چار الفاظ اسم ِ اعظم

(Shahid Raza, Karachi)
یہ عمل آزمایا ہوا ہے اگر آپ کو باس سے کوئی اہم بات کرنی ہے،یا کسی بھی فرد کو اپنی بات کہنی اور منوانی ہے تو یہ چار الفاظ پڑھ کر اُس سے بات کریں انشاء اﷲ وہ نہ صرف آپ کی بات سُنے گا بلکہ آپ کی ہاں میں ہاں بھی ملائے گا شرط یہ ہے کے کام حلال ہو،جائز ہو۔حرام کاموں میں کوئی عمل اور دعا کام نہیں کرتی اگر آپ کا کام حلال ہے مثلاً ایمرجنسی ہے چھٹیاں چائیں،ایڈوانس سیلری چاہئے،کسی کے پاس نوکری کے لئے جا رہے ہیں ،یا آپ کا انٹرویو ہے ایسا کوئی بھی کام ہو تو یہ عمل بہت ہی اعلی ہے آزمایا ہوا بھی ہے:

یا سُبُو حُ
یا قُدوسُ
یا غَفُورُ
یا وُدوُد

یہ اﷲ کے چار نام لیتے جائیں اور اپنی جائز بات بیان کریں انشاء اﷲ فتح آپ کی ہو گی باقی اﷲ کی مصلحت تو اﷲ ہی بہتر جانتا ہے۔
Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 1102 Print Article Print
About the Author: Shahid Raza

Read More Articles by Shahid Raza: 162 Articles with 113709 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

W salam jee inshah Allah main bhi ahteyat karoon ga Allah hafiz
By: shahid raza, karachi on Dec, 24 2016
Reply Reply
0 Like
جناب شاہد رضا صاحب کیا اس وظیفے کے لیے قرآن و حدیث کی کوئی دلیل بھی ہے کہ نہیں؟
By: Baber Tanweer, Karachi on Dec, 21 2016
Reply Reply
2 Like
شاہد رضا بھائی بندہ آپ کے دوسرے آرٹیکل کا منتظر ہے۔ دوسری بات یہ کہ آپ نے بات کرنے سے پہلے سلام کرنے کی جانب توجہ دلائی، بندہ اس یاد دھانی کے لیے آپ کا شکر گزار ہے۔ جزاک اللہ خیرا۔ لیکن یہاں اس بات کی بھی نشاندہی کردوں کہ آپ نے بھی اپنا آرٹیکل بغیر بسم اللہ اور بغیر سلام کیے کیا ہے۔ کیا اچھا ہو کہ آپ بھی آئندہ اس کی پابندی کریں۔ شکریہ
By: Baber Tanweer, Karachi on Dec, 23 2016
1 Like
Jee inshah Allah is article ka dosra part jald publish ho Ga with all references aur aik bat ager bra na manayin to koi bhi bat kernay say pehlay salam UN alikum zaror kahain bat main aur aamal may. Berkat ho jati hai mazrat Kay sath ok Allah hafiz w nasir
By: shahid raza, karachi on Dec, 22 2016
0 Like
Language:    

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ