کیا یہ ویڈیو بچوں کے لیے ہے؟

ویب ڈیسک — 

ویڈیوز ویب سائٹ "یو ٹیوب" نے آن لائن ویڈیوز پوسٹ کرنے والوں پر یہ پابندی عائد کی ہے کہ وہ کوئی بھی مواد شائع کرنے سے قبل آگاہ کریں گے کہ، آیا یہ مواد بچوں کے لیے ہے یا نہیں۔

اس اقدام کا مقصد یو ٹیوب پر ایسے اشتہارات کو روکنا ہے جن کے ذریعے بچے والدین کی مرضی کے بغیر اپنی معلومات شیئر کر دیتے ہیں۔

دنیا بھر میں کروڑوں بچے ویڈیو ویب سائٹ یو ٹیوب پر کارٹونز، شوز اور کھیلوں کی مختلف سرگرمیوں پر مشتمل ویڈیو دیکھتے ہیں۔ بعض حلقوں کی جانب سے یو ٹیوب پر زور دیا جاتا رہے ہے کہ وہ نازیبا مواد کی بچوں تک رسائی کو روکیں۔ ناقدین کا یہ اعتراض تھا کہ یو ٹیوب بچوں کے کارٹون چینلز کے دوران ایسے اشتہارات دکھاتا ہے جس میں نازیبا مواد ہوتا ہے۔

خیال رہے کہ "گوگل" اور اس کی ذیلی کمپنی "یو ٹیوب" پر بچوں کی آن لائن پرائیویسی پالیسی ایکٹ کی خلاف ورزی پر رواں سال ستمبر میں 170 ملین ڈالر کا جرمانہ عائد کیا گیا تھا۔ فیڈرل ٹریڈ کمشن اور نیویارک اٹارنی جنرل کی جانب سے یوٹیوب پر یہ الزام تھا کہ یوٹیوب پر شائع ہونے والے اشتہارات میں بچوں کے والدین کی مرضی کے بغیر ان کی معلومات غیر قانونی طور پر جمع کی جاتی ہیں۔

/**//**/

 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.