قسمت کا کھیل

(Zulfiqar Ali Bukhari, Rawalpindi)
پچھتاوا تب ہوتا ہے جب وقت گذر جاتا ہے پہلے انسان اپنی انا و ضد میں ہی رہتا ہے۔
حفصہ نے دلیری کا مظاہرہ کرتے ہوئے یونیورسٹی سے ایک پیریڈ میں غیر حاضر ہو کر آج تیز دھڑکن کے ساتھ پہلی دفعہ عثمان سے ملاقات کر لی تھی۔ دونوں کا رابطہ سوشل ویب سائٹ کے ذریعے ہوا تھا جس کے بعد ایک ہونے کا فیصلہ کر لیا تھا۔ عثمان رشتہ لے کر گیا مگر اُسکی والدہ نے بے عزت کر کے انکار کر دیا اور والد نے غیرت دکھاتے ہوئے خاندان میں ہی بے جوڑ رشتہ کرا دیا۔ چند ماہ بعد ہی حفصہ طلاق لے کر واپس آگئی اور والدین سر پکڑ کر رہ گئے کہ آخر ایسا کیوں ہوا؟
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Zulfiqar Ali Bukhari

Read More Articles by Zulfiqar Ali Bukhari: 322 Articles with 270908 views »
I'm an original, creative Thinker, Teacher, Writer, Motivator and Human Rights Activist.

I’m only a student of knowledge, NOT a scholar. And I do N
.. View More
16 Oct, 2016 Views: 1367

Comments

آپ کی رائے
ابرش انمول صاحبہ آپ کی بات سے متفق ہوں مگر کہیں نہ کہیں ضد اور انا کی وجہ سے اور کہیں تعلیم کی کمی کی وجہ سے ایسا ہوتا ہے کہ اپنی من مانی کروانے پر مجبور کیا جاتا ہے بصورت دیگر اسلام پسند کی شادی کا حق دیتا ہے۔بہرحال تبصرے کے لئے مشکور ہوں۔خوش رہیے۔
By: Zulfiqar Ali Bukhari, Rawalpindi on Apr, 08 2017
Reply Reply
0 Like
nice
By: mini, mindi bhauddin on Dec, 07 2016
Reply Reply
0 Like
Thanks lot for appreciation.
By: Zulfiqar Ali Bukhari, Rawalpindi on Apr, 08 2017
0 Like
Aysa hi hota y bat smjh me nahe ati mhbt ko juram q smjha jata hy jb maa baap apni ulaad kikhoshi chaty hy tu jb wo apni khushi ka izhar krty hy tu unko sirf roswai hi q milti hy h mery hisab sy y tu koi galt bat nahe hy ky wo ak izat sy sirf apni khoish ka izhar krty hy
By: abrish anmok, sargodha on Dec, 01 2016
Reply Reply
0 Like