میں سلمان ہوں(٧٩)

(Hukhan, karachi)
جانے کیوں اب بھی اداس رہتا ہوں
خود سے ہی خفا رہتا ہوں
اسی کو کیوں جانے سوچتا رہتا ہوں
اسے بھول جانا ہی بھول جاتا ہوں

سلمان کو اپنے سینے میں دم گھٹتا ہوا محسوس ہورہا تھا،،،وہ اندر سے اک لرزا دینے والے پل سے،،،
گزرا تھا،،،مگر ہرلمحے اس کا رب اس کے ساتھ تھا،،،ہر لمحے اسے سہارا ملتا چلا گیاتھا،،،اور،،،
وہ اپنے آپ سے کیے ہوئے وعدوں کو قائم رکھے ہوئے تھا،،،کمزور لمحوں کو اس نے کہیں پیچھے،،،
دھکیل دیا تھا،،،وقت اسے ہرلمحہ آزماتا چلاگیا،،،مگر وہ انہیں وقتی آزمائش سمجھ کرٹالتا چلاگیا،،،
سلمان کوگھٹن سی ہونی لگی تھی،،،وہ کریم صاحب کی کوٹھی سے نکل آیا اور پیدل ہی اپنے کمرے،،،
کی طرف چل دیا،،،کریم صاحب کے واچ مین کو بتادیاکہ وہ صبح دس بجے تک واپس آ جائے گا،،،
بس پھر وہ چلاگیا،،،آج اس کے جوتوں کے تلوے بہت مضبوط تھے،،،اس میں اب موٹا سا پیپر یا گتہ،،،
لگانے کی کوئی ضرورت نہ تھی،،،میں اس سسٹم میں کیوں ان فٹ ہوں؟؟
جانےکب ندا کا گھر آگیا،،،اسے لگا کہ جیسے وہ کسی قید خانے سے باہرنکل آیا ہو،،،
بہت آرام سے وہ اپنے کمرے میں گم ہوجانا چاہتا تھا،،،جانے میں کہاں سے آگیا ہوں،،،نہ منزل ہے،،،
نہ رستہ شناسہ،،،سلمان نےاپنی آنکھیں اس طرح بند کرلی جیسے وہ کسی ڈراؤنے خواب سے جاگا ہو،،،
اگر آنکھیں کھول لی تو ایسانہ ہو کہ خواب سچ ہو جائے،،،،نائٹ بلب کی روشنی سے بھی وہ چھپنا،،،
چاہتاتھا،،،اسے لگا خواب اب ندا آگئی ہو،،،کہہ رہی ہو،،،سلمان مجھے امجد سے شادی نہیں کرنی،،،
اور یہ بات کان کھول کے سن لو،،،سلمان نے آنکھیں اور زور سے بندکرلی،،،سلمان سونے کی ایکٹنگ نہ کرو،،،
اسے ندانے ڈانٹنا شروع کردیا،،،اس نے سوچاآنکھیں کھول ہی لوں،،،کم سے کم یہ خواب تو پیچھا چھوڑجائے،،،
آنکھیں کھولی سامنے ندا کھڑی ہوئی تھی،،،وہ جھٹ اٹھ کر بیٹھ گیا،،،اوہ لڑکی،،،تم انسان ہو یاکوئی،،،
جن بھوت،،،آنکھیں ٹکا کربیٹھی ہوئی تھی کب میں آؤں،،،کب حملہ کرنا ہے،،،مجھ پررحم نہیں آتا،،،
ندا نے گھبرا کرآگے پیچھے دیکھا،،،انگلی ہونٹوں پررکھ کر آہستہ بولنے کوکہا،،،غصےسے بولی،،،
ذیادہ ہیرو بننے کی کوشش نہ کرو،،،سمجھے میں دو من
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Hukhan

Read More Articles by Hukhan: 1124 Articles with 865064 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
09 Sep, 2017 Views: 577

Comments

آپ کی رائے
bhai lajwab romantic scene wa wa mry sath ye sb hu jaye mza aa jaye
By: rahi, karachi on Sep, 09 2017
Reply Reply
0 Like
husla bro,,,thx
By: hukhan, karachi on Sep, 09 2017
0 Like
so nice and so good
By: sohail memon, karachi on Sep, 09 2017
Reply Reply
0 Like
thx
By: hukhan, karachi on Sep, 09 2017
0 Like