حقیقت

(Abdullah Umar, RWP)
حقیقت کو پہچانیں
کیا کسی کا کوئی کام دیکھ کر آپ کو اس پر بے حد غصہ آیا ہے کیا آپ نے سوچا ہے آپ کو غصہ کیوں آیا ہے کئی آپ تصویر کا ایک ہی رخ دیکھ رہے ہیں اگر آپ اس کا دوسرا رخ دیکھیں تو آپ کا غصہ خوشی میں بھی بدل سکتا ہے اس کہ لئے میں ایک واقعہ آپ سے shareکرنا چاہتا ہوں-

میری امی کو ایک عادت ہے جس سے سبھی گھر والے بے زار ہیں سب کو ان کی اس عادت پر بے حد غصہ آتا ہے اور اس غصہ میں آکہ کئی مرتبہ ہم نے اپنا نقصان بھی کیا ہے نہ وہ اپنی اس عادت سے باز آتی ہیں نہ ہم غصہ سے باز آتے ہیں ان کی یہ عام عادت ہے کہ جب بھی ان کو موقع ملتا ہے تو فوراًموٹر چلادیتی ہیں اور دن میں کئی مرتبہ ٹینکی overflowہوتی رہتی ہے ہمیں جس بات پر غصہ آتا ہے ہم سب تصویر کا ایک ہی رخ دیکھتے ہیں آئیے میں آپ کو تصویر کا دوسرا رخ بھی دکھاؤں ایک دن میں چھت پر تھا امی نے اپنی عادت کے مطابق موٹر چلائی کچھ دیر بعد ٹینکی overflowہونے لگی مجھے حسب معمول غصہ آیا مگر یہ کیا ہو گیا کہ میرا غصہ ٹھنڈا ہونے لگا کیوں اس لئے کے میں نے تصویر کا دوسرا رخ دیکھ لیا تھا ہمارے گھر کے باہر بیر کا درخت ہے جن پر اکثر پرندوں کا پڑاؤ رہتا ہے میں نے دیکھا جونہی پانی overflowہوا بیر کے سارے پرندے درخت سے اڑے اور ٹینکی کا پانی جو overflowہونے کی وجہ سے چھت پر پھیل گیا تھا اس کو مزے لے لے کر پینے لگے اور جو پانی بچ گیا اس میں نہانے لگے یہ منظر دیکھ میرا دل خوش ہوگی اس کے بعد میرا دل بھی یہ کرنے لگا کہ میں بھی ٹینکی کو کئی بار overflowکراؤں تاکہ میرا حصہ بھی ان لوگوں میں پڑ جائے کہ بارے اللہ نے فرمایا
مہربانی کر تو اہل زمیں پر
خدا مہرباں ہو گا عرش بریں پر
اس واقعے سے میں نے کیاسیکھا

۱۔ دنیا میں ہر کام جس پر ہمیں غصہ آئے اس کا ہم دوسرا رخ بھی دیکھ لیا کریں اگر ہم اس کا دوسرا رخ دیکھ لیا کریں تو ہم اس بات پر مجبور ہو جائیں گے کہ جس چیز کو ہم غلط سمجھ رہے ہیں وہ حقیقت کتنے مخلوق کے لئے رحمت کا باعث بن رہی ہے اس کے بعد میر ی فلاسفی یہ کہتی ہے کہ تصویر کہ دورخ ہوتے ہیں ایک تو ہمیں نظر آرہا ہوتا ہے لیکن دوسرا آنکھوں سے اوجھل ہوتا ہے وہ ہی اصل رخ ہوتا ہے -
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Abdullah Umar

Read More Articles by Abdullah Umar: 3 Articles with 2549 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
28 Jun, 2017 Views: 1009

Comments

آپ کی رائے
Bohat achha kaam ha parindun or janwarun ka khayal karkhna ,makhluk e khuda sy khaliq e haqeeqi Tak Rasta hamwaar huta ha
Lekin .......
AP ko sirf apna gahr Hy dikha misaal Dene k liye
AP ko pata nahy k gahr ki char diwary ki baten is tarah nahy Kia karte
Or parindun ko Pani app kisi Barton ma bhy dal k rakh sakste Han .Pani k zaya karna zaruri ha .
Media ma bar bar bataya jaraha ha k Pani nemat ha zaya na Karen ,is k bawajud aap jese Kalam nigar loogon or khas kar bachun k zehen ma ulta pulta q dalte Han
Jaanaaab achhy tarah mutalia Kia Karen phir kuchh makhluq khuda Tak pohonchaen in alfaaz ki poochh hu gy Bhai sahab
By: Shahid, Rawalpindi on Jul, 21 2018
Reply Reply
0 Like
Very nice abdullah..👍
Keep it up..
By: Tayyaba nazir, Rawalpindi on Jun, 14 2018
Reply Reply
0 Like