میرا قصور

(Arooba Noor, islamabad)
دنیا کے غم وغصہ، حسد و رشک سے بےخبر وہ اپنے گھر کی اکلوتی لاڈلی تھی۔ جس کی خواہشات کسی قید کی پابند نہ تھیں۔ حسد کبھی نازک کلی کو کھلنے نہیں دیتا۔ اس کی معصومانہ باتیں اس کے استاد جو دنیا کے رنج و غم میں مبتلا تھے ان کہ ایک ایسے رویے کو جنم دے گئیں جس کا شکار خود اس کی زندگی ہوگی۔ استاد کے ہتک آمیز رویہ نے اسے ایسا تنہا کر دیا کہ آخرِی سانس تک بھی اسے جواب نہ ملا کہ آخر میرا قصور کیا تھا؟ اور یہی سوال اس کی لاش اٹھانے والوں کے ذہنوں میں تھا جن کے خوابوں کا یہ جنازہ تھا۔
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Arooba Noor
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
27 Oct, 2016 Views: 575

Comments

آپ کی رائے