جنّت کے باغات کیا ہیں؟

(Muhammad Rafique Etesame, Ahmedpureast)

حضرت انس بن مالکؓ سے روایت ہے فرمایا نبی پاکﷺ نے کہ جب تم جنّت کے باغات کے قریب سے گزرو تو خوب چرو ، صحابہ کرام رضوان اللہ تعالیٰ علیہم اجمعین نے عرض کیا یا رسول اللہﷺ جنّت کے باغات کیا ہیں؟ تو آپﷺ نے ارشاد فرمایا کہ یہ ذکر کے حلقے ہیں(جامع الترمذی)۔

اس حدیث شریف سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ دنیا میں ذکر کے حلقے در حقیقت جنّت کے باغات ہیں یعنی اگر کچھ لوگ مساجد میں یا گھروں میں یا کسی اور مقام پر حلقہ بناکر بیٹھ جائیں اور اللہ تعالیٰ کا ذکر کریں مثلاً سبحان اللہ، لا ا لہ الا اللہ، الحمد للّٰلہ ، اللہ اکبر یا قرآن پاک کی تلاوت کریں تو یہ جنّت کے باغات ہیں اور خوب چرنے سے مراد یہ ہے کہ زیادہ سے زیادہ ذکر کیا جائے تاکہ اس کی جزا کے طور پر اللہ تبارک و تعالی ٰ روز قیامت جنّت کے باغات میں داخل فرمائیں جس کے پھل ایسے ہیں کہ انکی لذّت او ر کیفیّت کے بارہ میں سوچا بھی نہیں جاسکتا اور جہاں ہمیشہ ہمیشہ کیلئے رہنا ہے۔

اللہ تبارک و تعالیٰ سے دعا ہے کہ وہ ہمیں زیادہ سے زیادہ ذکر کرنے کی توفیق عطا فرمائے، آمین
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Muhammad Rafique Etesame

Read More Articles by Muhammad Rafique Etesame: 158 Articles with 130110 views »

بندہ دینی اور اصلاحی موضوعات پر لکھتا ہے مقصد یہ ہے کہ امر بالمعروف اورنہی عن المنکر کے فریضہ کی ادایئگی کیلئے ایسے اسلامی مضامین کو عام کیا جائے جو
.. View More
14 Nov, 2017 Views: 542

Comments

آپ کی رائے

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ