اہلیہ کا قتل: ملزم شاہنواز امیر کا دو روزہ جسمانی ریمانڈ، والدین کے وارنٹ گرفتاری جاری

image

اسلام آباد پولیس نے مبینہ طور پر بیوی کو قتل کرنے والے شاہنواز امیر کو مقامی عدالت میں پیش کر کے ملزم کے دو روزہ جسمانی ریمانڈ حاصل کر لیا ہے۔

اسلام آباد پولیس نے سنیچر کے روز سخت سکیورٹی میں ملزم شاہنواز امیر کو مقامی عدالت پہنچایا۔

ملزم شاہنواز امیر کو ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج اسلام آباد مبشر حسن چشتی کی عدالت میں پیش کیا گیا۔ 

واضح رہے کہ جمعے کے روز شاہنواز امیر کو اپنی اہلیہ کو چک شہزاد میں قتل کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔

عدالت میں پولیس کے تفتیشی افسر نے بتایا کہ ملزم نے اپنی اہلیہ کو بے دردی سے قتل کیا۔ ’کیس کی تفتیش کے لیے ملزم کو 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر دیا جائے۔ ملزم نے بیرون ملک سے بلا کر قتل کیا۔‘

ملزم کے وکیل نے عدالت میں کہا کہ ’پہلا ریمانڈ ہے ہمیں کوئی اعتراض نہیں لیکن یہ ایک اندھا قتل ہے۔ ابھی میرے ملزم پر صرف قتل کا الزام ہے۔‘

عدالت نے پولیس کی 10 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کرتے ہوئے دو روزہ جسمانی ریمانڈ دے دیا۔

پولیس نے عدالت سے ملزم کے فنگر پرنٹس حاصل کرنے کی بھی استدعا کی جس کو مسترد کرتے ہوئے جج مبشر حسن نے قرار دیا کہ فنگر پرنٹس نادرا کے ریکارڈ سے بھی حاصل کیے جا سکتے ہیں۔

دوسری جانب عدالت نے ملزم کے والد ایاز امیر کے وارنٹ گرفتاری بھی جاری کیے۔

وکیل نے بتایا کہ ایاز امیر، ان کی اہلیہ، ملزم کے چچا اور چچی کے وارنٹ گرفتاری کے لیے درخواست دی ہے۔

جج نے تفتیشی افسر سے پوچھا کہ وارنٹ گرفتار کس لیے چاہئیں؟ تفتیشی افسر نے کہا کہ بیانات ریکارڈ کرنے ہیں۔


News Source   News Source Text

مزید خبریں
پاکستان کی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.