امریکا نے روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام میں ملوث میانمار کے فوجی سربراہ پر پابندی لگادی

امریکا نے روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام میں ملوث میانمار کے فوجی سربراہ پر پابندی لگادیواشنگٹن: ( 17 جولائی 2019) امریکا نے مسلم کش فسادات کو روکنے کے بجائے انتہا پسندوں کی پشت پناہی کرنے پر میانمار کی فوج کے سربراہ سمیت 3 اعلیٰ افسران پر پابندیاں عائد کر دیں۔

امریکی حکومت نے میانمار کی فوج کے سربراہ جنرل من آنگ ہلینگ، ڈپٹی کمانڈر ان چیف سوئے ون، بریگیڈیئر جنرل تھا اوو اور بریگیڈیئر جنرل آنگ اور ان کے اہل خانہ پر سفری اور اقتصادی پابندیاں عائد کردیں ہیں۔

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا کہ میانمار حکومت نے اب تک ان افراد کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جو مسلم کش فسادات کے دوران انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں مرتکب پائے گئے تھے۔

مائیک پومپیو نے مزید کہا کہ امریکا دنیا کا پہلا ملک بن گیا ہے جس نے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی اور قتل عام پر میانمار فوج کے اعلیٰ عہدیداروں پر علی الاعلان پابندی عائد کی ہے اور فوجی افسران کے خلاف کارروائی نہ کرنے پر برمی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

امریکی وزارت خارجہ نے مزید کہا کہ مکمل تحقیقات کے بعد اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ مذکورہ فوجی افسران روہنگیا مسلم برداری کی ماورائے قانون ہلاکتوں کے ذمہ دار اور انسانیت سوز مظالم میں ملوث پائے گئے ہیں۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.