بھارت پر اقتصادی پابندیاں مگر کب ؟مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو

(Zain ul Abadeen, )

اب تو ہے آزادیہ دنیا۔۔۔
پھرمیں کیوں آزاد نہیں؟؟؟
مقبوضہ وادی میں آج ۱۱۳ء ویں روز بھی کرفیوہے ۔پوری وادی قحط سالی میں ڈوبی پڑی ہے۔ دودھ ، فوڈ، گوشت ،اور میڈیسن ،سمیت ضروریات زندگی کی تمام اشیاء کا شدید بحرن چل رہا ہے۔ جبکہ سیبوں کے باغات پکے کھڑے ہیں۔، مگر کوئی توڑنے والا نہیں کیونکہ کشمیریوں پر دنیا کی سب سے ظالم ہندوستانی فوج مسلط ہے ۔بھارتی فوج بزدلی میں ہمیشہ پہلے نمبر پر آتی ہے۔ جو کشمیری کی نہتی عورتوں سے سب سے زیادہ خوفزدہ اور ڈرتی بھی ہے۔ ابتک تقریبا ۱۳ ہزارنوجوان لڑکیوں کو اٹھایا گیا ہے۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے باولا کتا مودی ہٹلرپرکس قدر ذہنی طور پر خوف طاری ہے۔ مودی نے اپنے آقاؤں سے ملکر ۵ اگست سے مقبوضہ کشمیر میں جوگندا کھیل کھیلنا شروع کیاہے۔ یہ اب اس کے گلے کی وہ ہدی بن چکی ہے۔ جو نہ نگلی جا سکتی ہے نہ اگلی جا سکتی ہے۔ مودی اکھنڈ بھارت بناتے بناتے ہندوستان کو اس بند گلی میں لے گیا ہے۔ یہاں چاروں طرف سمندر ہے جس میں سونامی کا وہ طوفان برپا ہے۔ جو درمیان میں موجودجزیرے پر وہ تباہی مچائے گا،جس سے ہندوستان میں ۳۵ء نئے پاکستان وجود میں آئیں گے انشاء اﷲ۔ تقربیا ۱۰ جمعے گزر چکے ہیں۔جب کشمیری جمعہ ادا نہیں کرسکے ۔کرفیو کے باوجود کشمیری پلوامہ ، اسلام آباد،اور سرینگر سمت مختلف علاقوں میں روزانہ احتجاج کرتے ہیں۔جن میں بڑی تعداد خواتین کی ہے ۔اس کے علاوہ بچے ،نوجوان اور بزرگ بھی شامل ہیں۔وہاں کے نوجوان تو ہمیشہ تحریک آزادی کا حصہ ہوتے ہیں،جس ملک میں آزادی کی تحریک چل رہی ہو۔میں یہاں ہندوستان اور اسکے چمچوں پر واضع کر دینا چاہتا ہوں ،جس تحریک آزادی میں بچے ، بزوگ ،اور صفت نازک شامل ہوں اسے دنیا کی کوئی طاقت نہیں دبا سکتی ۔چاہے سامنے سپرپاور ہی کیوں نا ہووہ بھی ایسی تحریکوں کے سامنے گھٹنے ٹیک دے گی۔ اور خاص کر مسلمانوں کی تاریخی آزادی کودبانا عالم کفر کی بس کی بات نہیں ہے۔ کیونکہ ہماری آزادی کی تحریکوں لاالہ الا اﷲ سے شروع ہو کر الحمداﷲ پر ختم ہوتی ہیں۔اگر کسی دشمن کو کوئی وہم ہے، تو وہ اسلامی تحریک کی اسٹڈی ضرور کرے تکہ اس کادماغ لائن پر ر ہے۔ جتنی تیزی سے آج کل مودی کا برین ہٹلر کی لائن پربھاگ رہا ہے، یہ ایک دن پورے ہندوستان کو پٹری سے اترے گا۔ یہ مودی الو کی سوچ ہے، کہ ۹۰ لاکھ کشمیریوں کو۹ لاکھ ہندوستانی فوج تاحیات غلام بنا کے رکھ سکتی ہے۔ آج کے ماڈرن دور میں یہاں نیوز کا سب سے طاقتورذریعہ سوشل میڈیاہے، جدھر خبر لگاتے ہی چند سیکنڈمیں پوری دنیا تک باآسانی پہنچ جاتی ہے۔ اسی لیے مقبوضہ کشمیر میں مودی نے مواصلات کا سارانظام معطل کر رکھا ہے۔ مگر اس کے باوجود کشمیری نوجوان کچھ نہ کچھ خبریں عالمی پریس تک پہنچا رہے ہیں، جو قابل تحسین ہے۔ تکہ دنیا ہندوستان کی ریاستی دہشت گردی سے باخبر رہے۔ مسئلہ کشمیر حل کیا بغیر جنوبی ایشیا میں امن کا خواب کبھی شرمندہ تعبیر نہیں ہو سکے گا۔یہ حقیقت ہے کہ ایک دن دنیا کو بھارت پرمسئلہ کشمیر حل کرانے کیلئے پابندیاں لگانی پڑے گی۔ اور پابندیاں اس شرط کے ساتھ لگانی چاہیے ،جب تک بھارت پاکستان کے ساتھ مقبوضہ کشمیر میں ریفرینڈم کرانے کے معاہدے پر دستخط نہیں کرتا اس پر اقتصادی پابندیاں برقراررہیں گی۔ اب پتا چلے گا انصاف کے ٹھیکیدار کتنا انصاف کرتے ہیں۔ کیا دنیا ہندوستان پر اقتصادی پابندیاں لگائے گی ؟اگر لگائے گی تو کب لگائے گی؟کشمیری تو ۷۰ سال سے بھارتی ظلم وبربریت کا شکار ہیں ۔یہی وہ لمحہ ہے۔جب دنیا نے یہ فیصلہ کرنا ہے ،وہ حق کے ساتھ ہے ،یا باطل کے ساتھ فتح تو ہمیشہ حق کی ہوتی ہے۔ اگر حق کے ساتھ کھڑا ہونے کا یہ قیمتی پل دنیا نے گوا ،دیا پھر ایسی آگ لگے گی سب ہاتھ ملتے رہ جائیں گے۔ یہ بہترین وقت ہے، بھارت پر اقتصادی پابندیاں لگانے کااور دنیا میں کتنی انسانیت باقی ہے؟ مسئلہ کشمیر کی صورت میں دنیا کیلئے امتحان ہے۔ یہی سب کچھ جو بھارت کر رہا ہے ،کسی مسلم ملک نے کیا ہوتا توابتک اقتصادی پابندیاں لگا چکی ہوتیں۔ جیسے امریکی صدرنے اقتصادی پابندیوں کی دھمکی ترکی کو دی توکیا امریکہ سمیت باقی دنیا ،بھارت پر اقتصادی پابندیاں لگائے گی۔ ۵․۱ء ارب مسلمان اس کے منتظر ہیں ۔
 

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 156 Print Article Print
About the Author: Zain ul Abadeen

Read More Articles by Zain ul Abadeen: 7 Articles with 1487 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language: