صرف آنکھوں کے لئے نقصان دہ نہیں بلکہ۔۔۔ زیادہ موبائل فون استعمال کرنے سے آپ کو کن خطرات کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے؟

 
ہم یہ تو جانتے ہیں کہ موبائل فون کا زیادہ استعمال ہماری آنکھوں کے لئے خراب ہے لیکن اس حقیقت سے بہت کم لوگ واقف ہیں کہ ایک عام شخص دن بھر میں اپنے موبائل کو 2,617 بار چھوتا ہے۔ ایک نشے کی طرح لگنے والی موبائل فونز کی لت صرف آنکھوں کے لئے ہی نہیں بلکہ بہت طرح سے ہمارے لئے نقصان دہ ہے۔
 
نفسیاتی مسائل
نوموفوبیا نامی ایک نفسیاتی مسئلہ یا کیفیت لوگوں میں اس وقت دیکھنے میں آتا ہے جب وہ موبائل فونز کا بہت زیادہ استعمال کرنے لگتے ہیں یہاں تک کہ موبائل سے دوری کا خوف انھیں اپنے اعصاب پر سوار ہوتا محسوس ہوتا ہے۔
 
کان بجنے لگتے ہیں
یہ مرض یا کیفیت موبائل فون سے ہونے والے مسائل سے جڑا ہوا ہے۔ بار بار بویفیکیشن اور پیغامات کی آواز کے عادی ہوجانے کی وجہ سے یہ آوازیں ہمیں اکثر تب بھی سنائی دیتی ہیں جب یہ حقیقتاً نہیں آرہی ہوتیں۔ یہی وہ وقت ہے جب آپ کو موبائل کے بہت زیادہ استعمال پر نظرِثانی کرنی چاہیے۔
 
نیند متاثر ہونا
ٹین ایجرز خاص طور پر موبائل سینے یا سرہانے رکھ کر سونے کے عادی ہوتے ہیں تاکہ کسی بھی پیغام یا کال آنے کی صورت میں فوی جواب دے سکیں۔ لیکن تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ جو نوجوان رات میں موبائل کا زیادہ استعمال کرتے ہیں وہ عام لوگوں کی نسبت ایک ہفتے میں کم سے کم 46 منٹ زیادہ جاگتے ہیں۔ اندھیرے میں موبائل استعمال کرنے سے جسم میں تھکن بڑھ جاتی ہے لیکن شعاعوں کی وجہ سے نیند نہیں آتی
 
حادثات
گاڑی چلاتے ہوئے موبائل استعمال کرنے سے تو نقصانات ہوتے ہی ہیں لیکن کچھ سالوں سے ایسی خبروں میں بھی اضافہ ہوا ہے جن میں مختلف اور انوکھے انداز میں سیلفی لینے کے شوق میں کئی نوجوان اپنی جان گنوا بیٹھے۔
 
موٹاپا
مسلسل موبائل کا استعمال موٹاپے کی وجہ بنتا ہے۔ ہارورڈ ٹی ایچ اسکول آف پبلک ہیلتھ میں ہونے والی ریسرچ کے مطابق جو لوگ دن میں پانچ گھنٹے سے زیادہ موبائل کا استعمال کرتے ہیں وہ نیند کی کمی اور موٹاپے کا شکار زیادہ ہوتے ہیں۔
 
سائبر بلئینگ
موبائل میں سوشل میڈیا پر مختلف اور غیر بھروسے مند گروپس جوائن کرنے سے بچوں اور جوانوں کو اکثر خطرناک صورتحال کا سامنا بھی کرنا پڑتا ہے اور وہ یہ بات اپنے گھروالوں کو بتانے سے کتراتے ہیں۔ نتیجتاً اسکول، کالج سے غیر حاضر رہنے لگتے ہیں۔ اس کے علاوہ سوشل میڈیا پر خودنمائی کے لئے پوسٹ شئیر کرنے کی لت میں مبتلا ہوجانا بھی عام بات ہے۔ اس سے جھوٹی انا پیدا ہوجاتی ہے جس کا عام زندگی سے کوئی لینا دینا نہیں ہوتا۔
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
02 May, 2021 Views: 1267

Comments

آپ کی رائے