دو درہم ۔۔۔۔۔۔

(Safder Hydri, )

افسانچہ۔۔۔
آپ نے اپنا گھوڑا ایک چھوٹی سی مسجد کے دروازے پر روکا اور ساتھ ہی کھڑے شخص کے سپرد اپنا گھوڑا کیا اور دو رکعت نماز ادا کرنے کے لیے مسجد میں داخل ہوئے -
نماز پڑھ کر واپس آئے تو گھوڑا موجود تھا مگر ذین غائب -
بازار میں نئی ذین خریدنے کے لیے چل دیے - وہاں کسی دکان پر اپنی ذین دیکھی تو خریدنے کے لیے رک گئے - قیمت پوچھی تو دکان دار بولا
" ابھی ابھی ایک شخص دو درہم کی بیچ کر گیا ہے - آپ بھی دو درہم ہی دے دیں "
مولا علی ع دل میں سوچنے لگے کہ جب میں نماز پڑھنے کا گیا تھا یہی سوچا تھا کہ واپسی پر دو درہم انعام دوں گا
اے حضرت انسان تو نے لیے تو وہی دو درہم پر حرام کر کے لیے ۔ ۔۔"
سچ ہے کسی کو وقت سے پہلے اور نصیب سے زیادہ نہیں ملتا - ۔

 

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 88 Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Safder Hydri

Read More Articles by Safder Hydri: 67 Articles with 14586 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Comments

آپ کی رائے
Language: