افغانستان کے ’صوفی بابا‘ کو انڈیا میں قتل کر دیا گیا

image

افغانستان سے تعلق رکھنے والے مسلمانوں کے روحانی پیشوا خواجہ سید چشتی کو انڈیا کی ریاست مہاراشٹر میں قتل کر دیا گیا ہے۔

انڈیا کی نیوز ویب سائٹ این ڈی ٹی وی کے مطابق 35 سالہ خواجہ سید چشتی جنہیں ’صوفی بابا‘ کے نام سے جانا جاتا ہے، کو ممبئی سے تقریباً 200 کلومیٹر دور ایک مقام پر فائرنگ کر کے ہلاک کیا گیا ہے۔

پولیس حکام کے مطابق انہیں سر میں گولی ماری گئی اور وہ موقع پر ہی دم توڑ گئے۔

پولیس افسر سچن پاٹل کا کہنا ہے کہ ’سید چشتی کے ڈرائیور مرکزی ملزم ہیں۔ ان کے ڈرائیور کا نام عینی شاہدین نے بتایا ہے۔ ملزم سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔‘

پولیس کے مطابق سید چشتی ناسک کے ییولا قصبے میں کئی برسوں سے مقیم تھے۔

قتل کی وجہ تاحال معلوم نہیں ہو سکی ہے تاہم پولیس نے امکان ظاہر کیا ہے کہ ہو سکتا ہے سید چشتی کو زمین کے ایک پلاٹ کے معاملے پر قتل کیا گیا ہو جو انہوں نے مقامی لوگوں کی مدد سے حاصل کیا تھا، لیکن افغانستان کے شہری ہونے کی وجہ سے ملک میں زمین نہیں خرید سکتے تھے۔

پولیس نے بتایا ہے کہ یہ قتل ییولا شہر کے ایم آئی ڈی سی علاقے میں ایک کھلے پلاٹ میں ہوا۔


News Source   News Source Text

مزید خبریں
عالمی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.