ملائیکہ اروڑا نے اپنے مداحوں کو گرتے بالوں کا شرطیہ علاج بتادیا


بال لمبے، گھنے اور چمکدار سب کو اچھے لگتے ہیں اور صرف عام لڑکیاں ہی نہیں مشہور اداکارائیں بھی اپنے بالوں کے حوالے سے مختلف حربے اپناتی نظر آتی ہیں۔ حال ہی میں بھارتی اداکارہ ملائکہ اروڑا نے اپنے گرتے ہوئے بالوں سے متعلق ایک ویڈیو پیغام جاری کیا ہے۔
جس میں انھوں نے بتایا ہے کہ:
پیاز کو اچھی طرح پیس کر اس کے رس کو چھان لیں اور روئی کی مدد سے بالوں کی جڑوں میں لگائیں اور کچھ دیر کے لیے لگا رہنے دیں۔
اور خشک ہونے پر اپنے پسندیدہ شیمپو سے بالوں کو دھو لیں۔ ویڈیو کے آخر میں انھوں نے مزید بتایا ہے کہ:
’یہ عمل ایک ہفتے تک لگاتار دہرائیں، اس نسخے کے بہترین نتائج آپ کو مایوس نہیں کریں گے۔‘
واضح رہے کہ ملائکہ اروڑا بھی کورونا وائرس میں مبتلا ہو گئیں تھیں لیکن اب وہ صحتیاب ہوگئی ہیں۔ مگر اس کے بعد ان کے بال بہت زیادہ جھڑنے لگے ہیں جس کی وجہ سے انھوں نے اپنے مداحوں کو بھی بال جھڑ سے نجات کا طریقہ بتا ڈالا۔
View this post on Instagram

Hair loss is one demon that we all have to face in our lives...for some it comes in phases and for some it's like an everyday problem. But we don't need to fear it...just need to tackle it the correct way. Apart from maintaining a healthy diet, we can use some simple diy tips to control the hair fall. Post my Covid19 recovery, even I have been experiencing an intense hair fall than usual, so apart from my daily dose of good ol' vitamins, I have also restarted my one ingredient diy hair fall therapy...Onion juice!. Just grate one fresh onion and extract it's juice, now apply the juice to ur scalp with the help of a cotton ball. Keep it for sometime and then wash it off with a paraben free shampoo. You'll see the results within a week and trust me..you'll not be disappointed. #MalaikasTrickOrTip #HairCare

A post shared by Malaika Arora (@malaikaaroraofficial) on


WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.

3608