دھوکا

(Zulfiqar Ali Bukhari, Rawalpindi)

بس کنڈیکٹر سے سو روپے کا نوٹ ملا۔
جلدی میں خیال نہ رہا کہ دیکھ لوں کہ وہ اصلی ہے یا نقلی۔
جیب میں ڈال کر فورا اپنے بس سٹاپ پر اتر گیا۔
ایک بھکاری نے ہاتھ پھیلایا تو اسے نکال کر دے دیا۔
اس نے بہت سی دعائیں دی۔
اگلے دن پھر بس پر سوار ہوا۔
اُس وقت حیرت کی انتہا نہ رہی۔
جب وہی نشان ذدہ نوٹ پھر سے میرے ہاتھ میں تھا۔
دھوکا کہیں نہ کہیں سے پھر واپس مجھ تک آگیا تھا۔
میں نے نوٹ پھاڑ دیا اوربس کی کھڑکی سے باہر دیکھنے لگا۔
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Zulfiqar Ali Bukhari

Read More Articles by Zulfiqar Ali Bukhari: 303 Articles with 263326 views »
I'm an original, creative Thinker, Teacher, Writer, Motivator and Human Rights Activist.

I’m only a student of knowledge, NOT a scholar. And I do N
.. View More
14 Oct, 2018 Views: 331

Comments

آپ کی رائے