درود شریف کی فضیلت

(Malik Mazhar Hussain Awan, )
عجب فیض ہے آقاﷺ آپ کی محبت کا کہ درود آپﷺ پر پڑھو اور خود سنور جاؤں

جیسے اسلامی مہینوں کو کچھ مہینوں پر فضیلت حاصل ہے اسی طرح جمعتہ المبارک کو بھی باقی دنوں پر خاص عظمت حاصل ہے خصوصی طور پر نبی رحمت اللعالمین ﷺ پر درود بھیجنے کا کچھ اور ہی فضیلت و مرتبہ حاصل ہے بلاشبہ درود پاک فضیلت والا عمل ہے ۔
اﷲ رب العزت نے جہاں اپنے پیارے محبوب ﷺ کو بے شمار فضائل و کمالات سے نوازا ہے وہیں ایک خاص خاصیت جو صرف آپ ﷺ کیلئے ہی خاص ہے درود شریف کی ہے
درود پاک ایک سلام ہے جو نبی آخر الزماںﷺ کی بارگاہ میں پیش کیا جاتا ہے جس کے بے شمار فوائد ہیں
رسول ہاشمیﷺ سے عقیدت و محبت اور اتباع ،اطاعت کے علاوہ وہ حقوق بھی جو اﷲ پاک نے امت محمدیﷺ پر مشروع کئے ہیں درود پاک کو ان میں سے ایک خاص مقام حاصل ہے ۔
ارشاد باری تعالیٰ ہے ۔بے شک اﷲ اور اس کے فرشتے نبی پر درود بھیجتے ہیں ،اے ایمان والو تم بھی ان پر درود بھیجو،
رسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا
بہترین دن جس پر سورج طلوع ہوا جمعہ کا ہے اسی دن حضرت آدم علیہ السلام پیدا کئے گئے ،اسی دن جنت میں داخل کئے گئے ،اسی دن جنت سے نکالے گئے اور اسی دن قیامت قائم ہوگی (مسلم)
نبی اکرم صلی اﷲ علیہ وآلہ وسلم کا فرمان عالیشان ہے کہ جمعہ کے دن اور رات کثرت سے درودشریف پڑھا کرو،جو ایسا کرئے گا قیامت کے دن میں محمدﷺ اس کی شفاعت کرونگا۔
٭ایک مرتبہ درود شریف پڑھنے سے اﷲ تعالیٰ کی دس رحمتیں نازل ہوتی ہیں (صحابی رسولﷺ حضرت ابو ہریرہ رضی اﷲ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اﷲﷺ نے فرمایا ’’جو شخص مجھ پر ایک مرتبہ درود بھیجتا ہے ،اﷲ تعالیٰ اس پر دس رحمتیں نازل فرماتا ہے (مسلم )
٭ایک مرتبہ درود شریف پڑھنے سے دس گناہ معاف ہوتے ہیں اور دس درجات بلند ہوتے ہیں (حضرت انس رضی اﷲ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اﷲﷺ نے فرمایا ’’جو شخص مجھ پر ایک مرتبہ درود شریف بھیجتا ہے ، اﷲ تعالیٰ اس پر دس رحمتیں نازل فرماتا ہے ،دس گناہ مٹا دیتا ہے اور دس درجات بلند کر دیتا ہے
٭درود شریف کثرت سے پڑھا جائے تو پریشانیوں سے نجات ملتی ہے (حضرت ابی بن کعب ؓ بیان کرتے ہیں کہ میں نے رسول اﷲﷺ سے عرض کی اے اﷲ کے رسولﷺ ،میں آپﷺ پر زیادہ درود پڑھتا ہوں ،تو آپﷺ کا کیا خیال ہے کتنا درود پڑھو ں ،آپﷺ نے فرمایا جتنا چاہو میں نے کہا چوتھا حصہ ؟آپﷺ نے فرمایا جتنا چاہو اگر اس سے زیادہ پڑھو گے تو تمھارے لئے بہتر ہے میں نے عرض کی آدھا حصہ؟ آپﷺ نے فرمایا جتنا چاہو اگر اس سے زیادہ پڑھو گے تو وہ تمھارے لئے بہتر ہے میں نے کہا دوتہائی حصہ؟آپﷺ نے فرمایا جتنا چاہو اگر اس سے بھی زیادہ پڑھو تو تمھارے لئے بہتر ہے ،میں نے کہا کہ میں آپﷺ پر درود ہی پڑھتا رہوں؟آپﷺ نے فرمایا !تب تمھیں تمھاری پریشانیوں سے بچا لیا جائے گا اور تمھارے گناہ معاف کردیئے جائینگے ۔ایک اور روایت میں ہے کہ تب تمھیں اﷲ تعالیٰ دنیا و آخرت کی پریشانیوں سے بچا لئے گا (ترمذی)
صحابی رسولﷺ سیدنا عبداﷲ بن مسعود رضی اﷲ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اﷲﷺ نے فرمایا قیامت کے دن میرے سب سے قریب وہ لوگ ہونگے جو مجھ پر کژت سے درود شریف بھجتے ہیں (ترمذی)
سیدنا ابو ہرہرہ رضی اﷲ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اﷲ ﷺ نے فرمایا کہ میری قبر کو عبادت گاہ نہ بناؤ ،اور مجھ پر درودبھیجو ،بلاشبہ تمارا درود مجھ تک پہنچتا ہے ،چاہے تم جہاں بھی پڑھو(ابوداؤد)
سیدنا علی بن ابی طالب رضی اﷲ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اﷲﷺ نے فرمایا ’’حقیقی معنوں میں بخیل وہ شخص ہے کہ جس کے پاس میرے نام کا تذکرہ ہو ا،لیکن اس نے مجھ پر درود نہیں پڑھا (ترمذی)
ایک سائل حضرت علی رضی اﷲ عنہ کے پاس آیا اور عرض کی مجھے کچھ دیجئے ،میں تنگدست ہوں ،حضرت علی رضی اﷲ عنہ کے پاس اس وقت دینے کو کچھ نہ تھا ،آپؓ نے دس بار درود شریف پڑھ کر سائل کی ہتھیلی پر پھونک ماری اور فرمایا ہتھیلی بند کر لو ،سائل نے باہر جا کر جب ہتھیلی کھولی تو سونے کے دیناروں سے بھری پڑی تھی۔
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Malik Mazhar Hussain Awan

Read More Articles by Malik Mazhar Hussain Awan: 13 Articles with 10867 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
28 Aug, 2017 Views: 949

Comments

آپ کی رائے

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ