واقعہ یہ ہے

(Ahliaa Javed, Hyderabad)
وہ مطاف داخل ہوتی ہے، اسے خانہ کعبہ دکهائی نہیں دیتا وہ پریشان ہوجاتی ہے ،اور اپنے شوهر کو بتاتی ہے کہ مجهے خانہ کعبہ نظر نہیں آرہا، وہ دونوں پریشان ہو کر مولانا مکی صاحب کے پاس آتے ہیں،ان کے شوهر مولانا صاحب کو بتاتے ہیں" کہ میری بیوی کو بیت اللہ نظر نہیں آرہا" مولانا صاحب کہتے ہیں کہ "آپ اپنی بیوی سے کہیں اللہ سے رو رو کر اپنے گناهوں کی معافی مانگے، اللہ نے اسے اپنے شہر میں بلالیا ہے لیکن کسی گناه کی وجہ سے اپنا گهر دکهانا نہیں چاهتے".
وہ عورت روتے ہوئے بتاتی ہیں کہ میں مردہ کو غسل دلواتی ہوں ،لوگ مجهے کہتے کہ ہم آپ کو پیسے دیں گے آپ یہ تعوذات مردہ کی منہ میں رکه دیں ،میں یہ کام کرتی تهی.
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author:

Read More Articles by : 2 Articles with 2945 views »

میری زنگی کا مقصد تیری دین کی سر فرازی
میں اس کے مسلمان مین اس کے نمازی
.. View More
28 Oct, 2016 Views: 1229

Comments

آپ کی رائے
لفظ تعویزات ہوتا ہے تعوذات نہیں
By: Muhammad Ameer Umar Farooq, Muzaffar garh on Oct, 29 2016
Reply Reply
0 Like
یہ ایک نامکمل واقعہ ہے جو تصدیق شدہ بھی نہیں ہے اور کاپی کیا گیا ہے۔ اُس عورت کا بھیانک انجام نہیں بتایا گیا کہ کس طرح موت کے بعد آسمانی بجلی گرتی ہے اور اُس کی لاش جل کر غائب ہوجاتی ہے۔
By: SOHAIL AHMAD MAZARI, Karachi on Oct, 28 2016
Reply Reply
0 Like