دین اور دنیا ساتھ ساتھ

(Dr B.A Khurram, Karachi)

تحریر۔۔۔حفظہ ریاض

ابلیس اور ملائکہ کو جب اﷲ نے حضرت آدم علیہ السلام کو سجدہ کرنے کا حکم کیا تھا تو ملائکہ نے اس کو اﷲ کا حکم مان کر تعمیل کرنے میں دیر نہیں کی لیکن جب ابلیس نے اسیپ آدم علیہ السلام کا معالمہ سمجھا اور اﷲ کا حکم ماننے سے انکار کر دیا ابلیس اور ملائکہ کا حضرت آدم علیہ السلام کو سجد ہ کرنا انسان کا معاملہ نہیں بلکہ اﷲ کا معاملہ تھا ابلیس کی اسی غلط فہمی نے اس سے گناہ کا ارتکاب کروایا ۔ ہم اسنان بھی بعض اوقات دین و دنیا کے بہت سے معاملات میں غلط فہمی کا شکار ہو کر بہت سے معاملات میں گناہ کا ارتکا ب کر بیٹھتے ہیں ۔

اﷲ نے انسان کو دینا میں بھیجنے کا مقصد ہی اﷲ کا ذکر کرنا اور اسکے دین کو دوسرے لوگون تک پہنچانا ہے لیکن صرف یہی نہیں کہ اﷲ کا پیغام کو لوگون تک پہنچائے بکلہ دنیاکے دوسرے معاملات میں بھی اپنا کردار ادا کر ے دین اور دنیا کو الگ کرنے کی بجائے اﷲ کی کتاب قرآن پاک میں بتائے ہوئے طریقے کے مطابق دین اور دینا کو ساتھ ساتھ لے کر چلنا ہر مسلمان کا فرض ہے بعض اوقات یہ دیکھا گیا ہے کہ لوگ یا تو صرف پوری طرح دین پہ چلتے ہیں اور دنیا کی تعلیم کو ایک گناہ کا کام سمجھتے ہین اور لوگوں کو اس کے خلاف کرتے ہیں اور بعض اوقات صرف دنیاوی تعلمی کی طرف توجہ دیتے ہیں اور دینی تعلیم کو ایک طرف رکھ دیتے ہیں اس سے معاشرے مین ایک بہت برا افسانہ پیدا ہو تا ہے اور اس طرح دینی یا دنیاوی لحاظ سے بہت سے معاملات میں غلط فہمی کا شکا رہو جاتے ہیں معاملے کی نوعیت اور حقیقت کو سمجھے بغیر اسی غلط فہمی کی باء پر زندگی کے بہت سے معاملات میں گناہ کا ارتکاب کر بیٹھتے ہیں جب ہم اﷲ کی نافرمانی کرتے چلے جاتے ہیں تو ہم خود کو طرح طرح کی دلیل اور تاویلیں دے کر اپنے نفس کو مطمئن کر لیتے ہیں ۔جبکہ اپنی دلیلوں سے خود کو مطمئن کر کے ہم نہ تو اﷲ کی ناراضگی سے بچ سکتے ہیں اور نہ ہی اﷲ کے احکامات کو بد سکتے ہیں ان تمام صورتحال سے بچنے کے لیے ضروری ہے کہ ہم اپنی نیت اور سوچ کو درست کریں اور اس غلط فہمی کو دور کریں کہ اﷲ نے صرف دینی تعلیم کا حکم دیا ہے ۔ تاکہ ہم نیکی کی راہ قائم کرتے ہوئے اپنی دیناوی ضروریات کوبھی حاضل کریں اور اپنی نیت اور سوچ کو درست کریں کیونکہ آج کے دور مین انسان کو بہت سے شرعی مسائل کا سمانا کرنا پڑتا ہے اور وہ ان کی تلاش میں ادھر ادھر مارا پھرتا ہے لیکن اس کو کسی جگہ سے بھی تسلی بخش جواب نہیں ملتا ۔اس لیے انسان کو ان تمام مسائل سے بچنے کے لیے دنیاوی تعلیم کے ساتھ ساتھ اسلامی تعلیم بھی حاصل کرئے ۔

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Dr B.A Khurram

Read More Articles by Dr B.A Khurram: 543 Articles with 226306 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
18 Mar, 2017 Views: 348

Comments

آپ کی رائے

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ