سچ تو یہ ہے (۳۵واں حصہ)

(Muhammad Siddiq Prihar, Layyah)

 منظر۲۴۵
مولوی صاحب اورکریم بخش جاچکے ہیں
بشیراحمد۔۔۔۔فیاض سے۔۔۔۔۔تیری امی مولوی صاحب کے لیے پکوان تیارکرارہی ہیں اس کوجاکربتادے وہ چلے گئے ہیں کل دن کے وقت آئیں گے
جاوید، بشیراحمد۔۔۔۔عبدالمجیدسے ہاتھ جوڑ کر۔۔۔۔۔دیکھ تیرے سامنے ہم ہاتھ جوڑے ہوئے ہیں اب اس کوجگانانہیں ہے اس کے پاس بلندآوازسے بولنابھی نہیں کوئی ایساشوربھی نہیں ہوناچاہیے جس سے اس کی نیندمیں خلل آئے
اس کے ساتھ ہی جاویداوربشیراحمداحمدبخش کوچارپائی سمیت اٹھالیتے ہیں
عبدالمجید۔۔۔۔۔یہ کیاکررہے ہو
جاوید۔۔۔۔اس کوگھرلے کرجارہے ہیں
عبدالمجید۔۔۔۔۔اتناوزن اٹھانے کی کیاضرورت ہے
بشیراحمد۔۔۔۔۔توکیااس کوگھرنہیں لے جانا
عبدالمجید۔۔۔۔لے جاناہے
بشیراحمد۔۔۔۔۔ہم اس کولے کرجارہے تھے توآپ نے ہی روک دیا
عبدالمجید۔۔۔۔اس کوجگادو یہ خودچل کرگھرمیں جائے ویسے بھی دوگھنٹے سے سورہاہے اتناسونابھی اچھانہیں ہوتا
جاوید۔۔۔۔بچے کی یہ حالت دیکھ کربھی آپ کوہماری باتوں کی سمجھ نہیں آئی؟
عبدالمجید۔۔۔۔میں توبس
بشیراحمد۔۔۔۔۔ابھی ہاتھ جوڑ کرتوکہاہے گھرمیں توتواسے سونے بھی نہیں د ے گا
جاوید۔۔۔۔۔بشیراحمدسے۔۔۔۔۔اس کومیں اپنے گھرلے جاتاہوں یاآپ لے جائیں
بشیراحمد۔۔۔۔۔میں بھی یہی چاہتاہوں یہ توواقعی اسے سونے نہیں د ے گا
جاوید۔۔۔۔میں لے جاتاہوں اس کے ساتھ ہی دونوں احمدبخش کوچارپائی پراٹھاکرچل پڑتے ہیں
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۴۶
اریبہ، فیاض اورسمیرا رات کے کھانے کے لیے تیاربیٹھے ہیں ۔ روٹیاں، سالن اوربرتن سمیراکے سامنے رکھے ہوئے ہیں
اریبہ۔۔۔۔فیاض سے۔۔۔۔تیرے ابو ابھی تک نہیں آئے پتہ کرکے آؤ
سمیرا۔۔۔۔چچاعبدالمجیدکے پاس ہوں گے اورکہاں ہوں گے
فیاض۔۔۔۔انتظارکرلیں تھوڑی دیرمیں آجائیں گے
سمیرا۔۔۔۔آپ کوپتہ توہے احمدبخش کی حالت کا ایسے حالات میں دیرہوجایاکرتی ہے
اسی دوران دروازے پردستک ہوتی ہے
فیاض۔۔۔۔۔لگتاہے ابوآگئے ہیں میں دروازہ کھولتاہوں یہ کہہ کروہ دروازے کی طرف چلاجاتاہے
اریبہ۔۔۔۔سمیراسے۔۔۔۔۔کل سے تووہ پکوان تیارکر جوتونے مقابلوں میں پکانے ہیں
سمیرا۔۔۔۔۔جی امی کل کیاپکاناہے
اریبہ۔۔۔۔تیرے ابوآگئے ہیں بعدمیں اس بارے بات کرتی ہوں
بشیراحمدچارپائی پربیٹھ جاتاہے سمیرااس کے آگے کھانارکھ دیتی ہے فیاض بشیراحمدکے ہاتھ دھلواتاہے
اریبہ۔۔۔۔اب کیسی حالت ہے احمدبخش کی
بشیراحمد۔۔۔۔ابھی تک وہ نیندمیں ہے
سمیرا۔۔۔۔اب کیاہوگا
بشیراحمد۔۔۔۔کل مولوی صاحب آئیں گے مل بیٹھ کرسوچیں گے اب کیاکرناچاہیے
اریبہ۔۔۔۔۔کہیں ایسانہ ہو آپ کابھائی غصہ میں آکر اس کوجگانہ دے
بشیراحمد۔۔۔۔۔نہیں جگائے گا
سمیرا۔۔۔۔ابویہ آپ کیسے کہہ سکتے ہیں آپ نے ان کوکہہ دیاہوگا کہ اسے جگانانہیں ہے
اریبہ۔۔۔۔اس نے پہلے کون سی بات مانی ہے جویہ مان لے گا
بشیراحمد۔۔۔۔احمدبخش بھائی جاویدکے گھرمیں ہے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۴۷
عبدالمجیدگھرمیں آتاہے توراشدہ چارپائی سے اترکرکھڑی ہوجاتی ہے اورپوچھتی ہے کہاں ہے میرابیٹا کیاوہ رات کے وقت باہرسورہاہے کہیں آپ نے میرے بیٹے کوگھرسے بھگاتونہیں دیا رات کے اندھیرے میں کہاں جائے گا میرابیٹا
عبدالمجید۔۔۔۔سانس تولینے دو آتے ہی سوالوں کی بوچھاڑ کردی ہے تونے
راشدہ۔۔۔۔۔میں اپنے بیٹے کی شکل دیکھنے کے لیے بیتاب ہوں آپ کوسانس لینے کی پڑی ہے
عبدالمجید۔۔۔۔بتاتاہوں پہلے کھاناتوکھالوں
راشدہ۔۔۔۔۔بچے بتارہے تھے کہ میرے بیٹے کورکشے پرلایاگیاہے وہ نیندکی حالت میں ہے آپ کوکہابھی تھا
عبدالمجید۔۔۔۔۔کیاکردیاہے میں نے
راشدہ۔۔۔۔۔یہ سب آپ کی وجہ سے ہواہے مولوی صاحب نے کیاکہاہے
عبدالمجید۔۔۔۔۔وہ کل دن کے وقت آئیں گے
راشدہ۔۔۔۔۔کل پتہ چل جائے گا یہ کس کی وجہ سے ہوا ہے آپ کی وجہ سے یاکسی اورکی وجہ سے
عبدالمجید۔۔۔۔۔اب کھانابھی دے دو کب تک سوال پہ سوال کرتی رہوگی
راشدہ۔۔۔۔۔میرابیٹا کہاں ہے اس حالت میں آپ اسے باہرچھوڑ آئے ہیں میں اس کے پاس جاتی ہوں یہ کہہ کروہ چل پڑتی ہے
عبدالمجید۔۔۔۔۔وہ باہرنہیں ہے
راشدہ۔۔۔۔۔وہ باہربھی نہیں ہے گھرمیں بھی نہیں ہے وہ کہاں ہے
عبدالمجید۔۔۔۔اس کوبھائی جاویداپنے گھرلے گیاہے مجھے کھانادے دو آرام سے سوجاؤ کل فجرکی نمازپڑھ کرچلی جانا
راشدہ۔۔۔۔جس کابیٹا اس حال میں ہو اسے کب نیندآتی ہے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۴۸
سعیداحمد،بشریٰ اورعبدالحق رات کاکھاناکھانے کے بعدخاموش بیٹھے ہیں۔
بشریٰ۔۔۔۔سعیداحمدسے۔۔۔۔۔میں نے ان کوکہہ دیاہے یہ جمعہ کے دن ناشتہ کرکے چلے جائیں گے آپ جمعرات تک ان کو کرایہ خرچہ دے دیں
سعیداحمد۔۔۔۔عبدالحق سے۔۔۔۔۔کہاں کہاں جاؤگے
عبدالحق۔۔۔۔۔۔ابھی تک اس بارے مشورہ نہیں کیا
سعیداحمد۔۔۔۔بشریٰ سے۔۔۔۔۔عارف ابھی تک نہیں آیا کیاوہ بتاکرگیاتھا
بشریٰ۔۔۔۔۔اس نے بتایاتونہیں تھا
عبدالحق۔۔۔۔۔ہوسکتاہے بھائی کوسواریاں مل گئی ہوں
بشریٰ۔۔۔۔۔۔رکشے میں کوئی خرابی بھی توہوسکتی ہے
عبدالحق۔۔۔۔اس علاقے میں مقابلے ہورہے ہیں میں چاہتاہوں وزن اٹھانے اوردوڑ لگانے کے مقابلوں میں حصہ لوں
سعیداحمد۔۔۔۔مقابلوں میں حصہ لینے کے لیے محنت اورتجربہ کی ضرورت ہوتی ہے
عارف یہ سب خاموشی سے سن رہاہے اس کے والدین اوربھائی کومعلوم ہی نہیں کہ وہ آگیاہے
عارف۔۔۔۔۔السلام علیکم کیامقابلے ہورہے ہیں
بشریٰ۔۔۔۔۔وعلیکم السلام تیرابھائی بتارہاہے یہ وزن اٹھانے اوردوڑ لگانے کے مقابلوں میں حصہ لیناچاہتاہے
عارف۔۔۔۔۔یہ توبہت اچھی بات ہے۔اس کے علاوہ کون کون سے مقابلے ہورہے ہیں
عبدالحق۔۔۔۔۔جن مقابلوں میں ہم حصہ لے سکتے ہیں ان میں وزن اٹھانا، دوڑ لگانا، سائیکل چلانا اورسجاوٹ کرناہے
عارف۔۔۔۔۔میں رکشہ سجاؤں گا
بشریٰ۔۔۔۔۔عارف آج تودیرسے کیوں آیاہے
عارف۔۔۔۔۔یہ میں کل بتاؤں گا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۴۹
نورالعین چارپائی پراداس بیٹھی ہے۔ کبھی سرنیچے جھکالیتی ہے کبھی ادھرادھردیکھنے لگتی ہے بارباردروازے کی طرف دیکھتی ہے اپنے آپ سے کہتی ہے رات ہوگئی ہے۔ باپ بیٹے ابھی تک نہیں آئے کہیں وہ رات اپنے دوست کے ہاں تونہیں گزاررہے ایساہوتا تووہ مجھے بتاکرجاتے یہ بھی ہوسکتاہے ان کوسواری نہ مل رہی ہو یااﷲ میراشوہراوربیٹے جہاں بھی ہوں خیریت سے ہوں اسی دوران دروازے پردستک ہوتی ہے۔ نورالعین دروازہکھولتی ہے توکریم بخش اوراس کے دونوں بیٹے سامنے کھڑے ہیں۔ نورالعین کریم بخش کواورطارق اورافضل نورالعین کوسلام کرتے ہیں۔ نورالعین اﷲ کاشکراداکرتی ہے
نورالعین۔۔۔۔۔اتنی دیرسے آرہے ہو میں پریشان ہورہی تھی مجھے طرح طرح کے خیالات آرہے تھے
کریم بخش۔۔۔۔۔اب ہم آگئے ہیں اپنی پریشانی ختم کردے
افضل۔۔۔۔امی جلدی سے کھانادے دیں بہت بھوک لگی ہے
طارق۔۔۔۔۔گھرسے ناشتہ کرکے گئے تھے سارادن کھانانہیں کھایا
نورالعین۔۔۔۔۔کریم بخش اوردونوں بیٹوں کے سامنے کھانارکھتے ہوئے۔۔۔۔آپ جس دوست کے گھرگئے تھے اس نے کھانادیانہیں یاآپ نے نہیں کھایا
افضل۔۔۔۔وہ چائے اور بسکٹ لائے تھے نہ توہم پوری چائے پی سکے نہ بسکٹ کھاسکے
نورالعین۔۔۔۔۔کیاچائے اور بسکٹ پسندنہیں آئے
کریم بخش۔۔۔۔۔چائے بھی بہت اچھی تھی اور بسکٹ بھی
نورالعین۔۔۔۔۔ایساہے تو چائے کیوں نہیں پی کھانابھی نہیں کھایا
کریم بخش۔۔۔۔۔حالات ہی اس طرح بن گئے کہ کسی کوپانی پینے کاہوش بھی نہیں رہا
نورالعین۔۔۔۔۔کیاہوا خیریت توہے
کریم بخش۔۔۔۔۔۔یہ میں بعدمیں بتاؤں گا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۵۰
ابھی سورج طلوع ہونے میں وقت ہے۔ راشدہ ناشتہ لے کرجاویدکے دروازے پرکھڑی ہے۔عبدالرحیم اس کے ساتھ ہے۔ وہ دروازے پردستک دیتاہے۔
صابراں۔۔۔۔۔السلام علیکم چچی جان صبح صبح آپ آجائیں کیسے آناہوا
راشدہ۔۔۔۔۔احمدبخش کہاں ہے وہ کل سے بھوکاہے
صابراں۔۔۔۔۔احمدبخش وہ کب آیا وہ تویہاں نہیں ہے
راشدہ۔۔۔۔اس کاباپ توکہہ رہاتھا
اسی دوران چچی بھتیجی رحمتاں کے پاس پہنچ جاتی ہیں۔ رحمتاں جائے نمازپربیٹھ کردعامانگ رہی ہے۔ راشدہ، عبدالرحیم اورصابراں اس کے ایک طرف کھڑی ہیں
رحمتاں۔۔۔۔راشدہ سے۔۔۔۔۔آپ کھڑی کیوں ہیں بیٹھ جائیں
صابراں۔۔۔۔چچی پوچھ رہی ہیں احمدبخش کہاں ہے امی وہ تویہاں نہیں ہے
رحمتاں۔۔۔۔۔احمدبخش آج ہمارے گھرمیں ہی ہے
صابراں۔۔۔۔وہ کب آیا آپ توبتارہی تھیں وہ بیمارہے
رحمتاں۔۔۔۔وہ واقعی بیمارہے رات کوتمہارے ابواسے لے آئے تھے
اسی دوران جاویدبھی آجاتاہے
جاوید۔۔۔۔راشدہ سے۔۔۔۔۔بیٹے کے لیے ناشتہ لائی ہو ہمارے گھرمیں ناشتہ نہیں بنتاکیا جوآپ لے آئی ہیں
راشدہ۔۔۔۔۔میرابیٹا کل سے بھوکاہے کل وہ ناشتہ کرکے سکول گیاتھا وہاں سے کیسے واپس آیا یہ آپ بھی جانتے ہیں آپ اسے اپنے گھرکیوں لے آئے
جاوید۔۔۔۔آپ اس کے باپ کے مزاج اوررویے کوجانتے ہوئے بھی مجھ سے سوال کررہی ہیں
راشدہ۔۔۔۔۔ان کامزاج اوررویہ توایساہی ہے
جاوید۔۔۔۔۔اگراحمدبخش کواس کے اپنے گھرجانے دیتاتو اس کاباپ اسے سونے نہ دیتا وہ توکل اسے باربارجگانے کی کوشش کرتارہا ہم اسے منع بھی کرتے رہے
راشدہ۔۔۔۔۔آپ اسے اس لیے لائے ہیں تاکہ وہ سکون سے آرام کرسکے وہ ہے کہاں
رحمتاں۔۔۔۔وہ قرآن پاک کی تلاوت کررہاہے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۵۱
ایک گھرکی چاردیواری میں پچاس کرسیوں پرخواتین بیٹھی ہیں ۔ ایک خاتون قرآن پاک کی تلاوت کرتی ہے ۔ایک اورخاتون پیرنصیرالدین نصیرکی لکھی ہوئی نعت شریف سناتی ہے۔ اس کے بعدگفتگوکاسلسلہ شروع ہوتاہے
پہلی خاتون۔۔۔۔۔مقابلوں کے انتظامات کوآخری شکل دینے کے لیے ہم اکٹھی ہوئی ہیں بچیوں کے مقابلے تومسجدمیں ہوں گے لڑکیوں کے مقابلے کہاں کرائیں
دوسری خاتون۔۔۔۔۔اس کے لیے ایساگھرتلاش کریں جس کاصحن بہت بڑاہو جس میں مقابلوں میں حصہ لینے والی لڑکیاں آسانی سے پکوان تیارکرسکیں
تیسری خاتون۔۔۔۔اس کے لیے ہمیں اتنی تعدادمیں چولھے بھی خریدنے پڑیں گے اوربرتن بھی
چوتھی خاتون۔۔۔۔۔خریداری تومکمل ہوچکی ہے نہ توچولھے خریدے گئے ہیں اورنہ ہی پکوان بنانے کے لیے برتن
پانچویں خاتون۔۔۔۔۔ایساگھرہم تلاش کریں مقابلوں میں حصہ لینے والی خواتین برتن اورچولھے ساتھ لے آئیں
چھٹی خاتون۔۔۔۔۔یہ مناسب نہیں ہے ویسے بھی دیہاتوں میں چولھے ایسے نہیں ہوتے جوادھرادھرلائے جاسکیں
ساتویں خاتون۔۔۔۔۔پھرمقابلے کیسے کرائیں گی
پہلی خاتون۔۔۔۔۔ایساکریں پکوان گھروں میں تیارکریں ان کوایک ایک برتن دیاجائے جس میں وہ تیارشدہ پکوان ڈال دیں
دوسری خاتون۔۔۔۔۔یہ بہتررہے گا ہمارانمائندہ مقررہ وقت پران سے پکوان لے آئے گا
تمام خواتین۔۔۔۔۔ہم اس بات سے اتفاق کرتی ہیں
٭٭٭٭٭٭٭٭٭

 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Muhammad Siddique Prihar

Read More Articles by Muhammad Siddique Prihar: 336 Articles with 151135 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
21 Feb, 2021 Views: 596

Comments

آپ کی رائے