بہو

(Mehreen Sadaf, Rawalpindi)
لڑکی پڑھی لکھی ہے۔ گھر کے کام کاج میں ماہر ہے۔ نماز روزہ کی پابند ہے لیکن رنگ دبتا ہے۔ رشتہ کروانے والی عورت مسلسل کھانے کے ساتھ بول رہی تھی
نہیں، نہیں، ہمیں تو بہو گوری چٹی چاہیے۔ دنیا دیکھے کہ ہماری بہو لاکھوں میں ایک ہے۔ ساس نے اکڑ کر کہا
ہاں ہاں! گوری چٹی ہے۔ فیشن ایبل بھی ہے۔ رشتہ کرانے والی نے کہا
ہاں ہاں! ہمیں ملنا چاہیے۔ ساس نے کہا
بہو ایسی لائی ہوں کہ دنیا دیکھے گی۔ ساس سب کو بہو سے ملواتی
ہائے میرے نصیب پھوٹ گئے۔ بہو ایک نہیں سنتی۔ بات کرو تو تڑاخ سے جواب دیتی ہے۔ مجھ سے بات تک نہیں کرتی سر پر دوپٹہ لینا تو دور نماز روزے کا کوئی پتہ نہیں۔ ساس رو رہی تھی۔
واہ! جی بہو گوری چٹی ہے، ہاتھ لگائے میلی ہوتی ہے۔ پڑوسن نے جلتے ہوئے کہا
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Mehreen Sadaf
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
22 Oct, 2016 Views: 693

Comments

آپ کی رائے
Nice... Mahreen Sadaf
By: Sajjad Ali, Rawalpindi on Oct, 25 2016
Reply Reply
0 Like