ویکسین کی امپورٹ بیرونی فنڈنگ سے ہورہی ہے، مشیر خزانہ

image

مشیر خزانہ شوکت ترین نے کہا ہے کہ ویکسین کی امپورٹ بیرونی فنڈنگ سے ہورہی ہے۔

مشیر خزانہ شوکت ترین نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ تین بڑی خبریں آئیں جس کی وجہ سے مارکیٹ متاثر ہوئی، پہلی خبر یہ تھی کہ مہنگائی نومبر میں 11.5بڑھی، دوسری خبر یہ تھی کہ برآمدات 7.7ارب ڈالر رہیں اور تیسری خبر اسٹیٹ بینک کی مانیٹری پالیسی میں ڈسکاؤنٹ ریٹ 8.75 تک پہنچنے سے متعلق تھی۔

مشیر خزانہ کا کہنا تھا کہ حکومت نے ٹریژری بل 10.75 فیصد پر اٹھائے ہیں، مہنگائی درآمدی اشیاء کی وجہ سے ہے، جبکہ 4 چیزوں کی درآمد میں اضافہ ہوا جس کی وجہ سے امپورٹ بل بڑھا ہے۔

انکا کہنا تھا کہ پیٹرول، کوئلہ کی قیمتوں میں کمی آئی خوردنی تیل کی قیمتوں میں کمی نہیں آئی، عالمی منڈی میں قیمتوں میں کمی کے ساتھ پاکستان میں بھی کمی آئے گی۔

شوکت ترین نے مزید کہا کہ ویکسین کی امپورٹ بیرونی فنڈنگ سے ہورہی ہے، انڈیا کا تجارتی خسارہ بھی دگنا ہوا ہے جبکہ دنیا میں 72 فیصد پیٹرول کی قیمت میں اضافہ ہوا ہے۔

دوسری جانب مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد نے پریس کانفرنس میں کہا کہ انرجی اور خام مال کی درآمد میں اضافہ ہوا، خام مال میں اضافہ اچھی بات ہے جس سے صنعتیں چلتی ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ گھبرانے کی کوئی بات نہیں ہے، پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی آئیگی۔

عبدالرزاق داؤد نے بھی اس بات کی تصدیق کی کہ ویکسین کی درآمد عالمی بینک اور اے ڈی بی کی فنڈنگ سے ہورہی ہے، نومبر میں برآمدات 2.9 ارب ڈالر کی تاریخی سطح پر آئیں، اگلے ماہ دسمبر میں 3 ارب ڈالر کی برآمدات ہوجائیں گی۔

Square Adsence 300X250


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.