کرک مندرواقعہ: غفلت برتنے پر2 ایس ایچ اوسمیت12اہلکاربرخاست

فوٹو: آن لائن

صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع کرک میں ہندوؤں کے ٹیری مندر کو نذر آتش کرنے کے واقعہ پر 2 ایس ایچ اوز سمیت 12 پولیس اہل کاروں کو نوکری سے برخاست کردیا گیا ہے۔

پولیس کے مطابق ان اہل کاروں کو غفلت برتنے پر نوکری سے برخاست کیا گیا ہے۔ آئی جی خیبرپختونخوا کے حکم پر غفلت اور لاپرواہی کے مرتکب پولیس اہلکاروں کیخلاف سخت تادیبی کارروائی عمل میں لائی گئی ہے، جب کہ انکوائری ٹیم کی رپورٹ کی روشنی میں 12 پولیس اہلکاروں کو فوری طور پر برطرف اور دیگر 30 سے زائد اہلکاروں کی ایک سالہ سروس ضبط کرلی گئی ہے۔

درج ایف آئی آر کے مطابق مولانا شریف کی نگرانی میں مشتعل ہجوم نے مندر پر دھاوا بولا۔ ایف آئی آر میں سیکشن 295، 295 اے ، 392، 324، ،436، ، 353، اور انسداد دہشت گردی کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔ واقعہ کی تحقیقات کی ذمہ داری تحقیقاتی ونگ کے ایس پی ظاہر شاہ کے سپرد کی گئی تھی۔

ایف آئی آر میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ مندر کی سیکیورٹی کیلئے 13 پولیس اہل کاروں کو تعینات کیا گیا تھا، تاہم ہجوم کے سامنے یہ تعداد کم تھی۔ مشتعل ہجوم بغیر کسی رکاؤٹ کے مندر میں داخل ہوا۔

برطرف اہلکاروں میں سابقہ ایس ایچ او رحمت اللہ ایک اے ایس آئی ہیڈ کانسٹیبل سمیت دیگر 15 سپاہی شامل ہیں جبکہ جن 54 پولیس اہلکاروں کی ایک سالہ سروس ضبط کی گئی ان میں سب انسپکٹر، اے ایس آئی ہیڈ کانسٹیبل اور سپاہی شامل ہیں۔

قائمقام ڈی پی او ظاہر شاہ نے مزکورہ اہلکاروں کی برطرفی اور تنزلی کی تصدیق کی اور کہا کہ غفلت اور لاپرواہی کے مرتکب اہلکاروں کی فورس میں کوئی جگہ نہیں۔ واضح رہے کہ سابقہ ڈی ایس پی بانڈہ بھی مزکورہ واقعہ میں معطل ہے اور ان کیخلاف بھی انکوائری جاری ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ سال دسمبر 2020 میں خیبر پختونخوا کے ضلع کرک کی تحصیل بانڈہ داؤد شاہ کے علاقے ٹیری میں مشتعل مظاہرین نے ہندوؤں کے مقدس مقام میں ایک سمادھی کی توسیع کے خلاف ہلہ بول کر مندر کی توسیع کو روک دیا تھا۔ اس موقع پر مظاہرین نے مندر میں توڑ پھوڑ بھی کی تھی۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.

57