شرافت یا انگارہ

(Farheen Naz Tariq, Chakwal)
"شریف لڑکیاں نامحرم سے راه ورسم نہیں بڑھاتیں-"
ہوش سنبھالتے ہی ماں کا اسے سکھایا یہ پہلا سبق تھا
تعلیم کے بعد ملازمت کرنے لگی مگر کبھی اپنی حدود پار نہ کی -

رشتہ داروں کو اس کی ملازمت بدکرداری نظر آتی-
باہر والے اس کی شرافت کو دقیانوسیت گردانتے
یوں دو رواجوں میں پستے ماں کی دہلیز پر ہی اسکی عمر ڈھلنے لگی بہن بھائی اپنے گھر بار کے ہوئے تو اس کے وجود سے بیزار رہنے لگے

" تو ان اصولوں کو پکڑے میرا دل ہی جلاتی رہنا-لڑکیاں تو خود ہی اپنے 'بر' تلاش کر لیتی ہیں -"
حیرت سے پریشان ماں کے الفاظ سنتے ثمره کا دل کٹ کر ره جاتا-
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Farheen Naz Tariq

Read More Articles by Farheen Naz Tariq: 30 Articles with 19414 views »
My work is my intro. .. View More
18 Oct, 2016 Views: 930

Comments

آپ کی رائے
یہی ہوتا ہے اچھی لڑکیوں کے ساتھ - سوال یہ ہے کے اب ثمرہ کیا کرے گی -
By: Samina Naz, Karachi on Oct, 21 2016
Reply Reply
1 Like
Ek jagha parha tha k qayamat ki nishanio ma se ek yeh hugi k us daur ma achayi k rastay pa chalnay walon ka haal yeh huga goya unho ne apne hathon ma angaray pkar rkhe hun. Wohi hu rha ha aj.....
By: Farheen Naz Tariq, Chakwal on Oct, 22 2016
1 Like
Nice
By: Mansoor Achakzai, Jeddah on Oct, 20 2016
Reply Reply
1 Like
Thanku
By: Farheen Naz Tariq, Chakwal on Oct, 22 2016
1 Like
Thanku
By: Farheen Naz Tariq, Chakwal on Oct, 22 2016
0 Like
Masha Allah bohoth khoobsoorath kahani likhi hay aap nay ... Jazak Allah HU Khairan kaseera
By: farah ejaz, Karachi on Oct, 19 2016
Reply Reply
1 Like
bahut shukriya :)
By: Farheen Naz Tariq, Chakwal on Oct, 20 2016
1 Like
Excellent..haqiqat py mabni kahani likhi hy..buhat aawla.
By: Asma, Faisalabad on Oct, 19 2016
Reply Reply
1 Like
bht shukriya :)
By: Farheen Naz Tariq, Chakwal on Oct, 19 2016
1 Like