الوداع 2018

(Dr. Shakira Nandini, Oporto)

ایک سال اور زندگی کا ختم ہو گیا
نئے سال کی آمد ہے آج کی رات اکیلے میں تھوڑی دیر کے لئے سوچیں ہم نے کیا پایا کیا کھویا کیا حسرتیں رہ گئیں کونسی خواہشات پوری ہو گئیں
پھر سوچیں ایک سال پہلے ہماری کیا خواہشات تھیں اور اب نئے سال پر کیا خواہشیں ہیں
ایک سال پہلے ہماری کیا خواہشیں تھیں جو ناگزیر تھیں جن کو پانے کے لئے ہم نے رو رو کر محنت اور لگن سے کام کر کے پورا کیا
کیا ایک خواہش کے پوری ہونے سے ہمارا مقصد پورا ہو گیا
نہیں ناں
بالکل
ایک خواہش کے پورا ہونے کا یہ مطلب نہیں کہ اب خواہشیں ختم ہو گئیں بلکہ ایک خواہش کے بعد درجنوں نئی خواہشیں قطار میں کھڑے سامنے آجاتے ہیں
اور پھر ہم پھر دوڑنے لگ جاتے ہیں ایک نئی خواہش کے پیچھے
یہی زندگی ہے
اور اسی طرح ایک دن زندگی کی شام ہو جاتی ہے اور خواہشیں رہ جاتی ہیں
پچھتاوے رہ جاتے ہیں
زندگی مختصر ہے بہتر ہے اس مختصر زندگی کو اچھے کاموں میں لگایا جائے کسی کے کام آیا جائے
نفرت کو چھوڑیں محبت بانٹیں
تاکہ جب ہماری زندگی کی شام ہو جائے تو صرف پچھتاوا ناں ہو
بلکہ کچھ نیکیاں بھی ہوں
نیکی چاہے معمولی ہی کیوں نہ ہو
کہ رب بہت بڑا مہربان اور بخشنے والا ہے
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Dr. Shakira Nandini

Read More Articles by Dr. Shakira Nandini: 172 Articles with 99443 views »
I am settled in Portugal. My father was belong to Lahore, He was Migrated Muslim, formerly from Bangalore, India and my beloved (late) mother was con.. View More
02 Dec, 2018 Views: 706

Comments

آپ کی رائے