کالی

(Zeena, Lahore)
ہر انسان کو اللہ نے بنایا ہے۔کسی کو اسکی کمزوری کا احساس دلا کر احساس کمتری میں مبتلا نا کرے ۔ اللہ نے فرمایا، “آپس میں ناشائستا قسم کا مزاق نا کرے یعنی ایک دوسرے کو برے ناموں سے نا پکارے“ ( سورتہ الحجرات )
‘“ارے او کالی کہا مر گئی ہے، کب سے آوازیں دے رہی ھوں “ کالی جو ابھی کمر سیدھی کرنے کے لیے لیٹی تھی۔اندھا دھند بھاگتی دادی کے پاس پہنچی ، بھاگتے ہوئے اسکا پاؤں بھی کسی چیز سے ٹکرا کر زخمی ہوگیا ،وہ ایک پل کو پاؤں کو سہلانے کے لیے رکی پر دادی کے ڈر سے رستے خون کی پرواہ کیے بغیر وہ دادی کی مخسوس جگا براندے میں بچھے تخت کے سامنے جا کر ہی رکی ۔

“کہاں مرگئی تھی، کب سے آوازے دے رہی تجھے، چل میرے پاؤں دبا۔ دادی نے منہ میں پان ٹھونستے ہوئے پاؤں اسکے آگے کیا۔ دادی نے ایک نظر اسکے پاؤں سے بہتے خون کو دیکھا اور نظر انداز کردیا وہ چپ چاپ پاٰؤں دبانے لگ گیئ، کیوں کے اسے صبر کرنا آگیا تھا ۔

وہ جب اس دنیا میں آئی تھی ،تب اسکا کالا رنگ دیکھ کر دادی نے بہت واویلا کیا تھا۔ ہائے ہائے کالی ہمارے خاندان میں کہاں سے آگئی۔کیوں کہ ان کے خاندان میں کوئی بھی کالا نیں تھا، مگر ماں، ماں ہی ہوتی ہے، اس نے کالی کا نام زرمینہ رکھا، مگر زرمینہ ماں کے ّعلاوہ کوئی نئی کہتا تھا،ماں باپ کا وہ آنکھ کا تارہ تھی۔

زرمینہ کا نمبر بہن،بھائیوں میں تیسرا تھا،سب سے بڑی ایک بہن پھر بھائی پھر زرمینہ تھی۔بچپن میں جب دادی دوسرے بہن بھائیوں کو بھینچ بھینچ کر پیار کرتی وہ بھی اپنے ننھے ننھے قدموں سے چل کر دادی کے پاس جاتی پر دادی اسے دھتکار دیتی تو وہ روتے ہوئے ماں سے جاکر لپٹ جاتی ۔

پر اب وہ بچی نہی رہی تھی ،وہ لہجے محسوس کرنے لگی تھی، اور احساس کمتری کا شکار ہونے لگ گئی تھی ۔وہ دوسروں کے سامنے جانے سے ڈرنے لگی تھی کیوں کے سب اسے کالی کالی بول کر اسے احساس دلاتے تھے کے وہ کالی ھے بدصورت ھے ۔۔۔۔

زرمینہ بیٹا تمھارے پاؤں سے تو خون نکل رہا ہے آؤ میں پٹی کردو ،کالی نے بے بسی سے دادی کی طرف دیکھا ،،،،ہاں جاؤ جاؤ میں نے کب روکا ہے ارے کچھ نہیں ھوا اسے ، تم نے فضول میں اسے سر چڑھا رکھا ھے “،،،دادی زہر اگلنے سے باز نہیں آئی ۔ماں سنی ان سنی کرتی اسے اپنے ساتھ لے گئی ،،،،دادی کی بربراہٹ نے اندر تک انکا پیچھا کیا،،،(جاری ہے)
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Zeena

Read More Articles by Zeena: 92 Articles with 136479 views »
I Am ZeeNa
https://zeenastories456.blogspot.com
.. View More
30 Dec, 2016 Views: 942

Comments

آپ کی رائے
hehehehe nice name in the story.... you are getting good at writing , well done keep up the good work :) waiting for next article :p
By: Sidra, Karachi on Jan, 03 2017
Reply Reply
0 Like
thnx sidra api :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 04 2017
0 Like
Nice starting & excellent topic
By: Abdul Kabeer, Okara on Jan, 03 2017
Reply Reply
0 Like
thnx :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 03 2017
0 Like
great sister
By: Abrish anmol, Sargodha on Jan, 03 2017
Reply Reply
0 Like
thanks abrish appia :)
By: Zeena , Lahore on Jan, 03 2017
0 Like
hehehehe nice one , you are becoming good at it , keep up the good work :)
By: Sidra, Khi on Jan, 02 2017
Reply Reply
0 Like
thnx :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 04 2017
0 Like
nice starting
By: umama khan, kohat on Jan, 02 2017
Reply Reply
0 Like
thank you umama khaaaaaaaaaaaan :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 02 2017
0 Like
very nice
By: huma khan, kohat on Jan, 02 2017
Reply Reply
0 Like
thnx :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 05 2017
0 Like
Very nice,,,,zeena
By: Mini, mandi bhauddin on Jan, 01 2017
Reply Reply
0 Like
thank you miniiiiiiiiiii :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 01 2017
0 Like
good,,,,keep it up
By: HuKhaN, Karachi on Jan, 01 2017
Reply Reply
0 Like
thnx hukhan bhaii :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 01 2017
0 Like