ہندو انتہاء پسندوں کی بوکھلاہٹ۔۔۔!!

(جاوید صدیقی, کراچی)
ہندوستان میں ہندو انتہاء پسندوں نے پاکستانی فنکاروں کی آڑ میں اپنے ہی ملک کے مسلمان اداکاروں کو تعصب کا نشانہ بنانا شروع کردیا ہے حال ہی میں بھارتیہ جنتا پارٹی نےبالی ووڈ کے کنگ خان کی نئی آنے والی فلم رئیس کے خلاف کھل کر میدان میں آگئی۔!! بھارتیہ جنتا پارٹی کے جنرل سیکریٹری کیلاش وجے ورگیا نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ایک ٹوئٹ میں کنگ خان کو غدار قرار دیتے ہوئے اُن کی نئی آنے والی فلم رئیس کے بائیکاٹ اور ہرتھیک کی فلم کابل کی حمایت کا اعلان کیاہے۔۔۔،سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما نے کہا کہ جورئیس ملک کا نہیں وہ ہمارے کسی کام کا نہیں جبکہ کابل محب وطن ہے جس کا ساتھ پورے ہندوستان کو دینا چاہیے۔۔۔۔،یاد رہے بھارتیہ جنتا پارٹی کی جانب سے شاہ رخ خان کی فلموں دل والے اورفین کا بائیکاٹ بھی کیا گیا تھا تاہم ایک بار پھر بے جے پی کے انتہاء پسند کنگ خان کی مخالفت میں کھڑے ہوگئے ہیں۔،خیال رہے کہ فلم رئیس کی نمائش کیلئے تیار ہے جس میں پاکستانی اداکارہ ماہرہ کنگ خان کی اہلیہ کا کردار ادا کررہی ہیں جبکہ ہریتھک روشن کی فلم کابل بھی ریلیز کیلئے تیارہے۔،بالی ووڈ کے کنگ خان نے حالیہ دنوں دئیے جانے والے انٹرویو میں ماہرہ کی صلاحیتوں اور اداکاری کی تعریف کرتے ہوئے کہا تھا کہ مجھے نئی اداکارہ سے بہت کچھ سیکھنے کو ملا اور میں اُن کا مستقبل بہت روشن دیکھ رہا ہوں ۔۔۔!!پاکستان پرشدت پسندوں کیخلاف کارروائی کیلئے زور دینے والے بھارت میں وشیواہندوپریشد جیسی خطرناک تنظیمیں جہاں چاہیں مسلمانوں کا استحصال کرتی ہیں اورپراچی سادھوی جیسے تنگ نظر لوگ آزادی سے معاشرے میں گھوم پھررہےہیں مگر بھارت کا کوئی حلقہ انکے کیخلاف ایکشن کا مطالبہ نہیں کرتا۔۔۔ بھارت میں ہندو انتہا پسند جماعت شیو سینا نے پاکستان فنکاروں کے اسٹیج ڈرامے پر مکمل پابندی عائد کردی ہے اور بآور کرایا ہے کہ اگر کوئی بھی بھارتی ایونٹ کمپنی پاکستانی فنکاروں کو مدعو کریگی تو وہ سنگین نتائج سے دوچار ہوگی ۔۔۔۔بھارتی انتہا پسند جماعت شیو سینا نے نہ صرف پاکستانی سیاستدانوں بلکہ فنکاروں اور کھلاڑیوں پر بھی بھارت کےدروازے بند کردیئے ہیں جب کہ بھارت کے رہائشی مسلمانوں کو طرح طرح کے الزامات لگا کر قتل بھی کیا جارہا ہے ۔۔۔ بھارتی فرقہ پرست وزیراعظم نریندر مودی نے تبدیلی مذہب کے سلسلے میں دہشت گرد تنظیموں بجرنگ دل ، وشواہندو پریشد اور جاگرن منچ کی مذموم سرگرمیوں کو ہوا دے رکھی ہے ۔۔۔۔،بھارتی انتہا پسند ہندو جماعت بی جے پی اور بھارتی انتہا پسند جماعت شیو سینا نے مسلمانوں کیساتھ اپنا رویہ درست نہ کیا تو بھارت بنگال، بہار اور آسام والوں کے لیے بانگستان اور حیدرآباد دکن کے لیے الگ ملک عثمانستان ثابت ہوگا جبکہ مالوہ، بہار اور آگرہ کے مسلمانوں کے لیے ممالک کے نام صدیقستان، فاروقستان اور حیدرستان تجویزبن کر سامنے آسکتا ہے،بھارتی قیادت کی تنگ نظری اور مسلمانوں کے خلاف اقدامات کے ردعمل میں مستقبل میں پورا ہوتا نظر آتا ہے، بھارتی انتہا پسندو کے متعصبانہ رویہ پر بھارت کے وجود سے کئی اور پاکستان جنم لے سکتے ہیں جس کے لیے حالات انتہا پسند ہندو خود رپیدا کررہے ہیں اور ریاست جموں کشمیر کے عوام بھی تاج آزادی پہنیں گے۔۔ بھارتی مسلمان اعلیٰ عہدوں فائز کوہر سطح پر اپنی حب الوطنی کا ثبوت دینا پڑتا ہے ،اُن کے ساتھ امتیازی سلوک روا رکھا جاتا ہے۔ چشم فلک ایک نہیں کئی اور نئے پاکستان برصغیر کے نقشے پر دیکھ رہی ہے۔۔۔۔!! بھارتی خفیہ ایجنسی را سمجھتی ہے کہ امریکی نئے صدر ڈونلڈ ٹرمپکے آنے سے بھارت کو دنیا بھر میں مزید دہشتگردی اور غنڈہ گردی کرنے کا کھلا موقع میسر آگیا ہے اور اب بھارت پاکستان کے پڑوسی ملک افغانستان کیساتھ ملکر پاکستان اور پاکستانی خفیہ ایجنسی کو بدنام کرنے کیلئے اپنے سازشوں کے جال پھیلاکر بدنامی کا طوغ پہنائے گا یہ بھارت کی سب سے بڑی غلطی ہے کیونکہ بھارت بھول گیا ہے کہ اُس نے ستر سالوں سے زائد مقبوضہ کشمیر پر اپنی جارحانہ پالیسی برقرار رکھتے ہوئے ظلم و بربریت اور انسانی حقوق کو جوس طرح پامال کیا ہے وہ ایک سیاہ تاریخ ہے ، بھارت مسلسل دنیا بھر میں دہشت گردی اور بے امنی کا سبب بنتا چلا آرہا ہے اور انتہا پسند جماعت بی جے پی اور اس کے رہنماؤں کے سبب خود بھارت اپنے اندرونی حالات سے بے قابو ہوگیا ہے ، پورے بھارت میں اقلیتوں کا جس قدر ظلم و بربریت کا بازار گرم ہے انسانیت بھی شرم سے مرچکی ہے لیکن انتہا پسند ہندو بھول گئے کہ گاندھی اور نہرو نے بھارت سیکولر بنایا تھا لیکن بے جی پی نے بھارت کو انتہا پسند ظالم ملک بناکر رکھ دیا ہے جہاں پوری دنیا کے سیاح بھارت آنے پر اپنے آپ کو غیر محفوظ سمجھتے ہیں دوسری جانب وہ پاکستان جہاں بھارتی خفیہ ایجنسی اپنے مذموم عظام کی تکمیل کیلئے مسلسل کئی سالوں سے پڑوسی ملک پاکستان کے اندر خوف کی فضا قائم کیئے ہوئے تھی وہاں آپریشن ضرب عضب کے بعد بھارت دنیا بھر میں بے نقاب ہوکر رہ گیا اسی بابت بھارتی سینا جھوٹ اور دھوکے کی بنیاد پر کبھی سرجیکل آپریشن کا ڈھونک رچاتے ہوئے بدنام ہوئے تو کبھی پٹھان کوٹ کا خودساختہ ڈرامے سے بھی بدنامی کا سامنا کرنا پڑا حتیٰ کہ نوبت یہاں تک آنپہچی کہ بھارتی سینا ؤں کے سپاہیوں نے خود بھارتی فوج کے کرپشن ، لوٹ مار اور بے انتظامی کو سوشل میڈیا میں پیش کرکے بھارت کے چہرے پر داغ عیاں کردیا۔۔۔۔!! معزز قائرین! بھارت میں بسنے والے ذی شعور ہندو بھی ان انتہا پسند ہندوؤں کے اعمال سے نہ صرف شرمندہ ہیں بلکہ پریشان بھی ہیں ، بھارت کے ذی شعور لوگ بھارتی خفیہ ایجنسی کو دنیا کی ناکام ایجنسی کے طور پر دیکھتے ہیں جبکہ انتہا پسند جماعت بی جے پی کے رویہ کو بھارت کیلئے نا تلافی نقصان کے تحت دیکھتے ہیں ، ان کے مطابق بی جے پی جماعت کی پالیسی بھارت کی ترقی کے بجائے بھارتی تنزلی کا باعث بنی ہوئی ہے، بھارتی انتہا پسند ہندو اپنے ملک کی سیاسی ، سماجی، اقتصادی، مذہبی عدم استحکام، عدم تحفظ اور اپنے انتہا پسند لوگوں کی بے لگامی سے بوکھلاہٹ کا خود ہی شکار ہوچکے ہیں ان کے مطابق بی جے پی حکومت کی اختتامی مدت تک پھارت دنیا میں بہت پہچھے رہ جائیگی۔ ۔۔۔
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: جاوید صدیقی

Read More Articles by جاوید صدیقی: 308 Articles with 160437 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
24 Jan, 2017 Views: 433

Comments

آپ کی رائے