اہل کشمیر اور ہم۔۔۔۔۔۔۔

(Sitara Amin Komal, )
وادی کشمیر لہو لہو کوئی ایسا دن نہیں گزرا جب شہادت کی خبر نہ آئی کوئی عورت بیوہ نہ ہوئی ہو ، کوئی بچہ یتیم نہ ہوا ہوا ، کوئی جوان بچہ بوڑھا اپنی بینائی نہ کھو بیٹھا ہو ، یا کسی گھر پہ ظلم کا پہاڑ نہ ٹوٹا ہو ، اﷲ جی وہ دن کب آئے گا جب کشمیری آزاد خوش باش امن سکون کی چھاؤں میں ہوں گے – روز تشدد میں اضافہ ہوتا چلا جارہا ہے ، کشیدگی ہے کہ بڑھتی جاتی بڑھتی جاتی . انسانی حقوق کے خلاف ورزیاں ہورہی ہیں – بھارت کے مظالم میں طوالت آتی جارہی ہے – عالمی برادری کا ضمیر تو سوجاتا ہے ، جہاں مسلمانوں پہ ظلم ہوگا ان سب کو سانپ سونگھ جاتے این جی اوز جو انسانی حقوق کے تحفظ کے نام پہ بنیں وہ سب گونگی بہری کا روپ دھار لیتی ہیں . ہمارے ارباب اختیار اندھے بن جاتے ہیں . ہمارے اپنے اہل پاکستان کے ضمیر نہیں جاگتے ، بچوں جوانوں بوڑھوں عفت مآب بیٹیوں کی پاکستانی پرچم میں لپٹی لاشیں ہمارا ضمیر جھنجھوڑ رہی ہیں . مگر ہم اتنے بے حس تو نہ تھے . ہماری شہ رگ دشمن کے شکنجے میں اور ہمیں بیرون ملک علاج اور نت نئے سوٹ بدلنے سے فرصت ہی نہیں – بھارت نے ہمیشہ اوچھے ہتھکنڈے استمال کی? . نماز جمعہ پہ تو پابندی لگتی تھی مگر نماز عید پہ پابندی لگا کر بھارت اپنا مکروہ چہرہ اور بد باطن ظاہر کیا ہے – بھارتی فوج نہتے کشمیریوں پہ آنسو گیس . گولیوں ، پیلٹ گنوں کا بے دریغ استمال کرتی ہے مگر ان کے حوصلے بلند رہتے . کشمیری ہر ہر ظلم اذیت آزادی کی خاطر برداشت کر رہے ہیں – اس جدوجہد آزادی کو بھارت دہشت گردی کہتا ہے . تو بھارت اتنے ظلم کیا کہلاتے ؟ کشمیری خواتین کی حرمت محفوظ ہے نہ چادر چاردیواری کا تحفظ ہے – کاش کوئی تو سمجھے کوئی تو جاگے . میرے خیال سے کشمیر کی آزادی صرف اور صرف طاقت سے حاصل ہوگی . بھارت کو اس دہشت گردی تخریب کاری کا حساب دینا ہوگا . ہماری سیاسی قیادت ہوش کے ناخن لے اور بہادری سے اپنے موقف پہ ڈٹ جا? اور کشمیر کی آزادی کی خاطر وہ سب کرے جو ہمیں بہت پہلے کرنا چاہیے تھا کشمیریوں کی امیدوں کا مرکز پاکستان ہے ، ہمیں ان کی امیدوں پہ پورا اترنا ہوگا – ہمیں بتانا ہوگا کہ ہم آپ کے ساتھ ہیں تنہا نہیں چھوڑیں گے تو یقین مانو اہل کشمیر کے حوصلے بلند ہونگے وہ اپنے موقف پہ سختی سے ڈٹ جائینگے خدارا ان کی قربانیاں رائیگاں نہ جانیں دیں . ان کی جدوجہد کا ثمر صرف اور صرف آزادی و خود مختاری ہے . اہل کشمیر کی ہمت کو سلام
یاران جہاں کہتے ہیں کشمیر ہے جنت
جنت کسی کافر کو ملی ہے نہ ملے گی

کشمیر واقعی جنت ارضی ہے . جنت کو کفار کو ملنے سے رہی . مگر فی الحال تو جنت ارضی کفار کے قبضے میں ہے جہاں وادی کشمیر بینظیر کے مکینوں پہ عرصہ حیات تنگ کیا ہوا ہے . بھوک سے روتی بلکتے بچے پیلٹ گن کا شکار آنکھوں کی بینائی سے محروم کشمیری منتظر نگاہوں سے پر امید نظروں سے اہل پاکستان کو تک رہے . پاکستان کے جھنڈے میں لپٹی جواں لاشیں ہمارا ضمیر جھنجھوڑ رہی ہیں . کبھی آپ کا دل نہیں کانپا اتنے مظالم پہ کشمیریوں کی چیخ و پکار آہ و بکا آپ تک نہیں پوہنچی . کوئی دن ایسا نہیں گزرا جب کسی گھر شہادت نہ ہوئی ہو . کسی عفت مآب بیٹی کی عصمت نہ لوٹی گئی ہو . کوئی دن ایسا نہیں آیا جب کوئی بہن بیوہ نہ ہوئی ہو . کوئی بچہ یتیم نہ ہوا ہو . خدارا اپنے کیا عالمی ضمیر کو بھی جگائیں . ہم کو فکر نہیں ہماری شہ رگ بھارتی قبضیے میں ہے .
جاگو اہل وطن جاگو اہل قلم ہوشیار باش
آپ کے پاس قلم کی طاقت آپ اس کا استمال کریں اہل کشمیر گا ساتھ دیں
اس وقت ہمارا فرض ہم اہل کشمیر کی مالی اخلاقی اور افرادی مدد کریں
سلوٹ اہل کشمیر سلوٹ
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Sitara Amin Komal

Read More Articles by Sitara Amin Komal: 7 Articles with 2937 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
23 Sep, 2016 Views: 295

Comments

آپ کی رائے