کال گرل

(Kubra Naveed, Lahore)
وہ کچن میں آئی راشن کے خالی ڈبے منہ چڑا رہے تھے .
بیمار ماں کی دوائیاں بھی ختم ..
اس یتیم نے محلے کے تمام گھروں کا دروازہ کھٹکھٹایا ...
کوئی بھی مزید ادھار دینے کو تیار نہیں ...
سال بعد جدید تراش خراش کا لباس پہنے وہ گاڑی سے اتری ..
تو محلے کے چند شرفا نے اسے موٹی سی گالی دی اور کال گرل قرار دیا ...
وہ بغیر پرواہ کیے گھر آئی ....
ماں کو دوائی کھلائی
عشاء کے بعد وہ ان معزز لوگوں کے لئے دعا کرتی جن کے ہوتے ہوئے لڑکیاں کال گرل بننے پر مجبور ہیں ...
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Kubra Naveed
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
21 Oct, 2016 Views: 1325

Comments

آپ کی رائے
Talkh haqeeqat... pehli short story he to bht umdagi se likhi ap ne. Stay blessed.
By: Arshiya Hashmi, Islamabad on Nov, 13 2016
Reply Reply
1 Like
یہ ایک کڑوی سچائی ہے ہم ان لوگوں کی تو مدد تو کرتے ہیں جو ہماری امداد کے بغیر بھی زندگی کی بھاگ دوڑ کر سکتے ہیں مگر حقداروں کی ضرور ت پوری کرنے سے ڈرتے ہیں۔بہت عمدہ کاوش ہے۔
By: Zulfiqar Ali Bukhari, Rawalpindi on Nov, 01 2016
Reply Reply
1 Like
bohoth umda Masha AllahAllah
By: farah ejaz, Karachi on Oct, 26 2016
Reply Reply
0 Like
True fact u reveal.... stay blessed!!!
By: Faiza Umair, Lahore on Oct, 22 2016
Reply Reply
1 Like