اگست کی درمیانی رات کو موٹر سائیکل سے سائیلنسر نکال کر سڑکوں پر فراٹے بھرتے نظر آتے ہیں- ان کو دیکھ کر ایسا معلوم ہوتا ہے کہ جیسے ان سے زیادہ محبِ وطن کوئی اور نہیں- 12 بجنے سے پہلے یہ نوجوان اپنے اپنے شہروں کی مصروف شاہراہوں پر موٹر سائیکل کے ساتھ نمودار ہوتے ہیں اور رات گئے تک ان کا مٹر گشت جاری رہتا ہے جبکہ کئی جگہوں پر یہ نظارہ 14 اگست کے روز بھی دیکھنے کو ملتا ہے-


ہرے بھرے محبِ وطن:
ویسے تو سب کو اپنا سبز ہلالی پرچم بےحد پیارا ہے مگر 14 اگست کے دن سبز رنگ سے محبت اپنے عروج پر ہوتی ہے- ہر پاکستانی کی یہ کوشش ہوتی ہے کہ اپنے لباس اور استعمال کی ہر چیز میں قومی پرچم یا ہرے رنگ کا استعمال لازمی کرے- کئی مقامات پر عورتیں اور بچے چہروں پر قومی پرچم پینٹ کرواتے نظر آتے ہیں- خواتین کی یہ بھی کوشش ہوتی ہے کہ وہ ہرے اور سفید رنگ کے ملبوسات زیب تن کریں اور ساتھ ہرے رنگ کی چوڑیاں اور نیل پالش کا اہتمام بھی ہوتا ہے-


عجیب و غریب محبِ وطن:
آپ نے اپنے گھروں کو قومی پرچم سے سجانا تو ضرور سنا ہوگا مگر اپنی گاڑی کو مکمل ہرے رنگ سے پینٹ کر دینا ایک نیا انداز ہے- حیران مت ہوں٬ آپ کے ارد گرد ایسے پاکستانی موجود ہیں جو اپنے اس عجیب و غریب طرزِ عمل کی وجہ سے لوگوں کی توجہ کا مرکز بنتے ہیں-


سوشل میڈیا کے علمبردار:
یہ وہ شخص ہے جو 14 اگست کے دن تمام سوشل میڈیا ویب سائٹس پر قومی پرچم آویزاں کرتا ہے- فیس بک٬ ٹوئیٹر٬ پن ٹرسٹ غرض یہ کہ ہر جگہ آپ کو یومِ آزادی کے حوالے سے اشعار٬ قائد اعظم رحمتہ اﷲ علیہ کی تقاریر اور ملی نغمے آپ کو وافر تعداد میں دکھائی دیں گے-


اسپیشل آفر ڈھونڈنے والے محبِ وطن:
خواتین سے ڈسکاؤنٹ آفر چھوٹ جائے٬ ایسا تو ممکن ہی نہیں- اس بات سے دکاندار بھی بخوبی واقف ہیں اور اسی لیے یومِ آزادی کے حوالے سے بےشمار ڈسکاؤنٹ اور سیلز آفر تقریباً ایک ہفتہ قبل ہی شروع ہوجاتی ہیں اور یومِ آزادی کے چند دن بعد تک رہتی ہیں- ان آفرز کی وجہ سے دکانوں میں رش دیکھنے کو ملتا ہے- نہ صرف دکانوں میں بلکہ مختلف کیفے اور ریسٹورنٹس میں بھی یومِ آزادی کے حوالے اسپیشل آفر متعارف کروائی جاتی ہیں- فیس بک چیک انس اس کا منہ بولتا ثبوت ہیں-


عین وقت پر جاگنے والے محبِ وطن:
آخر میں ہم ان حضرات کا ذکر کریں گے جن کے اندر کا جذبہ حب الوطنی اس وقت بیدار ہوتا ہے جب وہ رات 9 بجے خبریں دیکھنے کے لیے ٹی وی کھولتے اور اس کے بعد رات 12 تک پاکستانی نیوز چینلز اور ٹاک شوز دیکھتے رہتے ہیں-


اگر آپ بھی ایسے محبِ وطن پاکستانیوں سے واقف ہیں تو ہمیں ضرور اپنی آرا سے آگاہ کریں-

قوم کو  جشنِ آزادی مبارک ہو!

Reviews & Comments

جشن آزادی کے روز ہمارا ایک نو عمر سگا خالہ زاد بھائی اپنے ہم عمر سگے تایا زاد بھائی کے ساتھ بائیک پر قائداعظم کے مزار پر جاتے ہوئے ٹریفک حادثے کا شکار ہو گیا تھا جس میں وہ دونوں بھائی جاں بحق ہو گئے تھے ۔ اور ان کی تدفین بھی اسی روز عمل میں آ گئی تھی ۔ یوم آزادی ہماری خالہ کے گھرانے کے لئے یوم ماتم بن کر آتا ہے ہر سال اس دن ان کے دل کے زخم نئے سرے سے تازہ ہو جاتے ہیں ۔ وہ سارا دن روتے ہوئے گذارتی ہیں آجکل ان کی طبیعت کچھ ناساز رہتی ہے اللہ سے دعا ہے کہ انہیں صبر اور صحت عطا فرمائے آپ سب سے بھی دعا کی درخواست ہے ۔ بہت شکریہ ۔
By: Rana Tabassum Pasha(Daur), Dallas, USA on Aug, 14 2017
Reply Reply
0 Like
azadi boht bari naimat hai........................kash be zameer gaddar laog is baat ko samjh sakain ................chand takke lena chhor dain. i love my pakistan.
By: azeem, paklahore on Aug, 15 2016
Reply Reply
0 Like
BROTHER MUSHTAQ, I GOT MESSAGE. I WILL TRY MY BEST TO WRITE IN SIMPLE WAY. TO KNOW ME YOU HAVE TO STEP IN MY SHOE.////????????????
By: IFTIKHAR AHMED KHAN, CALGARY ALBERTA CANADA on Aug, 14 2016
Reply Reply
0 Like
محب وطن پاکستانیوں میں کسی کی مثال نادان دوست جیسی ہے توکسی کی سرپھرے منچلوں جیسی ۔ کوئی سیدھے سادے معصوم سے پرستار مثلاً خواتین جو اس موقع پر اپنے معمول کے مطابق فضول خرچی سے گریز کرتی ہیں ۔ بس سبز کانچ کی چوڑیاں مہنگے میک اوور کی جگہ پاکستانی پرچم کے رنگوں کا پینٹ رولر ۔ اور کپڑے بھی کوئی خاص مہنگے نہیں ۔ پھر ڈسکاؤنٹ آفرز کے درباروں میں حاضری سے کفایت شعاری کا عملی اظہار ۔ گاڑیوں پر جھنڈے کے رنگ کا پینٹ کرانے والے محب وطنوں کا مقام زیادہ بلند ہے کیونکہ اس کام کے لئے واقعی بڑا دل چاہیئے ہوتا ہے جو ہر کسی کے پاس نہیں ہوتا ۔ سوشل میڈیا کی تمام ویب سائٹوں پر یوم آزادی کے حوالے سے پوسٹیں لگانے والے بھی کچھ کم قابل تحسین نہیں ہیں ۔ کیونکہ جب تک یہ مردمجاہد اپنی مہم سر کر کے فارغ ہوتے ہیں دستر خوان لگ کے اٹھ چکا ہوتا ہے اور انہیں کھانے کی جگہ پھٹکاریں ملتی ہیں ۔ جو یہ نہایت ہی پامردی اور بےجگری سے سہہ جاتے ہیں ورنہ مزید کارروائی کے طور پر کوئی چپل جوتی وغیرہ ان کی جانب پیش قدمی کر سکتی ہے ۔ جن لوگوں کا جذبہء حب الوطنی رات نو بجے کی خبروں کے ساتھ جاگتا ہے وہ دراصل صبح کے نو بجے اپنے عروج پر ہوتا ہے جس کے تحت یہ محب وطن حضرات یوم آزادی کی چھٹی کے صدقےسارا دن سو کے گذارتے ہیں ۔ بالکل عید والے دن کی طرح ۔ بدقسمتی سے اس بار یوم آزادی اتوار کے روز آیا ۔ اور بچوں بڑوں سبھی کی ایک چھٹی ماری گئی ۔
زندہ دل اور جواں عزم محب وطن پاکستانیوں کے اپنے اپنے انداز سے اظہار مسرت کے تذکرے میں دو تین المناک واقعات بھی یاد آ گئے ہیں جن میں پرجوش نوجوان اپنے قومی پرچم کو زیادہ سے زیادہ بلند لگانے کی کوشش میں چھت سے گر جاں بحق ہو گئے ۔ اللہ ان کے گھروالوں کو صبر جمیل عطا فرمائے جن کے لئے یوم آزادی ان کے لعل کا یوم جدائی بن کے آتا ہے ۔
دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ پیارے پاکستان کو امن و سکون کا گہوارہ بنادے اسکی حفاظت کرے اور اسے ہمیشہ سلامت رکھے ۔ تمام اہل وطن کو یوم آزادی بہت بہت مبارک ہو اور یہ دن بار بار دیکھنا نصیب ہو ۔ آمین ۔
By: Rana Tabassum Pasha(Daur), Dallas, USA on Aug, 14 2016
Reply Reply
3 Like
sb se oncha ye jhanda HAMARA rahe.. ameen... PAKISTAN ZINDABAAD,
By: zai,, karachi. on Aug, 14 2016
Reply Reply
2 Like
14 AUGUST SHOULD BE REMEMBRANCE DAY.SOME PEOPLE GOT IT SOME PEOPLE LOST IT.ABOUT 20 YEARS AGO, ONE WOMAN PROBABLY FROM SIKH COMUNITY CAME TO GARAGE,MY INNER ENGINEERING WAS PROTESTING THERE IS THE RICH MUSLIM WOMAN IN HERITAGE
By: IFTIKHAR AHMED KHAN, CALGARY ALBERTA CANADA on Aug, 13 2016
Reply Reply
0 Like
IFTIKHAR KHAN PLEASE WRITE IN URDU IF YOU DO NOT UNDERSTAND ENGLISH. LIVING IN CANADA DOES NOT MEAN THAT YOU ARE AN EXPERT IN ENGLISH. EVERY TIME I READ YOUR COMMENT.....I FAILED TO UNDERSTAND IT......PLEASE THINK BEFORE YOU WRITE .....AND WRITE IN PLAIN LANGUAGE....DO NOT TRY TO BE A PHILOSOPHER...... .THANKS.....
By: MUHAMMAD MUSHTAQ, Rawalpindi on Aug, 14 2016
2 Like
Language:    
With Independence Day 2016 just around the corner, it seems apt to count down all the different kind of ‘patriotic’ people we see this time of the year. We all have them in our social circle, from the most prominent Pakistan lover who blasts the age old ‘Milli Naghme’ aka patriotic songs in his car to the least bothered Pakistani who only puts up the mandatory Independence Day status because well… its Pakistan’s birthday.