ریلی اگر واقعی عورتوں کے حق میں ہوتی تو----

(Muhammad Shoaib Tanoli, )

ریلی اگر واقعی عورتوں کے حق میں ہوتی تو اس میں آویزاں کئے گئے پلے کارڈ جس پر لکھا تھا( میرا جسم میری مرضی) ( میں آزاد ہوں) کی بجائے ان پلے کارڈز پر درج ذیل نعرے تحریر ہوتے
1."مُجھے وراثت میں حصہ دو "
2. "تعلیم میرا حق ہے"
3. "گھر کے کاموں میں عورتوں کا ہاتھ بٹانا حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلّم کی سُنّت ہے. "
4. "بہترین مُسلمان وہ ہوتا ہے جو عورتوں کیساتھ اچھائی سے پیش آتا ہے. "
5." مومن مردو، اپنی آنکھیں نیچی رکھو. "
6. "عورت نہ صرف مرد کی بلکہ ریاست کی بھی ذمّہ داری ہے. "
7. "با عزت روزگار ہر عورت کا بُنیادی حق ہے. "
8."ماں کے قدموں تلے جنّت ہے. "
9. "بیٹیوں کو اچھی تعلیم اور تربیت دینے والا مرد جنّت میں حضور صلی اللہ علیہ وسلّم کا ساتھی ہے. "
10. "قیامت کے دِن تُم سے عورتوں کے حقوق بارے پوچھ گچھ ہوگی. "
11. "بیٹیاں اللہ کی رحمت ہیں. "
12۔ ہمارا احترام سوسائٹی پر فرض ہے
13۔لڑکیوں کی اچھی تربیت جنت کی ضمانت ہے۔
14۔ ہم مائیں، بہنیں، بیٹیاں، قوموں کی عزت ہم سے ہے
15۔ ہم شو کیس میں رکھے کھلونے یا مارکیٹ میں بکنے والی کوئی چیز یا ٹی وی پر چلنے والا اشتہار نہیں بلکہ اک قابل عزت زندہ جیتی جاگتی حقیقت ہیں,
کل یہ جو سول سوسائٹی سڑکوں پر تھی انہی کے گھروں سے یہ خبریں نکلتی ہیں کہ کام والی بچی کے ساتھ یہ ظلم ہو، استری لگا دی، بازو توڑ دیے،
جو حقوق ہیں آپ کو ملنے چاہئیں لیکن اپنی گھٹیا لبرل ازم دکھانے کیلئے چھوٹے شہروں اور دیہات کی عورتوں کے کندھوں پر بندوق نہ رکھیں...

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 235 Print Article Print
About the Author: Muhammad Shoaib Tanoli

Read More Articles by Muhammad Shoaib Tanoli: 67 Articles with 76834 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language: