خلاء میں جا کر فلمیں بنانے کی تیاریاں

image

خلاء میں موجود بین الاقوامی اسپیس اسٹیشن میں ایک مستقل فلم اسٹوڈیو اور اسپورٹس ایرینا اس دہائی کی وسط تک نصب کرنے کا منصوبہ بنا لیا گیا۔

لندن کی مقامی اسپیس انٹرٹینمنٹ انٹرپرائز نے 2024 میں انٹرنیشنل اسپیس اسٹیشن کے لیے فلم، ٹی وی، اسپورٹس اور انٹرٹینمنٹ براڈکاسٹ موڈیول کے منصوبے کے متعلق آگاہ کیا ہے۔

ایکسیم اسپیس کی جانب سے بنایا جانے والے موڈیول کی لانچنگ اور اسٹیشن سے جڑنا 2024 میں شیڈول ہے۔

کمپنی اسٹیشن کے لیے اپنے سیاحتی اور تحقیقی موڈیول پر کام کر رہی ہے۔

اسپیس انٹرٹینمنٹ انٹرپرائز کے خلائی انٹرٹینمنٹ کا جواز اس لیے بھی موجود ہے کہ کمپنی نے مشہور ہالی ووڈ اداکارہ ٹام کروز کے ساتھ فلم بنانے کا دعویٰ کیا ہے کو اسٹیشن کے اس حصے میں فلمائی جائے گی۔

SEE-1 کے نام سے جانا جانے والا یہ نیا انٹرٹینمنٹ سینٹر ایکسیم موڈیول سے جڑے گا، جو بالآخر بین الاقوامی خلائی اسٹیشن سے علیحدہ ہو جائے گا اور اپنا اسپیس اسٹیشن تشکیل دے دے گا۔

گول شکل والے اس موڈیول پر لگنے  والی لاگت کے متعلق فی الحال کچھ بھی نہیں بتایا گیا ہے لیکن 20 فٹ قطر والےاس موڈیول کا فلم اور ٹی وی بنانے کے لیے تھرڈ پارٹیز کے لیے کھولا جانا متوقع ہے۔

ناسا نے اسٹیشن کے لیے 2030 تک فنڈنگ جاری رکھنے کا عہد کیا ہے اور روس نے نئی لیبارٹری موڈیول کے لانچ کا عزم ظاہر کیا ہے۔

اس کے بعد خیال کیا جارہا ہے کہ زمین کے گرد گھومنے والے متعدد کمرشل اسٹیشنز ہوں گے جن میں سے ایک ایکسیم اسپیس کا ہوگا جو SEE-1 میں شامل ہو جائے گا۔

اگر یہ موڈیول لانچ ہو جاتا ہے تو یہ دنیا کا پہلا کانٹینٹ اور انیٹرٹینمنٹ اسٹوڈیو اور کثیر المقاصد ایرینا ہوگا جو اسپیس سے چلایا جائے گا۔

Square Adsence 300X250


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
سائنس اور ٹیکنالوجی
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.