مصر کی 5 سالہ بچی تیا حمدی ملکہ حسن بن گئی

مصر کی 5 سالہ بچی تیا حمدی ملکہ حسن بن گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق روس میں مقابلہ حسن کا انعقاد کیا گیا جہاں 5 لاکھ بچیوں نے حصّہ لیا تھا لیکن کامیابی مصر سے تعلق رکھنے والی تیا حمدی کو حاصل ہوئی۔

مصری نژاد بچی نے روس میں مقابلہ حسن جیت کر غیر معمولی شہرت حاصل کرلی ہے اور اب پوری دنیا میں اس بچی کی خوبصورتی کے چرچے ہو رہے ہیں۔

یاد رہے پوری دنیا میں تو تیا حمدی کے حسن کے چرچے عرعج پر ہے لیکن روس کے دارالحکومت ماسکو اور دوسرے بڑے شہروں میں ہرطرف تیا حمدی کے حسن کی تصاویر کو ننھی ہیروئن کے روپ میں پیش کیا جا رہا ہے۔

مشرق وسطی کی حسین ترین خواتین میں عراق نمبر ون قرار

مصر سے تعلق رکھنے والی نیا حمدی کی تصاویر کی تشہیر بھی بڑی فیشن ماڈلنگ کمپنیاں کر رہے ہیں۔

تیا حمدی کی وجہ شہرت روس میں بچوں کے مقابلہ حسن میں حصہ لینا اور ملکہ حسن کا خطاب حاصل کرنا ہے۔

تیا حسن کے والد مصری ہیں مگر انہوں نے ایک روسی لڑکی سے شادی کی تھی، شادی کے بعد پیدا ہونے والی پہلی اولاد بیٹی تھی جس کا نام تیا حمدی حسن رکھا گیا۔

تیا حمدی کے والد حسن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان کی بیٹی کے پاس مصر اور روس دونوں کی شہریت ہے۔

تیا حمدی کے والد نے بتایا کہ تیا کی عمر جب ڈیڑھ برس تھی تب ہی سے بہت سی صلاحیتیں ظاہر ہونا شروع ہوگئی تھیں۔

والد نے بتایا کہ بہت چھوٹی عمر سے تیا عربی زبان کے ساتھ ساتھ روسی زبان بھی بولنے لگی تھی اورساتھ ہی  بالی وڈ رقص میں دلچسپی لینے لگی تھی۔

انہوں نے بتایا کہ ہماری بیٹی بلا کی ذھین، غیر معمولی قوت حافظہ کی مالک ہے۔

تیا حمندی کے والد نے بتایا کے جب ہم نے بیٹی کا رجہان اس جانب دیکھا تو تین ماہ کا عرصہ روس میں گزارنے لگے۔

تیا حمدی نے مزید مہارتیں حاصل کیں اور چھوٹی عمر میں ہی ٹی وی چینلوں میں کمرشل کرنا شروع کردیے۔

روس میں وہ کمرشل ٹی وی اسٹار بن کر ابھریں اور مقامی سطح پر بچوں کے درمیان ہونے والے مقابلہ حسن میں حصہ لیا۔

تیا حمدی کے والدین نے بتایا کہ کہ عن قریب وہ بچیوں کے عالمی مقابلہ حسن میں حصہ لیں گی۔

واضح رہے کہ  تیا حمدی حسن پہلی عرب لڑکی ہیں جنہوں نے روس میں بچیوں کی ملکہ حسن کا خطاب اپنے نام کیا ہے۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.