ﷲ تعالیٰ کے حضور توبہ،استغفارکی اہمیت

(Ilyas Mohammad Hussain, )

ایک بار ایک شخص حضرت حسن بصری ؒکے پاس آیا اور ان سے شکایت کی آسمان ہم پر بارش نہیں برساتا.قحط سالی کا خدشہ ہے ۔انہوں نے جواب دیا *" اﷲ کی بخشش طلب کرو. (یعنی استغفر اﷲ کیا کرو) ۔پھر ایک اور شخص ان کے پاس آیا اور عرض کی *"میں آپ سے غربت کی شکایت کرتا ہوں میرے حق میں دعا فرمائیں حضرت حسن بصری ؒ نے جواباً کہا*" اﷲ کی بخشش طلب کرو.. (یعنی استغفر اﷲ کیا کرو) اسی اثناء میں ایک اور شخص ان کے پاس آیا اورانتہائی لاچاری سے کہا جناب لگتا ہے میری بیوی بانجھ ہے دس سال سے میرے اولادنہیں ہوئی ا نہوں نے اسے بھی جواب دیا *" اﷲ کی بخشش طلب کرو (یعنی استغفر اﷲ کیا کرو) وہاں پر جو لوگ موجود تھے انہوں نے حیرانگی سے حضرت امام حسن بصری سے پوچھا مختلف لوگ آپ کے پاس اپنے مسائل لے کر آئے ہرشخص کا مسئلہ دوسرے سے جدا تھا لیکن آپ نے سب کو صرف اﷲ سے بخشش طلب کرنے کی اسے ہدایت کی؟ آخرکیوں؟ یہ سن کر حضرت امام حسن بصری مسکرائے پھر کہا کیا تم نے ارشاد ِ باری تعالیٰ نہیں پڑھا؟ اپنے رب سے بخشش طلب کرو. بے شک وہ بڑا بخشنے والا ہے. وہ کثرت سے تم پر بارش برسائے گا. اور تمہیں خوب پے در پے مال و اولاد میں ترقی دے گا؛اور تمہیں باغات عطا فرمائے گا اور تمھارے لیے نہریں نکال دے گا(نوح (71): 10-12) ایک اور مقام پر یہ بھی وعدہ کیا گیاہے کہ ۔۔اور اﷲ ان کو عذاب نہ دے گا اس حالت میں کہ وہ استغفار بھی کرتے ہوں(الانفال (8): 33) استغفر اﷲ کرنا ہر مسئلہ کا حل ہے اس لئے میں تلقین کرتاہوں کہ تم کبھی استغفار نہ چھوڑنا! کیونکہ رسول اﷲ ﷺ نے فرمایا کہ اگر کوئی مسلسل بخشش طلب کرے, تو اﷲ اسے ہر تکلیف ،بے چینی سے آرام دے دیتا ہے، اور وہاں سے اسے فراہم کرے گا جہاں سے اس نے گمان بھی نہ کیا ہو۔آج جو ہمیں مسائل درپیش ہیں، کرونا وائرس نامی وباء نے پوری دنیا میں خوف وہراس پھیلارکھاہے امیر غریب چھوٹابڑا کوئی اس سے محفوظ نہیں اس لئے آئیے یہ دعا سکون سے پڑھیں اور دل میں آمین کہیں اور اسے دوسروں تک پہنچائیں ہو سکتا ہے کہ دوسرے لوگوں کی آمین سے اپنی دعا قبول ہو جائے(آمین) اے اﷲ رب العزت، اے ساری کائنات کے شہنشاہ،اے ساری مخلوق کے پالنے والے، اے زندگی موت کا فیصلہ کرنیوالے،اے آسمانوں اور زمینوں کے مالک،اے پہاڑوں اور سمندروں کے مالک،اے انسانوں اور تمام مخلوقات کے معبود،اے عرشِ اعظم کے مالک، اے فرشتوں کے معبود،اے عزت کے مالک اور ذلت سے بچانے والے ،اے بیماروں کو شِفا دینے والے،اے بادشاہوں کے بادشاہ،اے اﷲ ہم تیرے گناہگار بندے ہیں،تیرے خطاکار بندے ہیں،ہمارے گناہوں کو معاف فرما ،ہماری خطاؤں کو معاف فرما ،اے اﷲ ہم اپنے تمام صغیرہ کبیرہ سبھی گناہوں،خطاؤں اور نافرمانیوں کی معافی مانگتے ہیں، اے اﷲ رب العزت ہم اپنے گناہوں سے توبہ کرتے ہیں ہماری توبہ قبول فرما ۔۔اے اﷲ ہم گناہگار ہیں،سیاہ کار ہیں،بدکار ہیں تیرے احکام کے نافرمان ہیں،ناشْکرے ہیں لیکن میرے معبود تیرے نام لیوا بندے ہیں، تیری توحید کی گواہی دیتے ہیں،تیرے سوا کوئی عبادت کے لائق نہیں ہے،تیرے سوا کوئی بندگی کے لائق نہیں ہے،تیرے سوا کوئی تعریف کے لائق نہیں ہے،ہمارے معبود ہمارے گناہ تیری رحمت سے بڑے نہیں ہیں،تو اپنی رحمت سے ہمارے گناہ معاف کر دے ،اے اﷲ پاک ہمیں گمراہی کے راستے سے ہٹا کر صراط المستقیم کے راستے پہ چلنے والا بنا دے،اے اﷲ ایسی نماز پڑھنے کی توفیق عطا کر جس نماز سے تو راضی ہو جائے ،زندگی میں ایسے نیک اعمال کرنے کی توفیق عطا کر جن اعمالوں سے تو ہم سے خوش ہو جائے،ہمیں ایسی زندگی گزارنے کی توفیق عطا کر جس زندگی سے تو راضی ہو جائے،ایمان پہ زندہ رکھ اور ایمان پہ ہی موت عطا کر،اے اﷲ ہمیں تیرے احکام کی فرمابرداری کرنے والا بنا،اور تیرے پیارے حبیب جنابِ محمد رسول اﷲ(صلی ﷲ ھو علیہ وآلہ وسلم) کے نیک اور پاکیزہ آداب کو اپنانے والا بنا دے،اے اﷲ ہماری پریشانیوں کو دور کر دے،اے اﷲ جو بیمار ہیں اْنہیں شفاء کاملہ عطا فرما ،اے اﷲ جو قرض کے بوجھ تلے دبے ہوئے ہیں اْنکا قرض جلد سے جلد ادا کرنے کی توفیق عطافرما،اے رب العزت ہماری شیطان مردود سے حفاظت فرما،اے اﷲ اسلام کے دشمنوں کو ہدایت عطا فرما،اے اﷲ حلال رزق کمانے کی توفیق عطا فرما،اے پروردگارِ عالم ہمیں تْجھ سے مانگنا نہیں آتا لیکن تجھے دینا آتا ہے تو ہر چیز پہ قادر ہے،اے اﷲ جو مانگا وہ بھی عطا فرما اور جو مانگنے سے رِہ گیا وہ بھی عنائت فرما، اﷲ آپ نے نمرود کے لیے مچھر بھیجا تھا۔ نمرود نے آپ کا انکار کیا تھا، لیکن یا اﷲ، ہم تو آپ کیاقراری ہیں آپ نے دنیا میں مچھر سے بھی سو گنا کم جراثیم بھیجا ہے جو نظربھی نہیں آتا یا کریم ، بیماریاں پہلے بھی تھیں لیکن آپ تو بیماری اس لیے بھیجتے ہیں کہ مومنین کے گناہ معاف ہو جائیں، لیکن اے اﷲ، یہ کیسی بیماری ہے جس نے ہمیں آپ کے گھر میں داخل ہونے سے روک دیا۔ کیا تم ہم سے اتنا ناراض ہوگیاہے اﷲ کیا ہم اس قابل نہیں کہ آپ کے گھر آسکیں؟ ضرور ہم سے غلطیاں ہوئیں۔۔ ہم آپ سے دعا کرتے ہیں کہ آپ ہمیں معاف فرما دیں۔، اﷲ اتنی بڑی سزا ہمیں نہ دیجیے ہم گناہوں کے پہاڑ اور سمندر لئے آپ کے گھر آتے تھے، آپ معاف کردیتے تھے۔۔ اﷲ آپ نے گھر کا راستہ ہی بند کر دیا۔ یا رب، پھر ہم کس در پر جائیں ؟ ہمیں یوں نہ دھتکارئیے۔ نبی پاک ﷺ کے صدقے ان کے نعلین مبارک کے طفیل ﷲ اس امت کو معاف کر دیجیے،کیا اس امت میں ایک بھی ایسا نہیں جس کی وجہ سے آپ دعا قبول کر لیں؟ اﷲ جی آپ اپنے گھر کے دروازے کھول دیں، ہم آپ کے در پر آنا چاہتے ہیں، ہم سے بیماری کا خوف ہٹا دیجیے۔

اﷲ پاک ہم نے سود شروع کر کے آپ کے خلاف اعلان جنگ کر رکھا ہے ،اس معاملے میں ہم بے بس ہیں!! ہمارے حکمران کو سودختم کرنے کی توفیق اور صلاحیت عطافرما۔اے اﷲ ہمیں اپنی طرف لوٹا دیجیے، اﷲ ہماری توبہ قبول کر لیجیے ۔اے قادر ِ مطلق اﷲ ہمارا حشر ان مشرکین جیسا نہ کیجیے جن پر کعبہ کے دروازے بند ہیں۔ اے باری تعالیٰ آپ انفرادی گناہوں کو معاف کر دیں، آج ہمارے اجتماعی گناہوں کو بھی معاف کر دیجئے ، اﷲ معاف کر دیجئے،اﷲ معاف کر دیجیے،اﷲ معاف کر دیجئے، کیونکہ معاف کرنا ہی آپ کی شان ہے ۔ہمارے ہونٹ، دل و دماغ استغفر اﷲ۔ استغفر اﷲ ۔ استغفر اﷲ کا وردکررہے ہیں اے رب کریم، رحم کیجئے۔ ہم میں امت کو اکٹھا کرنے والا کوئی نہیں، اس وقت کوئی امت کو استغفار کے راستے پر لانے والا نہیں۔ یااﷲ ، ہم اجتماعی معافی کی درخواست کرتے ہیں ، آپ اس کو قبول کر لیجیے۔۔ ہم سب اس دعا کو پڑھنے والے قومی مجرم کے طور پر، امت کے مجرم کے طور پر معافی مانگتے ہیں۔ یااﷲ، معاف کر دیں یا کریم، معاف کر دیجئے ،یا رحیم، معاف کر دیجئے آمین آمین آمین * یا رب العزت، یہ دکھاوے کی دعا نہیں یہ امت کو متوجہ کرنے کیلئے دعا ہے۔ آپ اس امت کو توبہ کی توفیق دے ہماری دعا اپنے رحم سے اپنے کرم سے قبول فرما اور ہماری تمام پریشانیوں،تکلیفوں اور بیماریوں کو دور فرما اور صحت تندرستی عطا اے میرے پروردگار اپنے پیارے محبوب حضرت محمدﷺ کے صدقے پوری دْنیا میں جتنے مسلمان وفات پا چْکے ہیں اْن کی مغفرت فرما، اْنہیں قبر کے عذاب سے بچا۔ جو بیمار ہیں یا پریشان ہیں تْو اْن کو اپنے کرم سے معاف فرما اور اْن کی بیماری اور پریشانیوں کو دْور فرما مہنگائی،بیروزگاری اور غربت کا خاتمہ فرما۔ آمین یارب العمین ۔
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Ilyas Mohammad Hussain

Read More Articles by Ilyas Mohammad Hussain: 321 Articles with 118270 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
13 Apr, 2020 Views: 411

Comments

آپ کی رائے

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ