’’بے ضمیر مسلمان‘‘

(Talha Ahmad, )

تحریر فرید احمد فرید
میں بس نام کا ہی مسلمان ہوں میں ذہنی طور پر دیار غیر کے آقاؤں کا غلام ہوں ہر سال لاکھوں کروڑوں ڈالر میرے اکاؤنٹ میں منتقل ہوتے ہیں تاکہ میں اپنے آقاؤں کی ایماء پر اپنا منہ بند رکھوں اور اپنے ذہن کے ساتھ ساتھ اپنے ایمان کا سودا بھی کرتا رہوں کیونکہ میرا تو نام ہی بس مسلمانوں جیسا ہے باقی الحمداﷲ میں سب کام غیروں جیسے کرتا ہوں جس طرح کتے کو کوئی ہڈی ڈال دو تو وہ کبھی بھی ہڈی ڈالنے والے کا در نہیں چھوڑتا وہ تو ایک ہڈی کھا کر اتنا وفادار ہو جاتا ہے میں تو پھر لاکھوں کروڑوں ڈالر لیتا ہوں پھر میں کیوں چھوڑوں اپنے آقا کا درمیرا تو جینا مرنا ہی یہی ہے جو مرضی ہوتا رہے چاہے برما میں مسلمانوں کو کاٹا جاتا رہے ان کی سرکاری فوج مسلمانوں پر ٹوٹ پڑے ایک ہفتے میں ہزاروں کی تعداد میں مسلمانوں کو کاٹ کاٹ کر جانوروں کو کھلادے ہزاروں لوگوں کو بے دخل کردیا جائے میں تو کچھ نہیں بول سکتا منہ بند رکھنے کے تو مجھے ڈالر ملتے ہیں میری زبان اپنے آقاؤں کے خلاف کیسے کچھ کہہ سکتی ہے دراصل میرے بھائیوں! ہم مسلمان بے بس نہیں ہیں بلکہ بے حس ہیں بے بسی نہیں بے حسی عروج تک پہنچی ہوئی ہے اسلامی دنیامیں پاکستان،ایران،سعودی عرب اور ترکی اہم حیثیت رکھتے ہیں دنیا میں ۵۶فیصد تیل کی پیداوار اسلامی ممالک میں ہوتی ہے اتنی اہم پیداوار ہونے کے باوجود جس پر دنیا چلتی ہے ہم پھر بھی کچھ نہیں کررہے اگر اسلامی دنیا آج ہی تیل کی ترسیل بند کردے تو تمام طاغوت طاقتیں تلوے چاٹنے پر مجبور ہوجائیں گی اور اسلامی دنیا ممکن حد تک مسلمانوں پر ہونے والے ظلم کو روک سکتی ہیں اب روہنگیا (برما)میں ہونے والے مسلمانوں پہ انسانیت سوز سلوک پر مختلف اسلامی ممالک کے کردار پر روشنی ڈالتے ہیں پاکستان تمام اسلامی ممالک میں واحد ایٹمی طاقت ہے جس پر مشکل حالات میں تمام مسلم امہ کی نظریں جمی ہوتی ہیں لیکن پاکستان کی بے حسی عروچ پر ہے کوئی امداد بھیجنا تو درکنار پاکستان تو سفارتی سطح پر اپنا احتجاج ریکارڈ نہیں کروا سکا یہ بہت ہی افسوس ناک امر ہے امت مسلمہ کا لیڈر ہونے کے باوجود پاکستانی کی روہنگیائی مسلمانوں کے معاملے میں خاموشی معنی خیز ہے اسلامی بلاک میں اگر کوئی روہنگیائی مسلمانوں کے لیے قدم بڑھا رہا ہے تو بس طیب اردگان ترکی کے صدرہر دلعزیز شخصیت جس کو دنیا حقیقت میں امت مسلمہ کا لیڈر مانتی ہے وہ سب سے پہلے ان کی مدد کو پہنچے ہیں ادویات اور اشیاء خوردنوش کی فراہمی کے لیے ہر ممکن کوشش کی ہے کئی طیارے سامان کے بھر کر بھیجے ہیں اور ترکی ہی واحد ملک ہے جس نے روہنگیائی مسلمانوں کو پناہ دینے کا اعلان کیا ہے بنگلہ دیش کے روہنگیائی مسلمانوں کے لیے سرحد بند کرنے کے اقدامات پر تاقیامت افسوس رہے گا سعودی عرب بھی احتجاج کے دو بول نہیں بول سکا اسے تو فی الحال امریکہ کے ساتھ دوستی کی پینگیں چڑھانے کی پڑی ہوئی ہے ایران نے کچھ حد تک ہمت دکھائی ہے اور سفارتی سطح پر شدید احتجاج نوٹ کروایا ہے ہمیں داد دینا ہوگئی مالدیپ جیسے چھوٹے ملک کو جس نے برما کے ساتھ اپنے سفارتی تعلقات ہی منقطع کردیئے ہیں اور برما کے تمام سفارتی عملے کو بے دخل کردیا ہے اب کچھ تو شرم باقی عالم اسلام کو ہونی چاہیے کیا تمہارے باپ کو مارا جائے تو تم چپ رہو گے کیا تمہارے بھائی کو کاٹا جائے تم خاموش بیٹھے رہو گے کیا تمہاری ماں بہن کو سربازار ننگا کیا جائے تو کیا خاموش رہو گے نہیں ناتو اب کیوں خاموش ہو خدارا اٹھو امت مسلمہ جسم واحد کی طرح ہے تمہارے بھائی کٹ رہے ہیں تمہیں درد نہیں ہوتا اگر واقعی نہیں ہوتا تو سن لو پاکستانیوں! تم ایک بے ضمیر اور بے غیرت قوم ہو بس تماشہ دیکھنے والے دیکھو دیکھو ! آنکھیں کھول کر دیکھو کل اگر یہ ہاتھ اپنی ماں،بہن تک آگیا تو تب بھی تماشہ دیکھنایہ پڑھ کر چاہے مجھے دو چار گالیوں سے بھی نواز دینا لیکن خود کو اپنے ضمیر کے کٹہرے میں ضرور کھڑا کرنا۔

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Talha Ahmad

Read More Articles by Talha Ahmad: 51 Articles with 16735 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
15 Sep, 2017 Views: 347

Comments

آپ کی رائے