صابن کے بچے ہوئے ٹکڑوں کو کپڑوں کی الماری میں رکھنے سے کیا ہوتا ہے؟ جانیئے اس کے کچھ ایسے فائدے جو ہر کوئی نہیں جانتا!

 
صابن ایک وقت تک استعمال کرنے کے بعد چھوٹے ٹکڑوں میں بدل جاتا ہے جنھیں آخر میں پھینکنا ہی پڑتا ہے۔ لیکن ہمارے پاس کچھ ایسے طریقے بھی ہیں جن سے یہ دوبارہ استعمال کے قابل بن سکتے ہیں اور آپ کی بہت زیادہ بچت بھی کرسکتے ہیں تو آئیے آپ کو بتاتے ہیں کہ کس طرح آپ بچے ہوئے صابن کو دوبارہ کارآمد بنا سکتے ہیں
 
ہینڈ واش بنالیں
آج کل کورونا کی وجہ سے گھروں میں ہینڈ واش کا استعمال بڑھ گیا ہے جو کہ ایکل اچھی بات ہے۔ صابن کے بچے ہوئے ٹکڑے جمع کرکے اسے بلینڈر میں ڈالیں اور اتنا پانی ڈال کر بلینڈ کریں کہ وہ گاڑھا گاڑھا لکوئیڈ بن جائے۔ اب اسے بوتل میں بھر لیں اور ہینڈ واش کی جگہ استعمال کریں
 
 
کپڑوں میں خوشبو
نہانے کے لگژری صابنوں میں مہنگے پرفیومز جیسی خوشبو ہوتی ہے۔ صابن کے بچے ہوئے ٹکڑے خشک کرکے کپڑوں کی الماری میں رکھ دیے جائیں تو نہ صرف کپڑے خوشبودار ہوجاتے ہیں بلکہ الماری میں کیڑے مکوڑے بھی نہیں آتے
 
سلائی کے دوران استعمال کریں
بھارت کی ایک مشہور ڈریس ڈیزائنر کہتی ہیں کہ صابن کے بچے ہوئے ٹکڑے کپڑوں پر چاک کی جگہ استعمال ہوسکتے ہیں اس کے علاوہ سوئیاں بھی ان ٹکڑوں میں لگا کر محفوظ رکھی جاسکتی ہیں
 
لوفہ میں بھر لیں
نہانے کے لئے کچھ لوگ لوفہ استعمال کرتے ہیں۔ اگر لوفہ کو کھول کر صابن کے ٹکڑے اس میں بھر کر باندھ لیا جائے تو نہانے کے لئے الگ سے صابن یا باڈی واش کی ضرورت نہیں ہوگی
 
باتھ ٹب
اگر آپ کے پاس باتھ ٹب ہے تو باتھنگ بمبز وغیرہ خریدنے میں کافی پیسہ لگتا ہوگا۔ اس کی بجائے اگر آپ صابن کے بچے ہوئے ٹکڑوں کو کدوکش کر کے ایک جار میں بھر لیں اور نہانے سے پہلے ٹب میں پانی بھر کے صابن کے ٹکڑے ڈال دیں ۔
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
26 Jul, 2021 Views: 54087

Comments

آپ کی رائے