امی مجھے بستہ دو

(Muhammad Rizwan, Mianwali)
امی مجھے بستہ دو میں سکول جاتا ہوں
نہیں بیٹا! تمہیں کام پر جانا ہے
نہیں ! میں کام پر نہیں جاتا
کیوں؟
جب میں صبح چھوٹے چھوٹے بچوں کو سکول جاتے دیکھتا ہوں تو دل کرتا ہے کہ میں بھی سکول جاؤں
بیٹا میرا دل بھی چاہتا ہے کہ تم پڑھ لکھ کر میرا سہارا بنو لیکن صرف میرے دوسروں کے گھر کام کرنے سے گھر کا گزارہ نہیں ہوتا اور تیری دونوں بہنیں ابھی بہت چھوٹی ہیں ورنہ اُن کو کسی کے گھر کام پر بھیج دیتی
اچھا امی! میں ہی پھر کام کے لئے جاتا ہوں ۔ اﷲ حافظ
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Muhammad Rizwan
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
27 Oct, 2016 Views: 535

Comments

آپ کی رائے
Sir, Ap ne bahot umda kahani likhi jis me do pehlo nazar aty han. 1 ye k majboori ki khatir bahot se log khaish k bawajood nai perh skaty or 2ra ye k lirkio ko na perhany to kher larky ko na perhany ka afsos hota hy. Good g
By: kashif imran, Mianwali on Oct, 29 2016
Reply Reply
0 Like
So sad and very heart touching story
By: Sobia, Islamabaad on Oct, 27 2016
Reply Reply
0 Like