زمانے کا بدلاؤ

(Abeer Fatima, Wah Cantt)

کسی کا دکھ ۔۔۔ درد ۔۔ اور تکلیف ۔۔ اس وقت تک محسوس نہی کیا جا سکتا جب تک خود پر نا گزرے یا خود کو اس شخص کی جگہ پر رکھ کر نہ سوچا جاے۔۔ آج کے دور میں ہم احساسات سے اس قدر عاری ہو چکے ہیں کہ کسی کا دکھ ۔۔ درد سمجھنا تو دور ھم محسوس کرنے کی زحمت بھی گوارا نہی کرتے۔۔ کریں بھی کیوں؟؟ جس کے ساتھ ھونا تھا ھوگیا۔۔ ھم اپنا وقت کیوں برباد کریں؟

کبھی محسوس کیا ہے اپنی زرا سی تکلیف بھی لوگوں کو بتائی جاتی ہے ۔۔ تاکہ ہمدردی کے جتنے لفظ ان کے پاس ہیں وہ ھم پر نچھاور کیے جایں اور ہمیں اپنی اہمیت کا اندازہ ہو۔۔ اور جب کوی شخص اپنی تکلیف آپ کو بتا ہی نا سکے تو آپ کیوںنکر محسوس کریں گے کہ اس پر کیا گزری؟ اور پھر یہ ضرورت ہی نہی رہتی کہ اپنے الفاظ ضائع کیے جا ئیں۔۔

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Abeer Fatima
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
10 Jan, 2018 Views: 1399

Comments

آپ کی رائے
کچھ لوگ اپنے درد کو باٹنا ہی نہیں چاہتے ہیں تب ہی یہ کہنا کہ کوئی سمجھ نہیں سکتا ہے غلط ہے، انسان خدا نہیں ہو سکتا ہے کہ بن بتائے کسی کا درد محسوس کیا جا سکے، ہر درد چہرے سے پڑھنا آسان نہیں ہوتا ہے کہ آج سب اپنے چہرے کو چھپا کر رکھتے ہیں کہ احساسات پڑھے نہ جا سکیں۔
By: Zulfiqar Ali Bukhari, Rawalpindi on May, 26 2018
Reply Reply
0 Like