اسلام پاکستان اور آئین سے غداری کیونکر

(Mian Ihsan Bari, )

قادیانی جنہیں 7ستمبر1974کو قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران متفقہ طور پر منظور کی جانے والی قرارداد کے ذریعے غیر مسلم اقلیت قراردے ڈالا گیا تھاوہ اب 43سال بعد بھی اسلام پاکستان اور اس کے آئین سے غداری کے مرتکب ہورہے ہیں دین اسلام میں اقلیتوں کے حقوق متعین ہیں مگر وہ صرف ان غیر مسلم اقلیتوں کے لیے ہیں جو پاکستان میں اپنے آپ کو اپنے اپنے مذہب کی شناخت کے ساتھ رجسٹر کرواتے ہیں اورووٹوں میں بھی بطور اقلیت نام درج کرواتے ہیں قادیانیوں کا مسئلہ ان تمام غیر مسلم اقلیتوں سے سراسر مختلف ہے انہوں نے آج تک نہ اس اسمبلی کی متفقہ قرار داد کو مانا ہے اور نہ ہی بعد ازاں ضیاء الحق کے دور میں کی جانے والی آئینی ترامیم اور آئینی دفعہ295Cکو قبول کرتے ہیں یعنی یہ اڑیل گھوڑے نہیں زہریلے سانپ اور اژدھے بنے اندر ہی اندرسیدھے سادھے مذہب اسلام کی کریہہ شکل بنا کر اپناتے ہیں اپنے آپ کو مسلمان کہلوانے پر مصر ہیں باقاعدہ ٹی وی پر نشریات چلا رکھی ہیں جہاں پر اپنی جعلی نبوت اور ہمارے تمام انبیاء بشمول حضرت محمدﷺ کے خلاف غلیظ ترین پراپیگنڈا جاری ہے جس کا خصوصی پراپیگنڈا سیل اپنی نام نہادقادیانی ریاست کے ہیڈ کوارٹرسابق ربوہ اور حال چناب نگر میں بنا رکھا ہے ۔احمدی نوجوانوں کی مسلح فورس "خدا م الاحمدیہ"کے نام سے تیار کر رکھی ہے جو قرب و جوار میں موجودغریب اور معصوم مسلمانوں پر حملے کرتے۔انہیں زخمی کرتے اور ان سے زمینیں ہتھیالیتے اور قابض ہوجاتے ہیں کئی مسلمانوں کو قتل کر چکے ہیں۔ چناب نگر میں ہی اپنی نا م نہاد عدالتیں حتیٰ کہ ہائیکورٹ سپریم کورٹ بھی بنارکھی ہیں چونکہ چناب نگر کے تینوں طرف پہاڑ اور چوتھی طرف دریا بہہ رہا ہے اسلیے اسے محفوظ ترین علاقہ سمجھتے ہوئے اپنی علیحدہ قادیانی ریاست قائم کر رکھی ہے اور ڈھیروں اسلحہ پہاڑیوں ،غاروں اور میدانوں میں ڈمپ کر رکھا ہے ۔کالجوں سکولوں اور کھلیوں کے میدانوں کو کنکریٹ ڈال کر اوپر مٹی ڈال کر گھاس اگا رکھی ہے تاکہ انہیں بوقت ہنگامی ضرورت بطور ائیر پورٹ کے استعمال کیا جاسکے۔چونکہ ان مرتدین کوہر حکمران نے چھوٹ دیے رکھی ہے تو صورتحال بہ ایں جا رسیدکہ انہوں نے مسلمانوں کے قران مجید میں اپنی مرضی کی تحریف کرکے اس کے تراجم اور تفاسیر چھاپ کر تقسیم کرنا شروع کررکھی ہے حتیٰ کہ مسلم مساجد میں بھی مفت رکھوانا شروع کرڈالی ہیں پاکستان کی لائبریریوں اور مدارس عربیہ میں بھی حیلے بہانوں سے بھجوا رہے ہیں۔تاکہ مسلمان خوامخواہ غلطی سے پڑھ کرگمراہی کی بھینٹ چڑھ جائیں قوم بارہا واضح کرچکی ہے کہ قادیانی ناسوردنیا کا وہ غلیظ ترین فتنہ ہے جس کی سرکوبی کرنا ہر مسلمان پر فرض عین ہے۔پھر ایسے ملک دشمن عناصر کو جن کے لٹریچر میں واضح طور پر پاکستان کو توڑنے جیسی خرافات درج ہوں انہیں کلیدی عہدوں پر افواج اور سول اداروں میں تعینات رکھنے پر ہمارے حکمران خود کیسے ملک دشمنی کے الزامات سے بچ سکتے ہیں قادیانیوں کے بارے میں حکومتی نرم گوشہ آج بھی قابل صد افسوس ہے فتنہ قادیانیت دنیا کاایسا بد ترین فتنہ ہے۔ جس کے خلاف جدوجہد کرتے ہوئے اورختم نبوت کے تحفظ کے لیے 12سو صحابہ کرام نے شہادت پائی1953کی اینٹی قادیانی تحریک میں صرف لاہور کے علماء طلباء بزرگ نوجوان اور معصوم بچوں پر ٹینک چڑھا کر دس ہزار سے زائد شہید کرڈالے گئے۔سو سال سے زائد عرصہ سے چلنے والے اس فتنہ عظیم کی سرکوبی اس وقت ہوسکی جب انہوں نے نشتر کالج ملتان کے نہتے طلباء پر29مئی1974کو سابق ربوہ کے ریلوے اسٹیشن پر راقم کے لکھے ہوئے پمفلٹ " آئینہ مرزائیت" میں درج ان کی سخت نازیبا تحریروں کو دکھانے پر حملہ کرکے ایک سو ستر سے زائد طلباء کو شدید زخمی کر ڈالا تھا جس پر راقم اور نشتر یونین کے عہدیداروں کی پریس کانفرنس اگلے روز پورے ورلڈ میڈیا اور پاکستانی اخبارات کی زینت بن کر لیڈ سٹوری کے طور پر شائع ہوئی تحریک چلی اور بالآخر مکمل کامیاب رہی ۔کہ مرتدین و زندیقین قادیانی آئینی طور پر غیرمسلم اقلیت قرار پاگئے۔آجکل ان کی نئی پلید ارتدادی سرگرمیوں کا حکومت فوری نوٹس لے امتنائے قادیانی آرڈیننس اور اس پر عملدر آمد کیے جانے کے لیے دفعہ295cکو عملاً نافذ کرکے اس پر سختی سے عملدرآمد کروایا جائے۔ قادیانیوں کا قران شریف کی تحریف شدہ تفسیر اور ترجمۃ القران کی اشاعت اسلام اور پاکستان کے آئین کے خلاف مذموم سازش ہے۔اس ناپاک جسارت کرنے پر قادیانیوں کے بارے میں نرم گوشہ رکھنا اور انہیں رعائتیں دیناحکومت کی قادیانی نوازی کے مترادف سمجھا جائے گاوزیر اعظم اور اس کا خاندان صحیح العقیدہ سنی مسلک ہے پھر قادیانیوں سے ایسا کرناان کی کم ظرفی اور ان کے کمزور ایمان کی علامت محسوس ہوتا ہے پاکستا ن میں غیور مسلمان قادیانیوں کی اس شرمناک سازش کو کبھی کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔درایں گھمبیر حالات متفقہ طور پر قوم حکومت سے مطالبہ کرتی ہے کہ قادیانیوں کو آئین پاکستان کا پابند بنایا جائے۔قادیانیوں کی طرف سے تحریف شدہ قرآن و تفسیر شائع کرنے اور مسلم مساجد میں رکھنے پر قوم بجا طور پر گہری تشویش میں مبتلا ہو گئی ہے تحریف قرآن اور اس کی نام نہاد تفسیر کی اشاعت کرنے جیسی سازشیں کرنے سے ثابت ہو گیا ہے کہ قادیانی خود کو مسلمان ظاہر کرکے دنیا کو ابھی تک گمراہ کر رہے ہیں۔ناموس رسالت ﷺ کے لیے مسلمان اپنا سب کچھ قربان کردیں گے اور کسی بھی بڑی سے بڑی قربانی سے قطعاً دریغ نہ کریں گے۔حکمران فوری نوٹس لے کر ایسے تحریف شدہ قرآن اور اس کی نام نہاد تفسیر کو ضبط کریں اور مرتد و زندیق ناشرین کے خلاف295Cکے تحت فوراً کاروئی کرکے انہیں کیفر کردار کو پہنچایا جائے۔

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Mian Ihsan Bari

Read More Articles by Mian Ihsan Bari: 278 Articles with 117640 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
18 Jul, 2017 Views: 441

Comments

آپ کی رائے

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ