سر مُنڈواتے ہی اولے پڑے، اسی لیے سر جوڑ کر بیٹھے ہیں: شہباز شریف

image

پاکستان کے وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ ’سر منڈواتے ہی اولے پڑے‘ کے مصداق حکومت سنبھالتے ہی بہت سے چیلنجز کا سامنا کرنا پڑ رہا، ان کے حل کے لیے سر جوڑ کر بیٹھے ہیں۔

جمعے کو اسلام آباد میں لوڈشیڈنگ پر قابو پانے کے حوالے سے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے شہباز شریف کا کہنا تھا کہ انہیں عادت نہیں ہے کہ پچھلی حکومت کا تذکرہ کریں لیکن اس وقت جو مسائل ہیں، ان کی وجہ وہی ہے۔

شہباز شریف نے موجودہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سابق حکومت کو قرار دیتے ہوئے کہا کہ حویلی بہادر شاہ منصوبے سے بہت بجلی بن سکتی تھی، جو نواز دور میں شروع کیا گیا تھا لیکن اس پر توجہ نہیں دی گئی۔

ان کے مطابق ’اس سے قوم کے 30 سے 40 ارب ضائع ہو گئے۔‘

انہوں نے پچھلی حکومت کو مورد الزام ٹھہراتے ہوئے کہا کہ اس نے وقت پر بجلی کے پلانٹس کی مرمت نہیں کرائی، جس سے مسائل پیدا ہوئے۔

شہباز شریف کا یہ بھی کہنا تھا کہ سی پیک کے منصوبوں میں تاخیر کی گئی۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پچھلی حکومت نے اس وقت گیس نہیں خریدی جب وہ بہت سستی تھی، جبکہ اب مہنگی ہے اس لیے موجودہ حکومت نے اسے خریدنے سے گریز کیا۔

انہوں نے عزم ظاہر کیا کہ لوڈشیڈنگ پر قابو پانا حکومت کی ذمہ داری ہے اور بہت جلد اس میں کمی آئے گی۔

شہباز شریف نے ملک کو درپیش توانائی کے بحران کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ آج کل عالمی سطح پر ایندھن کی قیمتیں دہائیوں کی بلند ترین سطح پر ہے۔

ان کے بقول ’ہمیں سوچنا ہو گا کہ اگر مہنگی گیس سے بجلی بنائیں گے تو اس سے کتنا زرمبادلہ خرچ ہو گا۔‘

انہوں نے توانائی کے بحران کے حوالے سے پچھلی حکومت پر ’مجرمانہ غفلت‘ کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ اگر اس کی جانب سے اپوزیشن کو دیوار لگانے سے نصف توجہ بھی اس جانب دی جاتی تو آج یہ بدترین صورت حال نہ ہوتی۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ اس صورت حال میں بھی سر جوڑ کر بیٹھے ہیں اور جائزہ لے رہے ہیں کہ ہمارے پاس کون سے آپشنز ہیں کہ ان کے ذریعے ریلیف دیا جائے۔


News Source   News Source Text

مزید خبریں
پاکستان کی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.