میں سلمان ہوں( قسط 2)

(hukhan, karachi)
اس کی سوچ کبھی مٹی اور کبھی جوتے کی جانب آ جا رہی تھی--وہ اس Position میں آگیا تھا جب انسان کو روشنی بھی اندھیرے کا ہی دوسرا روپ نظر آتی ہے اس کی سوچ اب خود کی بقا پر آکر اٹک گئی تھی وہ اس بات سے بہت دور ہوچکا تھا کہ Future کیا ہے--Bright Future کیا ہوتا ہے اس کے دوست اس کے ہمنوا کہا تک پہنچ گئے اب تو وہ فقت دھوپ کو ہی سایہ سمجھنے لگا تھا وہ اب کنکر پاؤں میں چھپانا شروع ہو گئے تھے-- جوتا تلوے سے اور پیٹ گندم سے یکسر خالی ہوچکے تھیں -بی۔پی لو ہو رہا تھا--ٹھنڈ میں بھی پسینے اس کے وجود کو بگھو رہے تھے- چاند کہے سے نکل آتا اور پھر غائب ہو جاتا تھا - بستی مٰیں داخل ہوتے ہی گھروں سے کھانے کی خوشبوئیں آنے لگے---- سلمان کھانا گرم کر دوں --- اس کی ماں کی آواز اس کی کانوں سے ٹھکرائے-- دکھ بڑا مسکراہٹ اس کے لبوں کو چو کے گزر گئی--- مسکراہٹ ماں کی احساس نے پیدا کی اور دکھ کی چادر نے اس کع یاد دلایا اب ماں نہیں رہی----سلمان نے آسمان کی طرف دیکھا شاید کہے ماں نظر آجائے مگر چاند بھی کسی بادل کی پناہ لے چکا تھا---

میرا بچا ٹھنڈا کھانا کھانے کی عادت ڈال لے- روٹی کچی پکی جیسئ ہو کھا لینا -- بھابھیاں ماں نہیں ہوتے--- ایک کمزور سا وجود جو بیماریوں میں مایوس ہو جاتا تھا-- میلے سے چادر پر لیٹے ہوئے بیٹے کو جلدی جلدی نصیحت کرتی تھی کی کہے اس کی سانس بند ہوئے تو یہ ضروری بات سمجھانے سے رہ نا جائے---
اس کے وجود نے ایک لمبی سی جھرجھری لی اور وہ واپس اپنے جسم میں آگیا جو کے اب گلیوں کے بعد منزل کے قریب ہو رہا تھا-کچھ روپے اپنے پیدل یاترا کی وجہ سے اس نے بچا لیے تھے-- پاؤں کے بغیر انسان کتنا Unsecure Feel کرتا ہے--اگر ٹرین میں کنڈکٹر کو اس کی آنکھوں مٰیں سچائی دیکھائی نہ دیتی تو وہ ابھی ریلوے کے جیل میں بنا ٹکٹ کے سفر کے الزام میں سزا کاٹ رہا ہوتا-- آج یہ کچھ پیسے کے بچ جانے میں اس Guard کا بھی شیئر تھا-- سلمان کو سامنے بیٹھی وہ فیملی یاد آگئی جس نے یہ سارا تماشہ دیکھا تھا ان کو اس کا بار بار یہاں سے وہاں آنا جانا سمجھ میٰں آگیا تھا--اب ان کی نظروں میں اس کے لیے طنز تھا-- جیسے یہ ٹکٹ کی رقم شاید کسی جوے میں ہار چکا ہو۔۔۔۔ جاری ہے
 
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: hukhan

Read More Articles by hukhan: 28 Articles with 26223 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
26 Jan, 2017 Views: 1129

Comments

آپ کی رائے
good bhai
By: umama khan, kohat on Jan, 27 2017
Reply Reply
0 Like
thx sister
By: HuKhaN, Karachi on Jan, 28 2017
0 Like
shukriya dear ap ny salman series ko urdu mein likhnay ka qadam uthaya.... starter to acha hai dard-naak hpe baqi iqsaat b jald parhny ko mily gi....
By: Faiza Umair, Lahore on Jan, 27 2017
Reply Reply
0 Like
say thx to my fan who did all this its up to my fan how long and how far it goes,,,i have no idea,,,anyway thx for likes,,,regards
By: HuKhaN, Karachi on Jan, 27 2017
0 Like
Novel maine start se nhi parha tha,,,ab sath sath parh lo gi,,,very niceeeeee,,,acha laga parh k
By: Mini, mandi bhauddin on Jan, 27 2017
Reply Reply
0 Like
sure why not
By: HuKhaN, Karachi on Jan, 27 2017
0 Like
v nice epi :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 27 2017
Reply Reply
0 Like
thx
By: HuKhaN, Karachi on Jan, 27 2017
0 Like
nice
By: Abrish anmol, Sargodha on Jan, 27 2017
Reply Reply
0 Like
thx
By: HuKhaN, Karachi on Jan, 27 2017
0 Like
acha hay dost
By: aslam memon, Karachi on Jan, 27 2017
Reply Reply
0 Like
thx
By: HuKhaN, Karachi on Jan, 27 2017
0 Like