پنجاب کی 56 کمپنیوں میں سے ایک بھی نہیں بچے گی، سب گھر جائیں گے: چیف جسٹس

اسلام آباد (خصوصی رپورٹر) سپریم کورٹ نے ڈپٹی جنرل منیجر لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی محمد حنیف کی نوکری پر بحالی کی درخواست مسترد کرتے ہوئے معاملہ واپس کمیٹی کو بھجوا دیا۔ چیف جسٹس پاکستان نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت کی بنائی گئی کمپنیوں میں اب کوئی نہیں رہے گا، یہ کمپنیاں ختم ہوں گی۔ چیف جسٹس گلزار احمد کی سربرا ہی میں تین رکنی بینچ نے سماعت کی۔ درخواست گزار نے موقف اپنایا کہ لاہور ٹرانسپورٹ پرائیویٹ کمپنی لمیٹڈ میں بطور ڈپٹی منیجر کام کر رہا تھا۔ مجھے رول کے برخلاف نکال دیا۔ جسٹس اعجا ز الاحسن نے کہا جس عہدے پر کام کررہے تھے وہ عہدہ ہی ختم ہو گیا۔ درخواست گزار صرف مالی نقصانات کا تقاضا کر سکتا ہے، جس پر درخواست گزار نے کہا نوکری کا صرف ایک سال رہ گیا ہے، لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی پرائیویٹ لمیٹڈ پنجاب حکومت کی 56 بنائی گئی کمپنیوں میں سے ایک کمپنی ہے، چیف جسٹس نے ریما رکس دیتے ہوئے کہا اب ان کمپنیوں میں کوئی نہیں رہے گا یہ ساری کمپنیاں ختم ہو جائیں گی۔ ان کمپنیوں کے اب سب لوگ گھر جائیں گے۔ پنجاب کی ان 56 کمپنیوں میں سے اب ایک کمپنی بھی نہیں بچے گی۔ جس پر درخواست گزار نے کہا کوئی کرپشن نہیں کی کوئی چوری نہیں کی، آپ کو اللہ کا واسطہ ہے میری بیٹیاں ہیں۔ چیف جسٹس نے درخواست گزار کو روکتے ہوئے کہا کہ عدالت میں جذباتی باتوں کا کوئی فائدہ نہیں، کوئی اور کام ڈھونڈ لیں۔ عدالت نے لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی کی ذیلی کمیٹی کو محمد حنیف کا کیس دوبارہ دیکھنے کی ہدایت کر دی۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.