صرف وقتی طور پر حجاب پہننا درست نہیں تھا ۔۔ اقرار الحسن کا کرن ناز کے حجاب پہننے پر تنقید

image

گزشتہ چند دنوں سے پاکستان میں حجاب کا موضوع ہر جانب زیر بحث ہے جس کے بارے میں ہر فرد اپنی مختلف رائے پیش کرتا دکھائی دیتا ہے۔

حال ہی میں معروف ٹی وی اینکر کرن ناز نے اپنے پروگرام کے دوران حجاب زیب تن کر لیا تھا کیونکہ ان کا موضوع بھی حجاب سے متعلق ہی تھا۔

سوشل میڈیا پر کرن ناز کے حجاب کرنے کی ویڈیو تیزی سے وائرل ہوئی جس کے بعد انہیں صارفین نے بھرپور سراہا اور تاحال سراہا جا رہا ہے۔ دراصل کرن ناز نے ڈاکٹر پرویز ہوڈبوائے کے لڑکیوں کے حجاب کرنے پر ابنارمل قرار دینے کے متنازعہ بیان پر جواب دیا تھا۔

اب حجاب سے متعلق معروف اینکر پرسن اقرار الحسن نے اپنے یوٹیوب چینل پر ایک ویڈیو پوسٹ کی ہے جس میں انہوں حجاب پر بات کی ہے۔

اقرار الحسن نے اپنی ویڈیو کے آغاز میں سب سے پہلے ڈاکٹر پرویز ہوڈبوائے اور اینکر کرن ناز کے مابین ہونے والی صورتحال پر روشنی ڈالی بعد ازاں انہوں نے کہا کہ کرن ناز کے بیان پر لوگوں کو نے تحسین بھی کی اور تنقید بھی۔

اقرار کا کہنا تھا کہ میرا نقطہء نظر اس حوالےسے بہت سادہ ہے اور وہ یہ کہ ہمیں کسی کو لے کر اندازہ اور فیصلہ نہیں لینا چاہیئے۔انہوں نے کہا کہ نہ تو کسی بغیر پردے والی خاتون اور پردہ کرنے والی خاتون کو بد کردار کہنا چاہیے۔

انہوں نے کہ کرن ناز صاحبہ نے بالکل خلوص نیت کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا۔ انہوں نے کہا کہ کرن ناز ان خواتین کے ساتھ کھڑی ہوئی جو حجاب کے حق میں کھڑی ہیں جو حجاب کو درست مانتی ہیں۔

اقرار الحسن نے کہا کہ میری رائے اس حوالے سے یہ ہے کہ ایسے موضوعات بڑی سنجیدگی کا تقاضہ کرتے ہیں۔ اقرار الحسن نے کہا کہ مجھے اس پورے واقعے سے ایک غیر سنجیدگی کی بو آئی میں سمجھتا ہوں کہ ایسا نہیں ہونا چاہئے تھا۔

انہوں نے کرن ناز کے حوالے سے کہا میری بہن کو نقاب پہننے کی عادت نہیں تھی کیونکہ وہ پروگرام کے دوران کافی بے سکونی محسوس کر رہی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ کرن ناز کی جانب سے وقتی طور پر حجاب پہننے کے حق میں اظہار یکجہتی کیا گیا اگر آپ سمجھتے ہیں کہ وہ عمل درست ہے تو آپ اسی عمل کو ہمیشہ کے لیے اپنا لیں۔

معروف اینکر پرسن نے آگے مزید کہا کہ حجاب کرنے والی خواتین ہر شعبے میں آگے رہی ہیں۔


WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
پاکستان کی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.