سبز قدم ۔ سو لفظی کہانی

(Rana Tabassum Pasha(Daur), Dallas, USA)

ہفتے بھر کی نئی نویلی کمسن دلہن اپنے حنائی ہاتھ اور لرزتے وجود کو بڑی سی چادر میں چھپائے ہوئے اپنی جوان کنواری نند کے جنازے پر ایسے کھڑی ہوئی تھی جیسے عدالت کے کٹہرے میں کوئی مجرم کھڑا ہوتا ہے
تند و تیز نظریں اسے اپنے جسم میں گڑتی ہوئی معلوم ہو رہی تھیں
دبی دبی سرگوشیاں کانوں میں سیسہ انڈیل رہی تھیں
منحوس ، سبز قدم آتے ہی بچی کو کھا گئی
بیشک اس کا جرم ، قتل سے بھی بڑا تھا
جس کی سزا اس نے بائیس برس تک بھگتی
ورنہ تو چودہ سال بعد جیل سے باہر آ جاتی

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Rana Tabassum Pasha(Daur)

Read More Articles by Rana Tabassum Pasha(Daur): 175 Articles with 1048668 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
10 Sep, 2018 Views: 4821

Comments

آپ کی رائے