ایکــــ نام کیلئـــے ہی جان لٹا دی

(Waheed Khan, Karachi)

کیا مجهـــے جانتــــے هو نهیــں نہ میں کوئی نهیــں هوں میرا کوئی نام نهیں هــــے میری صرف ایکــــــ پہچان ھــــے لیکن اس ســـے پہلـے کہ اُسی پہچان کی لاج میں مجهــے سر راہِ کوئی اُڑتی هوئی گولی کا نشانہ بنا دیا جائــے مجھــے کسی کا حال پوچهنــے پہ دیوار کــے ساتھ باندھ کر زندہ جلا دیا جائـــے کیا یا کسی ہسپتال کـــے سرد خانـــے میں پڑی میری لاش کو لاوارث کہہ کر دفنا دیا جائـــے یا کسی بم دهماکـــے بکهرے میرے چیتهڑے کو کسی کچڑا کنڈی میں پهینک دیا جائــــے یا میری کار میں خرابی پیدا کرکــے مجهـــے میری فیملی کــے ہمراہ کوئی حادثــہ بنا کرمار دیا جائــے یا میں کسی سرحد پہ دشمن کی اندها دهندھ فائرنگ کا شکار هو جاؤں میں وزیرستان کی کسئ وادی میں خوارج کــے خلاف لڑتا هوا شہید هو جاؤں یا میں کسی دیارِ غیر میں خاموشی ســے وطن کا دفاع کرتـــے هوئــے مارا جاؤں یا کسی جبری سیل دشمن کـــے ہاتهوں اذیت کا شکار هو کر اپنـــے ہاتهوں ٹانگوں یا زبان ســـے محروم هو جاؤں یا دشمن کسی گمنام جگہ پہ مجهــے مار کر دفن کر دے میں بتا دوں میـں سپاهی هوں اس پاکــــ زمین کا میں میں اپنـــے فرض کی راہ میں کیا کچھ گوا دیتا هوں میں اپنــے بچوں کو یتیم چهوڑ جاتا هوں اپنــے والدین کو بـــے سہارا چهوڑ جاتا هوں کبهی ایسا بهی هوتا هـــے کہ میرا یونیفار خاموشی ســـے میرے گهر پہنچ جاتا هــے اور میرے والدین کسی قبر پہ لگائـــے میرے نام کــے کتبـــے پہ فاتحہ پڑهتــــے زندگئ گزار دیتــــے هیں میں جو بهی تها میرا نام کوئی نا تها میں بس ایک ہی نام کیلئــے جیا اور ایکــــ نام کیلئـــے ہی جان لٹا دی وہ نام هــے پاکستانـــ۔۔۔۔۔۔ـ! مجھ پہ اُنگلی اُٹهانــے والو ایک گهنٹہ اے سی ســـے نکل کر دیکهاؤ دشمن کـــے ہاتهوں زخم کها کہ دیکهاؤ اپنوں مقصد کی خاطر بیوی بچوں کو قتل کروانــے والو وطن کیلئــے شہید هو کر دیکهاؤ چلو کچھ نہ کرو یہ تحریر پڑھ کــے دیکهاؤ کیا هوا غلاظت و غصہ کی نگاہ ســے نہ دیکهو میرے ساتھ 18 کروڑ زندہ دل قوم کهڑی هــے جوانوں کیا غلط کہا میں نـــے ؟ ویســے لگـــے ہاتهوں آپ لوگوں کی چوائس بهی پوچھ لی جائــے کہ ساتھ رهو گــــے یا آپ لوگوں کو بهی زندگی پیاری هـــے یا اے لگـــے شاندار گهر یا ہمارا پاکستان ؟

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Waheed Khan

Read More Articles by Waheed Khan: 5 Articles with 1665 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
24 May, 2019 Views: 282

Comments

آپ کی رائے