سورج گرہن کے انسانی زندگی پر اثرات

(Sarwar Siddiqui, Lahore)

اس کی کوئی سائنسی توجیح تو نہیں پیش کی جاسکتی لیکن چاند گرہن اور سورج گرہن کے انسانی زندگی پر بڑے اثرات مرتب ہوتے ہیں اس بارے ماہرین ِ فلکیات بھی اظہارِ خیال کرتے رہتے ہیں کچھ کا کہناہے کہ جس طرح چاندکی چودھویں رات کو سمندرمیں ایک جواربھاٹا بننے سے موجوں میں طلاطم اور بلاکی سرکشی آجاتی ہے اسی طرح چاند گرہن اور سورج گرہن کے زمین پرجواثرات مرتب ہوتے ہیں اس سے انسانوں کا متاثرہونا یقینی ہے 21جون کوپاکستان میں ایک تاریخی سورج گرہن نمودارہوگا جو دن کو رات میں بدل دیگا 21 جون کو صبح 9 بجے سے دوپہر 1 بجے کے درمیان پاکستان میں تاریخی سورج گرہن متوقع ہے۔ پاکستان کے بیشتر علاقوں میں دن میں مغرب جیسا سماں ہو جائے گا۔ اس بار سورج گرہن 26 دسمبر 2019 والے کے مقابلے زیادہ گہرا ہوگا اس لئے خاص طور پر حاملہ خواتین کو اس کے اثرات سے بچنے کے لئے بڑی احتیاط کی ضرورت ہے چھوٹے بچوں کو والدین گھروں میں اپنے اپنے کمروں تک محدودکردیں تاکہ وہ جانے انجانے میں سورج کی طرف نہ دیکھیں کیونکہ بچوں میں تجسس زیادہ ہوتاہے اس لئے وہ سورج گرہن سے متاثرہوسکتے ہیں والدین کی ذرا سی احتیاط ان کے مستقبل کے لئے خوشگوارثابت ہوگی۔ماہرین کے حساب میں سب سے زیادہ سورج گرہن بلوچستان کے ساحلی علاقوں، شمالی سندھ اور جنوبی پنجاب میں دیکھا جا سکے گا جہاں 95-100 فیصد تک سورج کا حصہ چاند کے پیچھے چھپ جائے گا اور مغرب/رات جیسا سماں ہوگا۔ پاکستان کے باقی تمام علاقوں میں اس دوران سورج 75-90 فیصد چاند کے پیچھے ڈھک جائے گا اور 1999 والے گرہن کے بعد یہ سب سے طاقتور سورج گرہن ہوگا۔ماہرین ِفلکیات کا کہناہے کہ مکمل سورج گرہن یا 70 فیصد سے اوپر سورج گرہن کی وجہ سے درجہِ حرارت ایک دم کم ہو جاتا ہے جس سے طبیعت میں بے چینی سی محسوس ہوتی ہے دن کو رات کا گمان ہونے لگتاہے سورج گرہن کے دوران سورج کی طرف بغیر کسی فلٹر والے چشمے کے بغیر دیکھنے سے انسان ہمیشہ کے لئے اندھا ہو سکتا ہے۔ اسلئے بہتر یہی ہے کہ اس دوران سورج کی طرف نہ دیکھیں۔ عام سن گلاسز/ Glasses Sunکا استمعال سورج گرہن کے دوران سورج سے نکلنے والی ریڈی ایشن/تابکاری/Radiation سے آپکی آنکھوں کو محفوظ نہیں رکھے گا! غلطی سے بھی ایسا نہ کریں کہ سن گلاسز پہن کر سورج گرہن دیکھنے لگ جائیں محض تجسس یا کسی سے شرط لگا کر یاشوق شوق میں سورج گرہن دیکھنے کا مطلب ہے کہ خدانخواستہ بصارت سے محروم ہوناہے۔ کچھ لوگوں کو شاید یہ نہیں معلوم کہ چاند سورج گرہن کب اور کیوں لگتا ہے سورج کا چاند گرہن اس وقت ہوتا ہے جب نیا چاند سورج اور زمین کے مابین حرکت کرتا ہے ، سورج کی کرنوں کو روکتا ہے اور زمین کے کچھ حصوں پر سایہ ڈالتا ہے۔ پورے سیارے کو لپیٹنے کے لئے چاند کا سایہ اتنا بڑا نہیں ہے ، لہذا سایہ ہمیشہ ایک مخصوص علاقے تک محدود ہوتا ہے ۔ چاند اور زمین مستقل حرکت میں رہتے ہیں کیونکہ چاند اور گرہن کے دوران یہ علاقہ تبدیل ہوتا ہے: زمین اپنے محور کے گرد مسلسل گھومتی ہے جبکہ وہ سورج کا چکر لگاتا ہے ، اور چاند زمین کا چکر لگاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ سورج گرہن ایک جگہ سے دوسری جگہ کا سفر کرتے نظر آتے ہیں چاند گرہن کی 4 مختلف اقسام ہیں۔ سورج کی ڈسک کا کتنا چاند گرہن ہے ، چاند گرہن کی شدت ، اس پر منحصر ہے کہ چاند کے سائے کا کون سا حصہ زمین پر آتا ہے جزوی شمسی چاند گرہن اس وقت ہوتا ہے جب چاند سورج کی ڈسک کو جزوی طور پر غیر واضح کردیتا ہے اور زمین پر صرف اس کے قلمبرا ڈالتا ہے۔
چاندی کا سورج گرہن اس وقت ہوتا ہے جب چاند کی ڈسک اتنی بڑی مقدار میں نہیں ہوتی کہ سورج کی پوری ڈسک کا احاطہ کرسکتی ہے ، اور سورج کے بیرونی کناروں آسمان پر آگ کی انگوٹی بننے کے لئے نظر آتے ہیں۔ جب چاند آپیجی کے قریب ہوتا ہے تو سورج کا ایک چودھری گرہن ہوتا ہے ، اور چاند کا اینٹومبرا زمین پر گرتا ہے۔ چاند سورج گرہن تب ہوتا ہے جب چاند مکمل طور پر سورج پر چھا جاتا ہے ، اور یہ تب ہی ہوسکتا ہے جب چاند زمین کے قریب ، چاند کے مدار کا نقطہ زمین کے قریب ہوتا ہے۔ آپ صرف سورج گرہن کو صرف اس صورت میں دیکھ سکتے ہیں جب آپ اس راستے پر ہوں جہاں چاند اپنے اندھیرے سائے ، امبرا کو ڈالتا ہے۔
ہائبرڈ شمسی چاند گرہن ، جسے کلائی کل گرہن بھی کہا جاتا ہے ، نایاب قسم کی ہیں۔ یہ اس وقت ہوتے ہیں جب چاند گرہن کے راستے کے ساتھ ہی سورج گرہن کو ایک کنڈیولر سے کل شمسی گرہن میں تبدیل کیا جاتا ہے ، اور / یا اس کے برعکس سورج گرہن بنیادی طور پر جزوی نظر آتے ہیں سورج گرہن صرف اور صرف زمین کے اس خطے میں ہی نظر آتے ہیں جہاں چاند کا سایہ پڑتا ہے ، اور آپ سائے کے راستے کے مرکز کے قریب ہوں گے ، جتنا بڑا چاند گرہن نظر آتا ہے۔ سورج گرہن کو عام طور پر اپنے اندھیرے ، یا زیادہ سے زیادہ ، نقطہ کے لئے نام دیا جاتا ہے۔ سورج گرہن کا تاریک ترین نقطہ صرف ایک چھوٹے سے علاقے سے دکھائی دیتا ہے۔ زیادہ تر مقامات اور بیشتر دورانیے کے لئے ، کل ، کونیولر اور ہائبرڈ گرہن جزوی شمسی گرہن کی طرح دکھائی دیتے ہیں۔ زمین کے گرد چاند کے راستے کا طیارہ لگ بھگ 5 of کے زاویہ پر زمین کے مدار طیارے کے قریب سورج یعنی چاند گرہن کی طرف مائل ہوتا ہے۔ چاند کے مداری راستے کا طیارہ گرہن سے ملنے والے نکات کو قمری نوڈس کہتے ہیں۔ سورج ، چاند اور زمین کی ایک کامل یا قریب قریب صف بندی اسی وقت ہوسکتی ہے جب چاند کے نوڈ کے قریب نیا چاند ہو۔ یہ صرف ان ادوار کے دوران ہوسکتا ہے جو 6 ماہ سے تھوڑا کم فاصلہ پر آسکتے ہیں ، اور آخری طور پر ، اوسطا 34.5 دن کے اندر۔ یہ صرف اس وقت کے دوران ہے ، جو چاند گرہن کے موسم کے نام سے بھی جانا جاتا ہے ، گرہن ہوسکتا ہے۔ جب چاند گرہن کے موسم میں پورا چاند ہوتا ہے تو ہمیں چاند گرہن نظر آتا ہے سورج گرہن کے دوران استغفاراﷲ کا وردکرتے رہیں علماء کرام کایہ بھی کہناہے کہ سورج گرہن کے دوران ایک مرتبہ ضرور سورۃ رحمن کی تلاوت کریں اور لاتعدادمرتبہ فبای ء الاء ربکماتکذبان وردکریں وضو بغیر وضو پڑھتے رہیں

نبی پاک ﷺ کیسنت اور قرآن کے مطابق مسلمان سورج گرہن کے دوران اﷲ پاک سے گناہوں کی توبہ کریں اور "نماز کسوف" ادا کریں، یہ وہ نماز ہوتی ہے جو ہمارے پیارے نبی پاک صلی اﷲ علیہِ وسلم سورج گرہن کے وقت پڑھتے تھے۔
 

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 101 Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Sarwar Siddiqui

Read More Articles by Sarwar Siddiqui: 182 Articles with 45303 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Comments

آپ کی رائے
Language: