یوم ِعرفہ

(Maryam Arif, Karachi)

تحریر: آمنہ غفور،ڈیرہ غازی خان
۹ ذی الحجہ یعنی یوم عرفہ کے بارے میں ہم سب کو علم ہونا چاہئے۔یہ دن گھر کو صاف ستھرا کرنے کا نہیں، نہ ہی شاپنگ کا اور نہ ہی آرام اورنیند کا یہ دن ہے۔یہ وہ دن ہے جسے اﷲ تعالی نے خود عظیم مقام عطا فرمایا ہے،یہ وہ دن ہے جسے اﷲ تعالی بڑا شرف بخشا ہے، جس میں اﷲ تعالی اہلِ عرفہ کے بارے میں فرشتوں کے سامنے فخر فرماتا ہے۔یہ ایسا مبارک دن ہے جو جہنم سے لوگوں کو آزادی کا پروانہ دلواتاہے۔یہ دن اطاعت رب اور اس کی بھرپور عبادت کا ہے۔سب سے بہترین دعا عرفہ کے دن کی دعا ہے۔

ہمیں خوب کوشش کرنہ چاہئے کہ اس دن ایک سانس بھی اﷲ تعالی کی اطاعت یا قربت کا عمل کیے بغیر نہ نکلے۔ دنیا کے جواھرات میں ایک جوہر اگر گم ہو جائے تو کتنی تکلیف ہوتی ہے پھر دنیا کے افضل دن کو کیسے ہم ضائع کرسکتے ہیں!اگر شب قدر ہم نہ جان سکے تو عرفہ کا دن تو نہیں بھول سکتے۔لہذا اس دن کو غنیمت جانیں اور اسے ہرگز ہر گز بھی غفلت میں نہ گزاریں۔

نویں ذی الحجہ کا جدول نہایت ہی عمدہ بنایا جاسکتا ہے۔ بلکہ اس جدول کو اپنے احباب کو بھی بھیجا جا سکتا ہے۔ بس یہ ایک دن کا ہے جو سال میں ایک ہی مرتبہ آتا ہے:
رات جلدی سو جائیے تاکہ اﷲ تعالی کی عبادت واطاعت میں کچھ ہمت وطاقت محسوس ہو۔ فجر سے پہلے اٹھ جائیے تاکہ آپ اس دن کے روزے کی نیت کرکے سحری کھائیں۔یہ روزہ ہمارے گذشتہ اور آنے والے سال کے گناہوں کو مٹوادے گا۔پھر کم از کم دو یا چار رکعات نوافل پڑھیے اور حالت سجدہ میں رب غفور سے دنیا و آخرت کی ہر خیر وبھلائی کی خوب دعا کیجیے۔ اس کی خوب حمد و ثنا کیجئے کہ اﷲ تعالی نے مجھے اس دن تک پہنچایا جس میں رحمتوں کی برکھا برستی ہے اور خوب بخشش ہوتی ہے۔ فجر سے قبل کا وقت استغفار کرنے میں لگا دیجئے تاکہ ہمارا شمار سحری کے وقت استغفار کرنے والوں میں ہو جائے۔ اذان فجر سے کم از کم پانچ منٹ قبل تیار ہو جائیے۔ اور یاد رکھیے ہمارے سارے گناہ دوران وضوآخری قطرے کے ساتھ بہہ جاتے ہیں۔ پھر وضوء کے بعد کی دعا پڑھیے۔ فجر کی نماز باجماعت پڑھیے اور اپنی جگہ طلوع صبح تک بیٹھے ذکر واذکا ر اور تلاوت قرآن کریم میں گزارئیے۔ سلام کے بعد تکبیرات پڑھنا بھی نہ بھولیے۔ نماز شروق کو بھی وہیں ادا کیجیے تاکہ آپ رسول ﷺ کے ساتھ ادا کیے گئے حج وعمرہ کا ثواب پاسکیں اور نماز کو بالکل نہ بھولیے ۔ اب آپ چاہیں تو سارا دن بالکل نہ سوئیں اور نہ ہی کوئی لمحہ بغیر یاد الہی یا دعا کے گذاریں۔

یا تھوڑی دیر سو جائیں اور نیت یہ ہو کہ اﷲ تعالی کی مزید عبادت کے لئے میں تروتازہ ہو نا چاہتا ہوں۔
اٹھ کر چار رکعت نماز چاشت ادا کریں اور رب کریم کی بندگی اور اس کی رضا پانے کے راستے تلاش کریں۔ مثلا صدقہ کرنا، بیمار کی عیادت یا رشتہ داروں کا خیال وغیرہ تاکہ اکتاہٹ نہ ہو۔تکبیر، ذکر، تلاوت خوب پڑھیں۔ نماز ظہر با جماعت ادا کیجیے اور تکبیر و تسبیح و تحمید کے ساتھ ساتھ تلاوت قرآن کریم بھی کیجیے۔ نماز عصر بھی ادا کیجیے اور تکبیرات کے ساتھ شام کے اذکار بھی کیجیے۔ مغرب سے تھوڑی دیر قبل تک قرآن مجید کی تلاوت اور دعائیں عاجزی سے کیجیے اور اپنی دعا میں اپنے پیاروں کو نہ بھولیے۔

اﷲ تعالی سے دعا کیجیے کہ مولی سورج اس وقت تک نہ ڈوبے جب تک مجھے جہنم سے آزادی کا پروانہ نہ مل جائے۔اﷲ ہم سب کو ان اعمال کے بجا لانے کی توفیق عطا فرمائے۔ ہم اﷲ تعالی سے اپنے اورآپ کے لیے قبولیت دعا کی درخواست کرتے ہیں۔ اذان مغرب ہوتے ہی افطار کر لیجیے ا ور نہ بھولیے کہ اﷲ تعالی تو روزہ دار کی دعا کو اس روز خالی نہیں لوٹاتا۔اﷲ تعالی ہم سب کو جہنم سے آزادی کا پروانہ نصیب فرمادے۔ آمین

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Maryam Arif

Read More Articles by Maryam Arif: 1238 Articles with 517479 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
20 Aug, 2018 Views: 313

Comments

آپ کی رائے

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ