سچ تو یہ ہے(۵۰ واں حصہ)

(Muhammad Siddique Prihar, Layyah)

منظر۳۵۰
کریم بخش ،اس کابھائی اوربھتیجے رکشہ پرواپس جارہے ہیں ۔
سعیداحمد۔۔۔۔۔بچے سے تومل لیاہے اس کے باپ سے بھی ملاقات ہوجاتی تواچھاتھا
کریم بخش۔۔۔۔ہم اس سے بھی ملنے آئیں گے اس وقت ہم اس کے ساتھ ہی وقت گزاریں گے
سعیداحمد۔۔۔۔میراتومشورہ ہے آپ عبدالمجیدسے دوستی کرلیں اس کودوست کی ضرورت ہے
کریم بخش۔۔۔۔۔جہاں تک میں اسے جانتاہوں وہ کسی کودوست نہیں بناتا
سعیداحمد۔۔۔۔اس کے بارے میں اس کے بھائی جوکچھ بھی بتارہے تھے اس کی وجہ یہ ہے کہ وہ بھائیوں کے ساتھ رہتے ہوئے بھی تنہاہے
کریم بخش ۔۔۔۔اس کی تنہائی کی وجہ اس کے بھائی نہیں اس کاسخت رویہ ہے
سعیداحمد۔۔۔۔اس کاسخت رویہ اس لیے ہے وہ مسائل میں گھراہواہے اس کے پاس ایساکوئی شخص نہیں ہے جس سے وہ اپنے مسائل پربات کرسکے جواسے ان مسائل سے نکالنے میں مددکرے
کریم بخش۔۔۔۔۔وہ باتیں ہی ایسی کرتاہے اس کے پاس بیٹھنے کودل ہی نہیں کرتا
سعیداحمد۔۔۔۔اس لیے ہی کہہ رہاہوں اس کے ایسے دوست بن جاؤ جس پراسے اعتمادہو وہ اعتمادکے ساتھ اپنے مسائل بتاسکے اس سے مشورہ لے سکے
کریم بخش۔۔۔۔۔میں اس سے کہتاہوں کہ ہم دونوں دوست بن جائیں توہوسکتاہے وہ مجھ سے ملناہی چھوڑدے
سعیداحمد۔۔۔۔۔آپ اسے ابھی یہ نہ بتائیں کہ آپ اس کے دوست ہیں اس کے ساتھ رابطہ رکھیں بہانے بہانے سے اس سے ملتے رہیں اس کی ہاں میں ہاں ملاتے رہیں
کریم بخش۔۔۔۔اب کسی دن میں اس کے گھرجاؤں گا
سعیداحمد۔۔۔۔۔آپ سے پہلے میں اس سے ملناچاہتاہوں میں چاہتاہوں وہ میرے گھرآئے
کریم بخش۔۔۔۔ٹھیک ہے عارف اسے جانتاہے وہ اسے آپ کے گھرآنے کی دعوت دے دے گا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۵۱
مسجدمیں مولوی صاحب، اخترحسین اوراس کے تمام ساتھی موجودہیں۔ اٹھارہ سال کی عمرسے بڑے نوجوان ،جوان مسجدکے صحن میں موجودہیں۔
اخترحسین۔۔۔۔۔کھڑے ہوکر۔۔۔۔۔تمام دوست توجہ کریں
مسجدکے صحن میں موجودتمام افراداس کی طرف متوجہ ہوجاتے ہیں۔
اخترحسین۔۔۔۔۔۔آج مقابلوں کادوسرادن ہے آج اٹھارہ سال کی عمریااس سے بڑے غیرشادی شدہ افرادکے درمیان مقابلہ ہے تلاوت قرآن پاک اورنعت خوانی کے مقابلے مسجدمیں ہوں گے اس کے بعدکے تمام مقابلے مسجدسے باہرہوں گے مسجدکے صحن میں دیوارکے ساتھ لکڑی کے تین بینچ ایک بیڈکی صورت میں رکھے ہوئے ہیں۔
ایک منصف کے اشارہ کرنے پرایک نوجوان قرآن پاک کی تلاوت کرتاہے ۔ اس کے بعدفیاض آجاتاہے وہ بھی قرآن پاک کی تلاوت کرتاہے مقابلہ میں حصہ لینے والے نوجوان باری باری قرآن پاک کی تلاوت کرتے ہیں اس کے بعدنعت خوانی کامقابلہ شروع ہوتاہے۔ نعت خوانی کے مقابلے میں حصہ لینے والے نوجوان اعلیٰ حضرت امام احمدرضاخان بریلوی، حسن رضاخان بریلوی، پیرمہرعلی شاہ گولڑوی، سیّدریاض الدین سہروردی، اعظم چشتی،
پیرسیّدنصیرالدین نصیر، خواجہ غلام فرید کے کلام سناتے ہیں ۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۵۲
راشدہ ایک رسی پردوسوٹ پھیلاچکی ہے تیسراسوٹ پھیلانے لگتی ہے تو رحمتاں اوراریبہ آجاتی ہیں
رحمتاں۔۔۔۔۔میں مددکردیتی ہوں
اریبہ۔۔۔۔۔میں بھی مددکرنے آئی ہوں
راشدہ۔۔۔۔آپ دونوں کاشکریہ
رحمتاں۔۔۔۔۔تیری وہ پریشانی ختم ہوگئی ہے یااب بھی ہے
راشدہ۔۔۔۔۔اس وقت توسلطانہ کاباپ پریشان ہے
رحمتاں۔۔۔۔احمدبخش کی وجہ سے ؟
اریبہ۔۔۔۔اس دن وہ اپنے بیٹے سے اتنی دیرکام نہ کراتاتوآج اس کابیٹا اس کے گھرمیں ہوتا
راشدہ۔۔۔۔اس کی پریشانی کی وجہ کوئی اورہے
رحمتاں۔۔۔۔عبدالمجیدکواورکس بات نے پریشان کردیاہے
راشدہ۔۔۔۔دواجنبیوں نے
اریبہ۔۔۔۔۔کون تھے وہ کیاکہتے تھے
راشدہ۔۔۔۔۔یہ تومعلوم نہیں وہ کون تھے دونوں میں سے کسی نے کہابھی کچھ نہیں
رحمتاں۔۔۔۔۔پھرپریشانی کیاہے
اریبہ۔۔۔۔۔ہواکیاہے تفصیل سے بتاؤ
راشدہ دونوں کوتفصیل سے یہ ساری داستان سناتی ہے
رحمتاں ۔۔۔۔راشدہ سے۔۔۔۔۔۔مجھے توسب سمجھ آگیاہے تجھے بھی سمجھ آیاگیاہوگا
راشدہ۔۔۔۔۔میں تواسی وقت سمجھ گئی تھی
اریبہ۔۔۔۔تونے بتایاتونہیں
راشدہ۔۔۔۔۔نہیں میں نے نہیں بتایا
رحمتاں۔۔۔۔۔بتانابھی نہیں
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۵۳
مسجدکے باہرسب لوگ جمع ہیں۔
ناصراقبال۔۔۔۔۔اب وزن اٹھانے کامقابلہ ہوگا وزن اٹھانے کے نمبرعمر،وزن اوروزن اٹھانے کے دورانیے کے مطابق ملیں گے یک ایک کرکے
آئیں اوریہ وزنی چیزیں اٹھائیں
وزن اٹھانے کے مقابلے میں حصہ لینے والے وزن اٹھارہے ہیں کسی نے گندم کی دوبوریاں اٹھارکھی ہیں کوئی لکڑی کے تختے پرتیس اینٹیں اٹھائے ہوئے ہے۔ کسی نے ریت سے بھراہواگٹواٹھارکھاہے ایک شخص وزن اٹھاکرتھک جاتاہے وہ وزنی چیزرکھ دیتاہے دوسرااسی وزنی چیزکواٹھالیتاہے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۵۴
بشریٰ اورعبدالحق الگ الگ کرسیوں پربیٹھے ہیں۔
بشریٰ۔۔۔۔۔عبدالحق سے۔۔۔۔۔اب اگرتجھ سے کوئی بات پوچھوں پہلے کی طرح سوال تونہیں کرنے لگ جائے گا
عبدالحق۔۔۔۔اس وقت بھائی کی بات آپ کوسمجھانے کے لیے وہ سوال ضروری تھے
بشریٰ۔۔۔۔۔اب کوئی سوال نہیں کرے گا
عبدالحق۔۔۔۔۔۔نہیں کوئی بھی سوال نہیں کروں گا
بشریٰ۔۔۔۔۔سمجھ توتوگیاہے اب بتادے جومیں پوچھ رہی ہوں
عبدالحق۔۔۔۔۔وہ بہت اچھے لوگ ہیں ہماری بہت اچھی مہمان نوازی کی
بشریٰ۔۔۔۔۔کون کون ملاتھا
عبدالحق۔۔۔۔۔۔احمدبخش کے چچا جاوید اوربشیراحمدملے تھے
بشریٰ۔۔۔۔اوراحمدبخش
عبدالحق۔۔۔۔۔وہ بھی ملاتھا اوراس کاچچازادبھائی بھی ملاتھا ہمارے لیے کھاناوہ دونوں ہی لائے تھے
بشریٰ۔۔۔۔احمدبخش اب کیساہے
عبدالحق۔۔۔۔اس کاچچابتارہاتھا کہ اب بہترہورہاہے ابھی مکمل صحت یاب نہیں ہوا
بشریٰ۔۔۔۔۔اس کاباپ بھی ملاتھا ؟
سعیداحمد۔۔۔۔آتے ہی۔۔۔۔۔نہیں اس کاباپ نہیں ملاتھا
بشریٰ۔۔۔۔۔اس سے بھی مل کرآتے
سعیداحمد۔۔۔۔اس کے بھائی کہتے تھے اس سے نہ ہی ملو تواچھاہے
بشریٰ۔۔۔۔۔انہوں نے اپنے بھائی کے بارے میں کچھ توبتایاہوگا
سعیداحمد۔۔۔۔۔۔اسے سن کرمجھے دکھ بھی ہوا افسوس بھی ہوا اوراس پرترس بھی آیا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۵۵
وزن اٹھانے کامقابلہ ختم ہوچکاہے۔
تنویراحمد۔۔۔۔۔سائیکل چلانے اوردوڑنے کے مقابلے ایک ساتھ ہوں گے
ایک نوجوان۔۔۔۔۔یہ دونوں مقابلے ایک ساتھ کس طرح ہوں گے
تنویراحمد۔۔۔۔۔ہوسکتے ہیں اس میں مشکل کیاہے
ایک اورنوجوان۔۔۔۔۔دونوں ٹیمیں برابرمیں دائیں بائیں چلیں گی یا ایک ٹیم آگے چلے گی اوردوسری ٹیم اس سے پیچھے چلے گی
تنویراحمد۔۔۔۔۔ایساکچھ نہیں ہوگا
ایک اورنوجوان۔۔۔۔پھریہ دونوں مقابلے ایک ساتھ کس طرح ہوں گے
تنویراحمد۔۔۔۔۔۔یہ دونوں مقابلے سڑک پرہوں گے تمام لوگ سڑک پرپہنچ جائیں وہاں جاکربتاؤں گا کہ کہ یہ دونوں مقابلے ایک ساتھ کس طرح ہوں گے
تمام لوگ سڑک کی طرف جارہے ہیں۔ سڑک کی طرف جاتے ہوئے لوگ سرگوشیاں کرتے جارہے ہیں۔ چھوٹی سی سڑک ہے اس پرچارسائیکل بھی برابرمیں مشکل سے چل سکتے ہیں کوئی کہہ رہاہے اتنے سائیکل ہیں اوراتنے پیدل دوڑنے والے کچھ نوجوان خاموشی سے سڑک کی طرف جارہے ہیں۔ کئی نوجوان کہہ رہے ہیں ہم نے آج تک نہ تودیکھا نہ سنا کہ سائیکل چلانے اوردوڑنے کے مقابلے ایک ساتھ ہوئے ہوں
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۵۶
بشیراحمداوراریبہ گھرکے کمرے میں الگ الگ چارپائیوں پربیٹھے ہیں
اریبہ۔۔۔۔۔کل جومہمان آئے تھے وہ کیسے تھے
بشیراحمد۔۔۔۔۔ایک دوملاقاتوں سے اندازہ نہیں لگایاجاسکتا
اریبہ۔۔۔۔ان کی باتوں سے کچھ نہ کچھ تواندازہ لگایاجاسکتاہے
بشیراحمد۔۔۔۔وہ ہمارے بھائی اوربھتیجے کے بارے میں پوچھتے رہے
اریبہ۔۔۔۔اس کے علاوہ کوئی بات نہیں ہوئی
بشیراحمد۔۔۔۔۔خیرخیریت کے علاوہ کوئی بات نہیں ہوئی
اریبہ۔۔۔۔اب آپ کوان کے گھرجاناچاہیے
بشیراحمد۔۔۔۔وہ ہمیں دعوت دے کرتونہیں گئے بلائے بغیرکسی کے گھرجانامجھے نہیں لگتا کہ مناسب ہے
اریبہ۔۔۔۔آپ نے یاآپ کے بھائی نے ان کوبلایاتھا کیا
بشیراحمد۔۔۔۔ان کے پاس آنے کی ایک وجہ تھی ہمارے پاس کوئی وجہ نہیں ہے
اسی دوران راشدہ آجاتی ہے
بشیراحمد۔۔۔۔۔عبدالمجیدنے پھرکوئی دھمکی تونہیں دے دی
راشدہ۔۔۔۔سلطانہ کے ابو نے اب کوئی دھمکی نہیں دی
بشیراحمد۔۔۔۔۔اب اگرکوئی دھمکی دے توضروربتانا
راشدہ۔۔۔۔۔ضروربتاؤں گی
بشیراحمد۔۔۔۔چارپائی سے اترکر۔۔۔۔۔تم دونوں باتیں کرو میں باہرجارہاہوں
٭٭٭٭٭٭٭٭٭

 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Muhammad Siddique Prihar

Read More Articles by Muhammad Siddique Prihar: 366 Articles with 212431 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
17 Apr, 2022 Views: 171

Comments

آپ کی رائے